உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    UP News: امامیہ ایجوکیشنل ٹرسٹ کی جانب سے پیس کانفرنس کا انعقاد، ہر قیمت پر قائم رکھا جائے گا امن 

    UP News: امامیہ ایجوکیشنل ٹرسٹ کی جانب سے پیس کانفرنس کا انعقاد، ہر قیمت پر قائم رکھا جائے گا امن 

    UP News: امامیہ ایجوکیشنل ٹرسٹ کی جانب سے پیس کانفرنس کا انعقاد، ہر قیمت پر قائم رکھا جائے گا امن 

    Lucknow News: لکھنئو کے تاریخی چھوٹے امام باڑے میں منعقدہ امن کانفرنس میں اس بات پر زور دیا گیا کہ شدت پسند اور نفرت پر مبنی سیاست اپنے مفاد کے لئے طرح طرح کے حربے استعمال کررہی ہے، لیکن ہمیں ملک کو اور اپنی صدیوں پرانی گنگا جمنی تہذیب کو بچانے کیلئے عملی طور پر محبت کی تشہیر کرنے کی ضرورت ہے ۔

    • Share this:
    لکھنو: نفرتوں کا جواب محبت سے دے کر ہی ملک کے حالات تبدیل کئے جاسکتے ہیں ، اگر ہم نے محمد اور آلِ محمد کے راستے کو چھوڑ دیا تو ہم کہیں کے نہیں رہیں گے،  فرقہ پرست طاقتیں اور اسلام مخالف ذہنیتیں ہم سے یہی چاہتی ہیں کہ ہم اہنے محور و مرکز سے بھٹک کر اسلام کی بنیادی تعلیم اور عمل سے دور ہوجائیں ۔ ان خیالات کا اظہار امامیہ ایجوکیشنل ٹرسٹ کے صدر معروف عالم دین مولانا علی حسین قمی نے لکھنئو میں کیا ۔ لکھنئو کے تاریخی چھوٹے امام باڑے میں منعقدہ امن کانفرنس میں اس بات پر زور دیا گیا کہ شدت پسند اور نفرت پر مبنی سیاست اپنے مفاد کے لئے طرح طرح کے حربے استعمال کررہی ہے، لیکن ہمیں ملک کو اور اپنی صدیوں پرانی گنگا جمنی تہذیب کو بچانے کیلئے عملی طور پر محبت کی تشہیر کرنے کی ضرورت ہے ۔

    امامیہ ایجوکیشنل ٹرسٹ گزشتہ بیس سال سے سماج کو جوڑنے ، ہندو مسلم بھائی چارے کو قائم رکھنے اورغریب بچوں کو مفت تعلیم فراہم کرنے کے لیے مسلسل کوششیں کررہا ہے ۔یہاں یہ بات بھی اہم ہے کہ بار بار مطالبوں کے باوجود بھی سرکاری یا نیم سرکاری تنظیموں کی جانب سے کسی طرح کی کوئی امداد یا مراعات ٹرسٹ کو حاصل نہیں ۔ تاہم مولانا علی حسین قمی نے حوصلے نہیں ہارے ہیں ۔ ان کا کہنا یہی ہے کہ وہ آخری سانس تک سماج کو جوڑنے اور سماج کے دبے کچلے لوگوں کی ہر ممکن مدد کی کوشش کرتے رہیں گے ۔

     

    یہ بھی پڑھئے: 16 سال کی مسلم لڑکی اپنی مرضی سے کرسکتی ہے شادی : پنجاب و ہریانہ ہائی کورٹ


    چھوٹے امام باڑے میں منعقدہ پیس کانفرنس میں مختلف مذاہب کے فعال اراکین نے شرکت کرتے ہوئے یہ عہد کیا کہ وہ فرقہ پرست طاقتوں اور آئین و جمہور کے خلاف کام کرنے والے لوگوں کو شکست دے کر ہی دم ہی لیں گے ۔ معروف کارکن ایس این کریل نے کہا کہ ہم دیکھ رہے ہیں کہ اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں پر موجودہ اقتدار میں کھلا ظلم ہورہا ہے اور اکثریتی طبقے کے لوگ بھی تماشائی بنے ہوئے ہیں ، کبھی کبھی محسوس ہوتا ہے کہ انصاف کا مطالبہ کرنے والے مظلوموں کے ساتھ کوئی نہیں لیکن اس منظر نامے کو بدلنے کی کوششیں کی جاتی رہیں گی ۔

     

    یہ بھی پڑھئے: Agneepath Scheme: ہنگامہ کی وجہ سے 742 ٹرینیں رد، ٹکٹ کا پورا پیسہ واپس کرے گا ریلوے


    اشفاق احمد نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مسلم طبقہ مایوس ہے کہ اس کے آئینی دستوری اور جمہوری حقوق سلب کیے جارہے ہیں اور یہ حمکتِ عملی ہمارے ملک کے لیے اچھی نہیں ۔ مولانا علی حسین قمی نے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ متحد ہو کر ان سبھی لوگوں کی مخالفت کریں جو اپنے مفادات کے لئے ملک کو بکھیرنا چاہتے ہیں ۔

    پیس کانفرنس میں ایک پانچ نکاتی میمورنڈم بھی سائن کیا گیا ، جس کو امامیہ ٹرسٹ کی جانب سے وزیر اعلیٰ، وزیر اعظم اور صدرِ جمہوریہ کو بھیجا جائے گا۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: