உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کانپور تشدد کیس میں پولیس کو بڑی کامیابی، ایک ماہ سے مفرور کراؤڈ فنڈنگ ​​کا ملزم گرفتار

    Crowd funding for violence: ذرائع کے مطابق اسے پیر کی رات لکھنؤ سے گرفتار کیا گیا تھا اور فی الحال کانپور کمشنریٹ کے کرائم برانچ کے دفتر میں رکھ کر پوچھ گچھ کی جارہی ہے۔

    Crowd funding for violence: ذرائع کے مطابق اسے پیر کی رات لکھنؤ سے گرفتار کیا گیا تھا اور فی الحال کانپور کمشنریٹ کے کرائم برانچ کے دفتر میں رکھ کر پوچھ گچھ کی جارہی ہے۔

    Crowd funding for violence: ذرائع کے مطابق اسے پیر کی رات لکھنؤ سے گرفتار کیا گیا تھا اور فی الحال کانپور کمشنریٹ کے کرائم برانچ کے دفتر میں رکھ کر پوچھ گچھ کی جارہی ہے۔

    • Share this:
      Crowd funding for violence: اتر پردیش کے کانپور میں نماز جمعہ کے بعد احتجاج کے دوران ہوئے تشدد کے بارے میں ذرائع کے حوالے سے بڑی خبر آئی ہے۔ پولیس نے آخر کار اس معاملے میں کراؤڈ فنڈنگ ​​کے ملزم بلڈر حاجی وصی  Haji Wasi  کو گرفتار کر لیا ہے۔

      کانپور کمشنریٹ پولیس کی طرف سے وصی کی گرفتاری سے متعلق کوئی بیان جاری نہیں کیا گیا ہے۔ تاہم ذرائع کے مطابق اسے پیر کی رات لکھنؤ سے گرفتار کیا گیا تھا اور فی الحال کانپور کمشنریٹ کے کرائم برانچ کے دفتر میں رکھ کر پوچھ گچھ کی جارہی ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ وصی سے پوری رات پوچھ گچھ کی گئی جس کے بعد انہیں کچھ دیر آرام دیا گیا۔ تھوڑی دیر بعد افسر ایک بار پھر اس سے پوچھ گچھ شروع کر دیں گے۔

      کانپور تشدد کے لیے کراؤڈ فنڈنگ ​​کا ملزم وصی اس کیس میں نام سامنے آنے کے بعد مفرور تھا۔ ایسے میں پولیس نے وصی کے بیٹے عبدالرحمٰن کو پوچھ گچھ کے لیے بلایا تھا جس کے بعد اسے حراست میں لے لیا گیا تھا۔ موصولہ اطلاع کے مطابق ایس آئی ٹی نے اب وصی کے بیٹے عبدالرحمن کو گرفتار کرکے جیل بھیج دیا ہے۔

      عین موقع پر کلک ہوئی یہ photos ایک سیکنڈ کی بھی دیری سے برباد ہو جاتیں: جانئے کیوں

      اچانک شخص کے پرائیویٹ پارٹ سے آنے لگی عجیب سی آواز، ایکسرے دیکھ کر ڈاکٹر کے اڑے ہوش

      غور طلب بات یہ ہے کہ کانپور میں احتجاج کے دوران بھڑکنے والے تشدد کی جانچ کرنے والی ایس آئی ٹی ملزمین کو مسلسل گرفتار کر رہی ہے۔ ذرائع کے مطابق ایس آئی ٹی کی جانچ میں پتہ چلا ہے کہ یہ تشدد ایک منصوبہ بندی سازش  کے تحت کیا گیا تھا، جس کے لیے پتھراؤ کرنے والوں کو پیسے دے کر بلایا گیا تھا۔ اس کے لیے بلڈر حاجی وصی اور بابا بریانی کے مالک مختار بابا نے کراؤڈ فنڈنگ ​​کے ذریعے رقم اکٹھی کی تھی۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: