உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اپنا سیاسی وجود برقرار رکھنا ہے تو مسلم سماج کو ایک ڈنڈے اور ایک جھنڈے کے نیچے آنا ہو گا: اویسی

    اپنا سیاسی وجود برقرار رکھنا ہے تو مسلم سماج کو ایک ڈنڈے اور ایک جھنڈے کے نیچے آنا ہو گا: اویسی ۔ فائل فوٹو ۔

    اپنا سیاسی وجود برقرار رکھنا ہے تو مسلم سماج کو ایک ڈنڈے اور ایک جھنڈے کے نیچے آنا ہو گا: اویسی ۔ فائل فوٹو ۔

    میرٹھ کے قصبے کیٹھور میں منعقدہ ایک جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے اسد الدین اویسی نے کہا کہ دلت اور یادو ایک ڈنڈے اور ایک جھنڈے کے نیچے رہ کر ہی سرکاری نوکریوں میں جگہ پائے ہیں جبکہ دوسری طرف مسلمانوں کی قسمت میں، دنگے، فساد، جیل ، بربادی اور تباہی لکھی ہوئی ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      میرٹھ : اے آئی ایم آئی ایم کے سربراہ اسد الدین اویسی نے آج مسلم سماج کے عوام کو صلاح دیتے ہوئے کہا کہ اگر اپنا سیاسی وجود برقرار رکھنا ہے تو ایک ڈنڈے اور ایک جھنڈے کے نیچے آنا ہوگا۔ اویسی نے ہفتے روز ضلع میرٹھ کے قصبے کیٹھور میں منعقدہ ایک جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دلت اور یادو ایک ڈنڈے اور ایک جھنڈے کے نیچے رہ کر ہی سرکاری نوکریوں میں جگہ پائے ہیں جبکہ دوسری طرف مسلمانوں کی قسمت میں، دنگے، فساد، جیل ، بربادی اور تباہی لکھی ہوئی ہے۔

      مسلم سماج کو خبردار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اب وقت آگیا ہے ورنہ اترپردیش میں نا انصافی کا شکار ہونا طے ہے کیونکہ اعداد وشمار اس کی تصدیق کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مسلمانوں پر آنے والی کسی بھی آفت پر ان کی پارٹی اور خود انہوں نے آواز بن کر پارلیمنٹ میں اٹھایا ہے، دوسری پارٹی کے مسلم دُم چھلوں نے نہیں۔

      اسد الدین اویسی نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی 100 کروڑ لوگوں کو کورونا ویکسین دینے کا دعویٰ کرتے ہوں ، لیکن سچائی ہے کہ محض 1 فیصد ملک کے عوام کو ویکسین مل پائی ہے۔ انہوں نے کہا کہ شاید لوگ یہ بھول گئے ہیں کہ مرکز اوراترپردیش میں بی جے پی کی کامیابی سماجوادی پارٹی ، بہوجن سماج پارٹی اور کانگریس کی غلط پالیسیوں کا نتیجہ ہے۔

      قبل ازیں اسد الدین اویسی نے آج صبح میرٹھ میونسپل کارپوریشن کے کارپوریٹر اور اے آئی ایم آئی ایم کے رہنما زبیر کا گزشتہ 28 اگست کو دن دہاڑے کیے گئے قتل کے بعد ان کے اہل خانہ سے ملاقات کی اور انھیں تعزیت پیش کی۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: