ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ : کورونا انفیکشن کے بڑھتے خطرے سے لاک ڈاون کے خوف سے بند ہورہے ہیں کارخانے

بنکر نگر کے ان کارخانوں میں حالات سے آگاہ کرتے ہوئے بنکر ایسوسی ایشن کے مقامی ذمہ داران نے بتایا کہ گزشتہ تین ہفتے کے دوران تقریباً ساٹھ فیصد کارخانے بند ہو چکے ہیں یا بند ہونے کی کگار پر ہیں

  • Share this:
میرٹھ : کورونا انفیکشن کے بڑھتے خطرے سے لاک ڈاون کے خوف سے بند ہورہے ہیں کارخانے
میرٹھ : کورونا انفیکشن کے بڑھتے خطرے سے لاک ڈاون کے خوف سے بند ہورہے ہیں کارخانے

میرٹھ : گزشتہ سال کورونا وبا کے قہر کے بعد لگے لاک ڈاؤن نے ملک کی اقتصادی ترقی کی رفتار کو کافی دھیما کر دیا ، لیکن لاک ڈاؤن کے بعد ابھی کاروبار پوری طرح پٹری پر لوٹا بھی نہیں تھا کہ کورونا وبا کا قہر ایک بار پھر نازل ہو گیا ۔ مکمّل لاک ڈاؤن نہ لگانے کے باوجود احتیاطی پابندیوں سے اس مرتبہ بھی حالات لاک ڈاؤن جیسے ہی نظر آرہے ہیں اور اس کا خوف کاروبار اور لوگوں کے روزگار پر نظر آ رہا ہے ۔ کپڑا صنعت کے لیے مشہور مغربی یو پی کے میرٹھ شہر میں گزشتہ 20 دِنوں میں تقریباً ساٹھ فیصد کارخانے یا تو بند ہو چکے ہیں یا پھر  نہ کے برابر چل رہے ہیں ۔


لاک ڈاؤن لگ جانے کا خوف اور کام نہ ہونے کے سبب ہزاروں کی تعداد میں کاریگر اپنے گھروں کو لوٹ چکے ہیں ۔ بنکر نگر کے ان کارخانوں میں حالات سے آگاہ کرتے ہوئے بنکر ایسوسی ایشن کے مقامی ذمہ داران نے بتایا کہ گزشتہ تین ہفتے کے دوران تقریباً ساٹھ فیصد کارخانے بند ہو چکے ہیں یا بند ہونے کی کگار پر ہیں ۔ بازار میں کپڑا کاروبار پہلے ہی لاک ڈاؤن میں تباہ ہوئے کاروباری حالات سے گزر رہا تھا ایسے میں بڑھتی بندشوں نے اس صنعت کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے ۔


لاک ڈاؤن لگنے کے خوف سے پریشان زیادہ تر باہری مزدور اور کاریگر واپس اپنے گھروں کو لوٹ چکے ہیں اور جو باقی ہیں ان کے پاس کام نہیں ہے ۔ پہلے سے بنا مال بازار میں فروخت نہیں ہوا اور نہ ہی کپڑا تیار کرنے کے لیے کچا مال ابھی خریدنے کی کارخانہ مالکان ہمّت کر پا رہے ہیں ۔

Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Apr 14, 2021 04:39 PM IST