உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    UP Election 2022:یوپی الیکشن کے چھٹے مرحلے کے لئے 57 اسمبلی سیٹوں پر ووٹنگ شروع

    UP Election 2022: انتخابات کے پرامن انعقاد کے لیے نیم فوجی دستوں کو تعینات کیا گیا ہے۔ ہر پولنگ اسٹیشن پر نیم فوجی دستوں کی تعیناتی کو یقینی بنایا گیا ہے۔ ای وی ایم کے اسٹرانگ روم کی سیکورٹی بھی نیم فوجی دستوں کو دی گئی ہے۔

    UP Election 2022: انتخابات کے پرامن انعقاد کے لیے نیم فوجی دستوں کو تعینات کیا گیا ہے۔ ہر پولنگ اسٹیشن پر نیم فوجی دستوں کی تعیناتی کو یقینی بنایا گیا ہے۔ ای وی ایم کے اسٹرانگ روم کی سیکورٹی بھی نیم فوجی دستوں کو دی گئی ہے۔

    UP Election 2022: انتخابات کے پرامن انعقاد کے لیے نیم فوجی دستوں کو تعینات کیا گیا ہے۔ ہر پولنگ اسٹیشن پر نیم فوجی دستوں کی تعیناتی کو یقینی بنایا گیا ہے۔ ای وی ایم کے اسٹرانگ روم کی سیکورٹی بھی نیم فوجی دستوں کو دی گئی ہے۔

    • Share this:
      لکھنو: اترپردیش اسمبلی انتخابات 2022 (Uttar Pradesh Assembly Election 2022) کے چھٹے مرحلے میں آج جمعرات کو 57 اسمبلی حلقوں میں پولنگ کی شروعات ہوگئی ہے۔ چھٹے مرحلے میں 676 امیدوار میدان میں ہیں جن میں سے 66 خواتین امیدوار ہیں۔ صبح 7 بجے شروع ہونے والی یہ ووٹنگ شام 6 بجے تک ختم ہو جائے گی۔ چھٹے مرحلے میں جن 10 اضلاع میں ووٹنگ ہو رہی ہے ان میں امبیڈکر نگر میں 5، بلرام پور میں 4، سدھارتھ نگر میں 5، بستی میں 5، سنت کبیر نگر میں 3، مہاراج گنج میں 5، گورکھپور میں 9، کشی نگر میں 7، 7 اضلاع ہیں۔ دیوریا اور بلیا میں 7۔ 7 سیٹیں شامل ہیں۔ امبیڈکر نگر اور بلیا کو چھوڑ کر، اس مرحلے میں باقی اضلاع کو وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ کے سیاسی اثر میں سمجھا جاتا ہے۔ چھٹے مرحلے کی پولنگ میں 2.15 کروڑ ووٹر اپنے حق رائے دہی کا استعمال کریں گے۔ ان میں 1.15 کروڑ مرد، 1.00 کروڑ خواتین اور 1363 تیسری جنس کے ووٹر ہیں۔


      25 ہزار سے زیادہ ووٹنگ سینٹرس، 13 ہزار سے زیادہ مرکز
      انتخابات میں کُل 25326 پولنگ مقامات اور 13936 پولنگ اسٹیشنز ہیں۔ کووڈ-19 کے پیش نظر الیکشن کمیشن آف انڈیا نے پولنگ کے مقامات پر زیادہ سے زیادہ ووٹروں کی تعداد 1250 تک رکھنے کی ہدایات دی ہیں۔ تمام پولنگ مقامات پر ریمپ، بیت الخلا اور پینے کے پانی کی سہولیات کو یقینی بنایا گیا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      RRB NTPC: حقوق انسانی کمیشن نےطلباکے خلاف کریک ڈاؤن کیلئےپولیس پرکارروائی کاکیامطالبہ

      کوویڈ کو لے کر تیاری پختہ
      کووڈ-19 کے پیش نظر پولنگ کے دن پولنگ مقامات پر تھرمل اسکینر، ہینڈ سینیٹائزر، دستانے، چہرے کے ماسک، فیس شیلڈز، پی پی ای کٹس، صابن، پانی وغیرہ کے انتظامات کیے گئے ہیں۔ ووٹرز کی سہولت کے لیے ووٹر گائیڈ بھی جاری کر دیا گیا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Anganwadi workers پر کارپوریشن انتخابات سے قبل دہلی حکومت کی کرم فرمائی

      ووٹنگ میں ان کی ہوگی گہری نظر
      کمیشن نے پولنگ پر گہری نظر رکھنے کے لیے 56 جنرل مبصرین، 10 پولیس مبصرین اور 18 اخراجات کے مبصرین کو بھی تعینات کیا ہے۔ اس کے علاوہ 1680 سیکٹر مجسٹریٹ، 228 زونل مجسٹریٹ، 173 سٹیٹک مجسٹریٹ اور 2137 مائیکرو آبزرور بھی تعینات کیے گئے ہیں۔ اس کے ساتھ ہی ریاستی سطح پر ایک سینئر جنرل آبزرور، ایک سینئر پولیس آبزرور اور دو سینئر ایکسپینڈیچر آبزرور بھی تعینات کیے گئے ہیں، جو علاقے میں رہ کر پورے انتخابی عمل کی نگرانی کریں گے۔

      انتخابات کے پرامن انعقاد کے لیے نیم فوجی دستوں کو تعینات کیا گیا ہے۔ ہر پولنگ اسٹیشن پر نیم فوجی دستوں کی تعیناتی کو یقینی بنایا گیا ہے۔ ای وی ایم کے اسٹرانگ روم کی سیکورٹی بھی نیم فوجی دستوں کو دی گئی ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: