உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    BRICS Declaration:بات چیت سے حل کیاجائے یوکرین تنازعہ، دہشت گردی کے لئے نہ ہو افغان سرزمین کا استعمال

    برکس نے جاری کیا اعلامیہ۔ یوکرین۔روس جنگ اور افغانستان کو لے کر کہی یہ بڑی بات۔ (فائل فوٹو)

    برکس نے جاری کیا اعلامیہ۔ یوکرین۔روس جنگ اور افغانستان کو لے کر کہی یہ بڑی بات۔ (فائل فوٹو)

    آن لائن چوٹی کانفرنس میں وزیراعظم نریندر مودی، چینی صدر شی جن پنگ، روسی صدر ولادیمیر پوتن، برازیل کے صدر زائر بولسونارو اور جنوبی افریقی صدر سیریل رامافوسا نے حصہ لیا۔

    • Share this:
      BRICS Declaration:چین میں ہو رہے برکس سمٹ میں اعلامیہ جاری کیا گیا۔ اس میں خاص طور پر روس-یوکرین جنگ کا بھی ذکر کرتے ہوئے بات چیت سے اس معاملے کو حل کرنے پر زور دیا گیا ہے۔ اس میں کہا گیا ہے کہ، ہم سبھی ریاستوں کے وجود، علاقائی سالمیت کا احترام کرنے کے لئے پابند ہیں۔ اختلافات، تنازعات کے پرامن حل کے لئے اپنے عزم پر زور دیتے ہیں۔

      اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ برکس ممالک روس اور یوکرین کے درمیان مذاکرات کی حمایت کرتے ہیں۔ افغانستان کے معاملے پر کہا گیا ہے کہ ہم پرامن، محفوظ اور مستحکم افغانستان کی بھرپور حمایت کرتے ہیں، اس کی خودمختاری، آزادی، علاقائی سالمیت کے احترام پر زور دیتے ہیں۔ افغان سرزمین کو کسی بھی ملک کو دھمکی دینے یا حملہ کرنے یا دہشت گردوں کو پناہ دینے یا تربیت دینے کے لیے استعمال نہیں کیا جانا چاہیے۔

      آن لائن چوٹی کانفرنس میں وزیراعظم نریندر مودی، چینی صدر شی جن پنگ، روسی صدر ولادیمیر پوتن، برازیل کے صدر زائر بولسونارو اور جنوبی افریقی صدر سیریل رامافوسا نے حصہ لیا۔

      اعلامیے میں کہا گیا کہ ہم تمام ممالک کی خود مختاری اور علاقائی سالمیت کے احترام کے لیے پرعزم ہیں۔ وہ بات چیت اور مشاورت کے ذریعے ملکوں کے درمیان اختلافات اور تنازعات کے پرامن حل کے لیے بھی اپنے عزم پر زور دیتے ہیں۔ ہم بحران کے پرامن حل کے لیے تمام دوستانہ کوششوں کی حمایت کرتے ہیں۔ مشرقی لداخ میں چین اور ہندوستان کے درمیان جاری تعطل اور یوکرین پر روسی حملے کے تناظر میں اختلافات اور تنازعات کے پرامن حل کے تناظر میں یہ سیاق و سباق اہمیت رکھتا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      BRICSکیا ہے؟ کب ہوا تھا اس کا قیام اور کیا ہے اس کے اصل مقاصد؟

      یہ بھی پڑھیں:
      ’چین کرےعالمی قانون کااحترام، ہندوستان کےساتھ بات چیت کےسرحدی تنازع کوکرےحال‘ Australia

      اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ ہم نے یوکرین کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا اور مناسب فورمز جیسے کہ UNSC اور UNGA پر اظہار خیال کرتے ہوئے اپنے قومی موقف کو دوہرایا۔ ہم روس اور یوکرین کے درمیان مذاکرات کی حمایت کرتے ہیں۔ برکس نے کہا کہ وہ افغانستان کی خودمختاری، آزادی اور علاقائی سالمیت کے احترام کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے پرامن، محفوظ اور مستحکم افغانستان کی بھرپور حمایت کرتے ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: