ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

جہدکار ورا ورا راو کو تین سال بعد راحت،بمبئی ہائی کورٹ نے منظور کی ضمانت

راؤ کو 2018میں بیشتر دیگر جہدکاروں کے ساتھ غیر قانونی سرگرمیوں کے انسداد کے قانون کے تحت گرفتار کیاگیا تھا۔وہ کئی امراض کا شکار ہیں اور فی الحال ممبئی کے ناناوتی اسپتال میں زیرعلاج ہیں۔

  • UNI
  • Last Updated: Feb 22, 2021 02:44 PM IST
  • Share this:
جہدکار ورا ورا راو کو تین سال بعد راحت،بمبئی ہائی کورٹ نے منظور کی ضمانت
جہدکار،مصنف ورا ورا راو جو بھیماکورے گاوں معاملہ کے ملزم ہیں کو بمبئی ہائی کورٹ نے تین سال کے بعد راحت پہنچاتے ہوئے ان کی ضمانت منظور کردی

حیدرآباد سے تعلق رکھنے والے جہدکار،مصنف ورا ورا راو جو بھیماکورے گاوں معاملہ کے ملزم ہیں کو بمبئی ہائی کورٹ نے تین سال کے بعد راحت پہنچاتے ہوئے ان کی ضمانت منظور کردی۔چھ ماہ تک طبی بنیادوں پر ان کو عدالت نے راحت دی ہے۔چھ ماہ کی تکمیل کے بعد ان کو یا تو خودسپرد ہوناپڑے گا یا پھر ضمانت میں توسیع کے لئے عرضی داخل کرنی پڑے گی۔راؤ کو 2018میں بیشتر دیگر جہدکاروں کے ساتھ غیر قانونی سرگرمیوں کے انسداد کے قانون کے تحت گرفتار کیاگیا تھا۔وہ کئی امراض کا شکار ہیں اور فی الحال ممبئی کے ناناوتی اسپتال میں زیرعلاج ہیں۔راو کو اس شرط پر ضمانت دی گئی کہ وہ ممبئی میں ہی رہیں گے اور جانچ کے لئے دستیاب رہیں گے۔



عدالت نے ان کو ہدایت دی کہ 50ہزار روپئے کا شخصی مچلکہ فراہم کرے اور اس معاملہ کی سماعت کیلئے این آئی اے کی عدالت میں حاضر ہوں تاہم وہ این آئی اے کی عدالت میں حاضر ہونے سے استثنی کی خواہش کرتے ہوئے عرضی بھی دائر کرسکتے ہیں۔راو کو چھ ماہ کے عرصہ کے لئے ممبئی میں ہی قیام کرنا ہوگا۔جسٹس ایس ایس شنڈے اور جسٹس منیش پٹالے نے کہا کہ اگر راو کو طبی بنیادوں پر ضمانت نہیں دی گئی تو یہ انسانی حقوق کے اصولوں،زندگی اور صحت کے شہریوں کے بنیادوں حقوق کے تحفظ کے فرض کی خلاف ورزی ہوگی۔عدالت نے یکم فروری کو اس معاملہ کے دلائل کی سماعت مکمل ہونے کے بعد فیصلہ کو محفوظ رکھاتھا۔جہدکارکی اہلیہ ہیم لتا نے ان کی ضمانت کی عرضی دائر کی تھی اور ان کی نامناسب طبی نگہداشت کے سبب بنیادی حقوق کی خلاف ورزی کا الزام لگایا تھا۔
Published by: Mirzaghani Baig
First published: Feb 22, 2021 02:44 PM IST