ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ڈاکٹر کفیل خان کی رہائی کی تحریک میں بائیں بازو کی تنظمیں بھی ہوئیں شامل

مظاہرے میں شامل معروف سماجی کارکن ڈاکٹر آشیش متل کا کہنا تھا کہ ملک میں جمہوری آوازوں کو دبانے کی کوشش کی جارہی ہے ۔

  • Share this:
ڈاکٹر کفیل خان کی رہائی کی تحریک میں بائیں بازو کی تنظمیں بھی ہوئیں شامل
ڈاکٹر کفیل خان کی رہائی کی تحریک میں بائیں بازو کی تنظمیں بھی ہوئیں شامل

اترپردیش میں ڈاکٹر کفیل کی رہائی کے مطالبے میں شدت آتی جا رہی ہے ۔ ڈاکٹر کفیل خان گرفتاری کے خلاف چلائی جارہی عوامی مہم میں اب بائیں بازو  سے تعلق رکھنے والی تنظیموں نے بھی شمولیت اختیار کر لی ہے ۔ الہ آباد میں بائیں بازو سے تعلق رکھنے والی مختلف جماعتوں اور ان کے نمائندوں نے ڈاکٹر کفیل کی حمایت میں مشترکہ احتجاجی مظاہرہ کیا ۔ احتجاجی مظاہرے میں ڈاکٹر کفیل اور سی اے اے مخالف تحریک میں شامل افراد کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا گیا ۔


مجاہد آزادی چندر شیکھر آزاد کے ایک سو چودہ ویں (114 ) یوم پیدائش کے موقع پر الہ آباد کے تاریخی کمپنی باغ میں عوام  کی طرف سے انہیں جذباتی خراج عقیدت پیش کیا گیا ۔ اسی مقا م پر انگریزوں نے چندر شیکھر آزاد کو شہید کر دیا تھا ۔ 27 فروری 1931 کو الہ آباد کے کمپنی باغ میں انگریز سپاہیوں سے مقابلہ کرتے ہوئے چندر شیکھر آزاد نے اپنی جان کا نذرانہ پیش کیا تھا ۔ اسی زمانے سے چندر شیکھر آزاد کا شہادت استھل ظلم اور بے انصافی کے خلاف ایک علامت کے طور پر جانا جاتا ہے ۔ چندر شیکھر آزاد کے یوم پیدائش کے موقع پر بائیں بازو سے تعلق رکھنے والی مختلف تنظیموں کے کارکنان نے چندر شیکھر آزاد پارک پہنچ کر ان کو خراج عقیدت پیش کیا ۔ چندر شیکھر آزاد کو خراج عقیدت پیش کرنے کے بعد کارکنان نے ڈاکٹر کفیل کی رہائی کا مطالبہ شدت کے ساتھ کیا ۔


احتجاجی مظاہرے میں ڈاکٹر کفیل اور سی اے اے مخالف تحریک میں شامل افراد کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا گیا ۔
احتجاجی مظاہرے میں ڈاکٹر کفیل اور سی اے اے مخالف تحریک میں شامل افراد کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا گیا ۔


ڈاکٹر کفیل کی حمایت میں مظاہرہ کرنے والے افراد کا کہنا تھا کہ چندر شیکھر آزاد ہندو مسلم ایکتا اور ملک کی گنگا جمنی تہذیب کے سب سے بڑے علم بردار تھے ۔ ایسے میں چندر شیکھر آزاد کی وراثت کو از سرنو زندہ کرنے ضرورت ہے ۔ مظاہرے میں شامل معروف سماجی کارکن ڈاکٹر آشیش متل کا کہنا تھا کہ ملک میں جمہوری آوازوں کو دبانے کی کوشش کی جارہی ہے ۔

ڈاکٹر آشیش متل کا کہنا تھا کہ سی اے اے مخالف تحریک میں شامل افراد کے خلاف پولیس ما ورائے عدالت اپنی زیادتیوں کا نشانہ بنا رہی ہے ۔ بائیں بازو کی تنظیموں نے ڈاکٹر کفیل خان کی گرفتاری کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے حکومت سے ان کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 23, 2020 08:05 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading