ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

10 منٹ کے فاصلہ کو آدھے گھنٹے میں ایمبولینس نے کیا طے ، مریض کی ہوئی موت ، مچا ہنگامہ

مقامی لوگوں کا الزام ہے کال کرنے کے بعد ایک تو پہلے ہی ایمبولینس دیر سے پہنچی اور پھر غیر ضروری معلومات حاصل کرنے کی وجہ سے مریض کو وقت پر اسپتال پہنچانے میں تاخیر ہو گئی اور مریض کی موت ہو گئی ۔

  • Share this:
10 منٹ کے فاصلہ کو آدھے گھنٹے میں ایمبولینس نے کیا طے ، مریض کی ہوئی موت ، مچا ہنگامہ
10 منٹ کے فاصلہ کو آدھے گھنٹے میں ایمبولینس نے کیا طے ، مریض کی ہوئی موت ، مچا ہنگامہ

اسپتال تک دس منٹ کا فاصلہ طے کرنے میں ایمبولینس نے آدھا گھنٹہ لگا دیا اور اس وجہ سے ایک شخص کی جان چلی گئی  ۔ میرٹھ سے تقریبا 20 کلو میٹر دور واقع قصبہ موانہ کے محلہ اشوک نگر کا رہنے والا آصف کپڑے کا کاروبار کرتا تھا ۔ صبح آصف گھر سے دودھ لینے کیلئے نکلا تھا ، لیکن واپس نہیں لوٹا ۔ تلاش کرنے پر آصف كو بے ہوشی کی حالت میں دیکھ پولیس اور ايمبو لینس كو فون كیا گیا ، لیکن ايمبولینس ڈرائیور کی لاپروائی کی وجہ سے آصف نے اسپتال پہنچنے سے قبل ہی دم توڑ دیا ۔


آصف کی موت سے علاقہ میں غم کا ماحول ہے ۔ مقامی چشم دیدوں کا الزام ہے کال کرنے کے بعد ایک تو پہلے ہی ایمبولینس دیر سے پہنچی اور پھر غیر ضروری معلومات حاصل کرنے کی وجہ سے مریض کو وقت پر اسپتال پہنچانے میں تاخیر ہو گئی اور مریض کی موت ہو گئی ۔


 صبح آصف گھر سے دودھ لینے کیلئے نکلا تھا ، لیکن واپس نہیں لوٹا ۔
صبح آصف گھر سے دودھ لینے کیلئے نکلا تھا ، لیکن واپس نہیں لوٹا ۔


لوگوں کا الزام ہے کہ راستہ میں ایمبولینس ڈرائیور مسلسل فون پر بات کرتا رہا اور بیمار شخص کی حالت کے بارے میں سوالات کرتا رہا ، جس کی وجہ سے 10 منٹ کے فاصلہ کو طے کرنے میں آدھا گھنٹہ لگ گیا اور مریض کو وقت پر علاج نہیں مل سکا ۔

محکمہ صحت اور کورٹ کی گائیڈ لائن کے مطابق مریض کو سب سے پہلے اور وقت پر علاج مہیا کرنا ضروری ہے اور سب سے پہلے نزدیک کے اسپتال میں لے جانا چاہئے ، لیکن اس معاملہ میں ایمبولینس اسٹاف نے کورٹ اور محکمہ صحت کی گائیڈ لائن کی مکمل طور پر خلاف ورزی کی اور اس وجہ سے مریض کی جان چلی گئی ۔
First published: Jun 08, 2020 10:29 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading