உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Uttarakhand Assembly Elections 2022: عام آدمی پارٹی کی حکومت بنی تو 10 نکاتی ایجنڈے پر کام کرکے اتراکھنڈ کی تعمیر نو کی جائے گی

    Uttarakhand Assembly Elections 2022: عام آدمی پارٹی کی حکومت بنی تو 10 نکاتی ایجنڈے پر کام کرکے اتراکھنڈ کی تعمیر نو کی جائے گی

    Uttarakhand Assembly Elections 2022: عام آدمی پارٹی کی حکومت بنی تو 10 نکاتی ایجنڈے پر کام کرکے اتراکھنڈ کی تعمیر نو کی جائے گی

    Uttarakhand Assembly Elections 2022: اگر عام آدمی پارٹی کی حکومت بنی، تو 10 نکاتی ایجنڈا، ٹیکس کے ذریعے اتراکھنڈ کی تعمیر نو کی جائے گی۔ اتراکھنڈ میں سب سے بڑا ناسور کرپشن ہے۔  بدعنوانی کو ختم کرنا صرف عام آدمی پارٹی کو آتا ہے۔ دوسری جماعتوں کو یہ معلوم نہیں اور ان کی نیت بھی خراب ہے۔ ہم سب کو تعلیم اور صحت کی سہولیات مفت دیں گے، پانچ ہزار روپے بے روزگاری الاؤنس ملے گا ۔

    • Share this:
    نئی دہلی : عام آدمی پارٹی کے کنوینر اور دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال، جنہوں نے اتراکھنڈ کا دورہ کیا، آج ریاست کی ہمہ جہت ترقی کے لئے پارٹی کا روڈ میپ تیار کیا اور کہا کہ اگر عام آدمی پارٹی کی حکومت بنی، تو 10 نکاتی ایجنڈا، ٹیکس کے ذریعہ اتراکھنڈ کی تعمیر نو کی جائے گی۔ اتراکھنڈ میں سب سے بڑا ناسور کرپشن ہے۔  بدعنوانی کو ختم کرنا صرف عام آدمی پارٹی کو آتا ہے۔ دوسری جماعتوں کو یہ معلوم نہیں اور ان کی نیت بھی خراب ہے۔ ہم سب کو تعلیم اور صحت کی سہولیات مفت دیں گے، پانچ ہزار روپے بے روزگاری الاؤنس اور خواتین کو ایک ہزار روپے دینے سمیت دیگر سہولیات دیں گے۔  اس کی وجہ سے ہر خاندان کو ہر سال دو لاکھ اور پانچ سالوں میں 10 لاکھ کا فائدہ ملے گا۔ ہم نے دہلی میں کیا ہے۔ اروند کیجریوال نے کہا کہ اگر ہم سات سال میں دہلی میں اتنا کچھ کر سکتے تھے تو بی جے پی اور کانگریس نے 21 سالوں میں کیا کیا؟  آج اتراکھنڈ پر تقریباً 60 ہزار کروڑ کا قرض ہے۔ یہ سارا پیسہ ان سیاستدانوں نے لوٹا ہے۔ دونوں نے اپنا گھر بھرنے اور ایک دوسرے کو بچانے کے سوا کچھ نہیں کیا۔ اتراکھنڈ کے لوگوں کو آج ایک ایماندار متبادل کی ضرورت ہے اور عام آدمی پارٹی وہ ایماندار آپشن دے گی۔

    کیجریوال نے اتراکھنڈ میں ایک پریس کانفرنس کی۔ اس دوران ریٹائرڈ کرنل اجے کوٹھیال، جو اتراکھنڈ عام آدمی پارٹی کے وزیر اعلیٰ کا چہرہ ہیں ، وہ بھی موجود رہے۔ پریس کانفرنس کے ذریعہ اتراکھنڈ کے باشندوں سے خطاب کرتے ہوئے کیجریوال نے کہا کہ اتراکھنڈ کو بنے ہوئے تقریباً 21 سال ہوچکے ہیں۔ جس میں کانگریس نے تقریباً 10 سال اور بی جے پی نے تقریباً 11 سال حکومت کی۔ یہ دونوں پارٹیاں آج اتراکھنڈ کی حالت زار کے لیے بظاہر ذمہ دار ہیں۔ ان 21 سالوں میں اتراکھنڈ کے باشندوں نے سوائے کرپشن کے کچھ نہیں دیکھا۔  اب اگر ہم آئندہ انتخابات میں ان جماعتوں میں سے کسی کو مزید پانچ سال دے دیں تو اب کچھ نہیں بدلنے والا۔ اگلے انتخابات میں بھی وہی ایشوز ہوں گے، وہی نعرے اور وہی باتیں ہوں گی، لیکن کچھ نہیں بدلے گا۔

    انہوں نے کہا کہ دہلی میں عام آدمی پارٹی کی حکومت سات سال سے اپنے مقابلے میں ہے۔ عام آدمی پارٹی ایک نئی پارٹی ہے۔ پہلی بار دہلی کے لوگوں نے موقع دیا اور عام آدمی پارٹی نے دہلی کے اندر بے مثال ترقی کی ہے۔ دہلی کے سرکاری اسکولوں کو شاندار بنایا گیا ہے، سرکاری اسپتالوں کو شاندار بنایا گیا ہے۔  کئی محلہ کلینک بنائے گئے ہیں ۔ دہلی میں پہلے بہت زیادہ بجلی کٹوتی ہوا کرتی تھی، لیکن اب بجلی 24 گھنٹے آتی ہے۔ ہم نے دہلی میں بجلی مفت کر دی۔ اس طرح ہم نے بہت ساری چیزیں کی ہیں۔

    کیجریوال نے کہا کہ آپ دہلی میں رہنے والے اپنے دوستوں اور رشتہ داروں کو فون کریں اور پوچھیں کہ کیا کیجریوال نے کچھ کام کیا ہے۔ اگر کوئی کہے کہ کیجریوال نے کام نہیں کیا تو اتراکھنڈ میں بھی مجھے ووٹ نہ دیں۔ اتراکھنڈ میں مجھے ووٹ دو اگر کوئی کہے کہ کیجریوال نے کام کیا ہے۔ میں سمجھتا ہوں کہ کسی جماعت میں اتنی ہمت نہیں کہ وہ اتنے بڑے دعوے اور اعتماد کے ساتھ بیان دے کہ مجھے میری دوسری ریاست میں بلا کر پوچھیں۔ کیا آج کانگریس کہہ سکتی ہے کہ پنجاب یا راجستھان میں فون کرکے پوچھے کہ کیا کام ہوا؟ یہ الیکشن ایک تاریخی الیکشن ہے، جس میں بہت بڑی تبدیلی ممکن ہے۔ پہلی بار اتراکھنڈ کے اندر ایک ایماندار حکومت بن سکتی ہے۔ کرپشن ختم ہو سکتا ہے۔

    کیجریوال نے اتراکھنڈ کی ہمہ جہت ترقی کے لیے اپنی پارٹی کے 10 نکاتی ایجنڈے کو سامنے رکھتے ہوئے کہا کہ یہ ہمارے منشور کا خلاصہ ہے۔ ڈیکلریشن فارم کی تفصیل چند روز بعد جاری کی جائے گی۔ سب سے پہلے ہم کرپشن ختم کریں گے۔ صرف عام آدمی پارٹی ہی کرپشن کو ختم کر سکتی ہے۔ دوسری جماعتیں کرپشن ختم نہیں کر سکتیں۔ وہ کرپشن کو ختم کرنا بھی نہیں جانتے اور ان کی نیت بھی خراب ہے۔ عام آدمی پارٹی کی نیت صاف ہے۔ ہم نے دہلی میں بھی ایسا کیا ہے۔ دہلی کے اندر ہم نے سال بہ سال بدعنوانی کو ختم کیا ہے۔  پہلے لوگوں کو سرکاری دفاتر میں اپنا کام کروانے کے لیے ریٹ ٹو ریٹ ادا کرنا پڑتا تھا۔ اب ایسا نہیں ہے۔  اب گھر بیٹھے لوگوں کے سارے کام ہوتے ہیں۔ ہم نے بڑے پیمانے پر کرپشن کا خاتمہ کیا ہے۔ دہلی میں بدعنوانی کے خلاف صفر رواداری ہے۔

    انہوں نے کہا کہ اتراکھنڈ میں آج سب سے بڑا ناسور کرپشن ہے۔ بی جے پی کی حکومت ہو یا کانگریس، سبھی لیڈروں نے مل کر اتراکھنڈ کو لوٹا ہے۔ دوسرا، ہم نے دہلی میں بجلی مقرر کی ہے اور 24 گھنٹے بجلی ہے۔ جبکہ اس سے قبل بجلی کی بہت زیادہ کٹوتی ہوتی تھی۔ ہم اتراکھنڈ میں بھی بجلی ٹھیک کریں گے۔ یہاں بھی بجلی کی کافی کٹوتی ہے۔ حالانکہ اتراکھنڈ بجلی پیدا کرنے والی ریاست ہے۔  دہلی میں بجلی نہیں بنتی، ہم باہر سے خریدتے ہیں۔ اس کے باوجود دہلی کے اندر 24 گھنٹے بجلی ہے۔  اسی طرح اتراکھنڈ میں بھی 24 گھنٹے بجلی فراہم کی جائے گی اور مفت بجلی فراہم کی جائے گی۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: