ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

مراد آباد : سابق وزیر اعلی اکھلیش یادو سمیت 20 افراد کے خلاف ایف آئی آر ، صحافیوں سے بدسلوکی کا الزام

سماجوادی پارٹی (Samajwadi Party) کے کارکنان نے صحافیوں پر جانبداری کا الزام لگایا ۔ میڈیا اہلکاروں پر حملہ سے صحافیوں میں کافی زیادہ غصہ دیکھنے کو ملا ۔

  • Share this:
مراد آباد : سابق وزیر اعلی اکھلیش یادو سمیت 20 افراد کے خلاف ایف آئی آر ، صحافیوں سے بدسلوکی کا الزام
مراد آباد : سابق وزیر اعلی اکھلیش یادو سمیت 20 افراد کے خلاف ایف آئی آر ، صحافیوں سے بدسلوکی کا الزام

اترپردیش کے مراد آباد میں ریاست کے سابق وزیر اعلی اور ایس پی کے قومی صدر اکھلیش یادو کی پریس کانفرنس میں ہوئی مارپیٹ کے معاملہ میں نیا موڑ آگیا ہے ۔ مراد آباد میں اکھلیش یادو کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے ۔ ان کے خلاف صحافیوں سے مار پیٹ کے معاملہ میں آئی پی سی کی دفعہ 147 ، 342 اور 323 کے تحت مقدمہ درج کیا گیا ہے ۔ ادھر ایس پی ضلع صدر جے ویر سنگھ یادو نے بھی صحافیوں کے خلاف معاملہ درج کرایا ہے ۔ پولیس نے دفعہ 160 ، 341 ، 332 ، 353 ، 504 ، 499 اور 120 بی جے تحت دو نامزد صحافیوں کے خلاف معاملہ درج کیا ہے ۔


دراصل ایس پی سپریمو اکھلیش یادو جمعرات کو مراد آباد پہنچے تھے ۔ وہاں وہ ممبر اسمبلی محمد فہیم کے گھر پہنچے ۔ اس دوران سابق وزیر اور ایس پی کارکنان کے درمیان نوک جھونک دیکھنے کو ملی ۔ پھر پریس کانفرنس کے بعد اکھلیش یادو کے سامنے ہی ایس پی کارکنان کا دنگل دیکھنے کو ملا ۔ اس دھکا مکی میں نیوز 18 کے صحافی بھی پھنس گئے ، انہیں بھی چوٹیں آئی ہیں ۔ ہنگامہ کے دوران کئی صحافیوں کے موبائل اور کیمرے بھی ٹوٹ گئے ۔


اس کے بعد اکھلیش یادو نے مراد آباد کے ہی ایک ہوٹل میں پریس کانفرنس کی ۔ یہاں ایک صحافی کے سوال و جواب میں اکھلیش یادو نے کہا کہ کبھی سوال بی جے پی سے بھی پوچھ لیا کرو ؟ کیا بی جے پی کے ہی سوال پوچھوگے ؟ اس کے بعد پریس کانفرنس ختم ہوئی اور کارکنان نے ہنگامہ کرنا شروع کردیا ۔ اس دوران اکھلیش یادو کے سامنے ہی سماجوادی پارٹی کے کارکنان اور سیکورٹی اہلکاروں نے اچانک میڈیا اہلکاروں پر حملہ بول دیا اور ہوٹل سے کھدیڑنے لگ گئے ۔ سماجوادی پارٹی کے کارکنان نے صحافیوں پر جانبداری کرنے کا الزام لگایا ۔ میڈیا اہلکاروں پر حملہ سے صحافیوں میں کافی زیادہ غصہ دیکھنے کو ملا ۔


اس سے پہلے اکھلیش یادو سے ملنے کیلئے ہوٹل کے باہر ایس پی کارکنان کا مجمع تھا ۔ سابق کابینہ وزیر کمال اختر بھی جائے واقعہ پر موجود تھے ۔ کارکنان نے سابق کابینہ وزیر کو بھی نہیں چھوڑا اور ان کے ساتھ بھی دھکا مکی شروع کردی ۔ اس دوران سابق وزیر اور ایس پی کارکنان کے درمیان نوک جھونک بھی دیکھنے کو ملی ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Mar 13, 2021 07:57 PM IST