چھٹے مرحلہ کے ووٹنگ سے پہلے بنگال میں تشدد ، بی جے پی کے دو کارکنان پر حملہ، ایک کی موت

لوک سبھا انتخابات 2019 کے چھٹے مرحلے سے پہلے مغربی بنگال سے تشدد کی خبر آرہی ہے ۔ آج صبح بی جے پی کے دو کارکنان پر حملہ کیا گیا ، جس میں سے ایک کی موت ہوگئی جبکہ دوسرا سنگین طور پر زخمی ہوگیا ۔

May 12, 2019 08:35 AM IST | Updated on: May 12, 2019 08:35 AM IST
چھٹے مرحلہ کے ووٹنگ سے پہلے بنگال میں تشدد ، بی جے پی کے دو کارکنان پر حملہ، ایک کی موت

بی جے پی نے اس تشدد کیلئے ٹی ایم سی کو ذمہ دار ٹھہرایا ہے ۔

لوک سبھا انتخابات 2019 کے چھٹے مرحلے سے پہلے مغربی بنگال سے تشدد کی خبر آرہی ہے ۔ آج صبح بی جے پی کے دو کارکنان پر حملہ کیا گیا ، جس میں سے ایک کی موت ہوگئی جبکہ دوسرا سنگین طور پر زخمی ہوگیا ۔ جھارگرام میں بی جے پی کے بوتھ پریسیڈنٹ کا قتل کردیا گیا ۔ بی جے پی کے کارکن رمن سنگھ کی موت اسپتال لے جانے سے پہلے ہی ہوگئی ۔

بی جے پی کا الزام ہے کہ ان پر ٹی ایم سی کے لوگوں نے کلہاڑی سے حملہ کیا ۔ حالانکہ کہا جارہا ہے کہ ان کے جسم پر زخم کا کوئی نشان نہیں ہے ۔ پوسٹ مارٹم کے بعد ہی موت کی اصل وجہ معلوم ہوسکے گی ۔

بی جے پی نے اس تشدد کیلئے ٹی ایم سی کو ذمہ دار ٹھہرایا ہے ۔ بی جے پی کے لیڈر کیلاش وجے ورگیہ نے الزام لگایا ہے کہ ٹی ایم سی کے کارکنان نے رمن سنگھ کو گھر میں گھس کر قتل کردیا ۔ حالانکہ ٹی ایم سی نے ان الزامات کو خارج کردیا ہے۔ ادھر کل رات مدنا پور میں بھی بی جے پی کے ایک کارکن پر حملہ کیا گیا ۔

Loading...