ہوم » نیوز » وطن نامہ

سورج گرہن شروع ہوا، اس دوران یہ احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کا مشورہ

سورج گرہن 2020: سائنسدانوں نے لوگوں کو آگاہ کیا ہے کہ سورج کو ننگی آنکھوں سے مت دیکھو، گرہن دیکھنے کے لئے ایکسرے فلموں یا عام شیشے استعمال نہ کریں۔

  • UNI
  • Last Updated: Jun 21, 2020 01:29 PM IST
  • Share this:
سورج گرہن شروع ہوا، اس دوران یہ احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کا مشورہ
سورج گرہن شروع ہوا، اس دوران یہ احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کا مشورہ۔ تصویر: اے این آئی

نئی دہلی:  ہندوستان کے شمالی علاقوں میں سالانہ سورج گرہن کا آسمانی واقعہ اتوار کی صبح تقریباً 10:25 بجے سے شروع ہوا۔ سورج گرہن افریقہ، ایشیاء اور یورپ کے کچھ حصوں سے نظر آئےگا اور دلچسپ بات یہ ہے کہ سورج گرہن ہندوستان کے شمالی حصے میں نظر آئے گا۔ صبح 10:25 بجے شروع ہوگیا، زیادہ سے زیادہ سورج گرہن 12:08 اور 01:54 منٹ پر ختم ہوگا۔ اس سے قبل آخری بار سورج گرہن 26 دسمبر 2019 کو جنوبی ہندوستان سے اور ملک کے مختلف حصوں سے جزوی گرہن کے طور پر دیکھا گیا تھا۔ اگلی دہائی کے دوران اگلا شماری سورج گرہن ہندوستان میں نظر آئے گا، جو 21 مئی 2031 کو ہوگا، جبکہ ایک مکمل شمسی گرہن 20 مارچ 2034 کو دیکھا جائے گا۔ یہ سورج گرہن 900 سال بعد لگ رہا ہے اور یہ اتوار کو ہے، اسی لئے اسے چونامنی گرہن کہا گیا ہے۔





اس سے قبل 5 جون کو، چاند گرہن لگ چکا ہے۔ حکومت ہند کے شعبہ سائنس اینڈ ٹیکنالوجی (ڈی ایس ٹی) کے ایک خودمختار ادارے، آریا بھٹہ آبزرویشنیکل سائنس اینڈ ریسرچ انسٹی ٹیوٹ (اے آرآئی ای ایس یا ایریز) ، نے اس سورج گرہن کے سوشل میڈیا پر براہ راست ٹیلی کاسٹ کا اہتمام کیا ہے۔ ایریز نے گرہن دیکھنے کے دوران کیا کرنا ہے اور کیا نہیں کرنا ہے اس کی ایک فہرست تیار کی ہے۔ سورج گرہن کے دوران یہ احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کا مشورہ دیا گیا ہے: سورج گرہن دیکھنے کے لئے آنکھوں کو نقصان سے بچانے کےلئے گرہن دیکھنے والے شیشے (آئی ایس اوسرٹیفائی) یا مناسب فلٹرز والے کیمرے استعمال کریں اور آنکھوں کو کسی بھی نقصان سے بچائیں۔ سالانہ سورج گرہن دیکھنے کا سب سے محفوظ طریقہ پن ہول کیمرا، آن اسکرین پروجیکشن یا دوربین کے ذریعے ہے۔ سورج گرہن کے دوران کھانے پینے ، نہانے اور باہر جانے میں کوئی حرج نہیں ہے۔




اس سے قبل آخری بار سورج گرہن 26 دسمبر 2019 کو جنوبی ہندوستان سے اور ملک کے مختلف حصوں سے جزوی گرہن کے طور پر دیکھا گیا تھا۔
اس سے قبل آخری بار سورج گرہن 26 دسمبر 2019 کو جنوبی ہندوستان سے اور ملک کے مختلف حصوں سے جزوی گرہن کے طور پر دیکھا گیا تھا۔

اس میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ سورج کو ننگی آنکھوں سے مت دیکھو، گرہن دیکھنے کے لئے ایکسرے فلموں یا عام شیشے (حتی کہ یووی تحفظ والےبھی نہیں) استعمال نہ کریں۔ اس کے علاوہ ، گرہن دیکھنے کے لئے پینٹڈ گلاس کا استعمال نہ کریں۔ سورج گرہن اس وقت ہوتا ہے جب چاند (اماوسیا کے مرحلے میں) سورج کی جزوی یا مکمل روشنی کوروک لیتا ہے اور اسی کے مطابق جزوی، گوشوارہ اور مکمل سورج گرہن ہوتا ہے۔ گرہن کے دوران ، چاند کا سایہ زمین پر پڑتا ہے اور اندھیرا چھاجاتا ہے جسے امبرا اور کم سیاہ خطے کو پینمبرا کے نام سے جانا جاتا ہے۔ مکل سورج گرہن ،سوبھی سورج گرہن میں نایاب ہے۔ اگرچہ امواسیا ہر مہینے آتی ہو ، لیکن ہمیں گرہن اتنی کثرت سے نظر نہیں آتا۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ چاند کی مدار زمین سورج پلین کے لحاظ سے تقریباً 5 ڈگری جھکی ہوئی ہے۔ اسی وجہ سے، سورج، چاند اور زمین کا اتفاق (ایک ہی لائن میں) ایک نادر فلکیاتی واقع کے طور پر ظاہر ہوتا ہے۔

First published: Jun 21, 2020 01:22 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading