உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Agnipath Scheme:اویسی کا مرکز پر نشانہ،’کیا پی ایم چاہتے ہیں کہ ہمارے فوجی چار سال بعد چوکیدار بنیں‘

    Asaduddin Owaisi  نے اگنی پتھ اسکیم کو لے کر مودی حکومت سے پوچھے سوال۔

    Asaduddin Owaisi نے اگنی پتھ اسکیم کو لے کر مودی حکومت سے پوچھے سوال۔

    Asaduddin Owaisi on Agnipath Scheme: کئی اپوزیشن جماعتوں کے ساتھ ساتھ فوجی تجربہ کاروں نے اس منصوبے پر تنقید کی ہے، جس میں 75 فیصد بھرتیوں کی چار سالہ مدت پر سوال اٹھایا گیا ہے۔ ساتھ ہی، حکومت اس اسکیم کا پرزور دفاع یہ کہتے ہوئے کر رہی ہے کہ مسلح افواج میں بھرتی کے لیے تبدیلی کا اقدام نوجوانوں کو قوم کی خدمت کا موقع فراہم کرے گا۔

    • Share this:
      Asaduddin Owaisi on Agnipath Scheme: اگنی پتھ اسکیم کو لے کر اپوزیشن پارٹیاں مسلسل مودی حکومت کو نشانہ بنا رہی ہیں۔ اے آئی ایم آئی ایم کے سربراہ اسد الدین اویسی نے براہ راست پی ایم مودی سے سوال پوچھے ہیں۔ اویسی نے کہا، ہم پی ایم سے جاننا چاہتے ہیں کہ کیا آپ ہمارے سپاہیوں کا اتنا ہی احترام کرتے ہیں؟ اس کا مطلب ہے کہ وہ چاہتے ہیں کہ ہمارے فوجی چار سال بعد چوکیدار بن جائیں۔ یہ ایک قابل احترام پیشہ ہے لیکن آپ کی پارٹی (بی جے پی) اسے حقارت کی نظر سے دیکھتی ہے جو کہ افسوسناک بات ہے۔

      اویسی نے کہا کہ ان امیدواروں کے ساتھ کیا ہوا ہوگا جنہوں نے امتحان میں کوالیفائی کرنے کے لیے اتنی محنت کی۔ وہ ایسا اس لیے کر رہے ہیں کیونکہ ان کی حکومت ملکی معیشت کو تباہ کر رہی ہے۔ آپ آرمی چیف کو کیوں آگے کر رہے ہیں، وزیراعظم کو اس کی ذمہ داری لینی چاہیے۔

      17 سے 21 سال کے نوجوانوں کے لئے اسکیم
      اگنی پتھ اسکیم میں ساڑھے 17 سال سے 21 سال کی عمر کے نوجوانوں کو صرف چار سال کے لیے بھرتی کرنے کا انتظام ہے، جس میں سے 25 فیصد کو مزید 15 سال تک برقرار رکھا جائے گا۔ اسکیم کے خلاف احتجاج کے چند دن بعد، حکومت نے 2022 میں بھرتی کے لیے عمر کی بالائی حد بڑھا کر 23 سال کر دی تھی۔ نئی اسکیم کے تحت بھرتی کیے جانے والے اہلکاروں کو 'اگنی ویر' کے نام سے جانا جائے گا۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Agneepath Recruitment: انڈین آرمی میں اگنی پتھ اسکیم کے تحت بھرتی 2022، جانیے تفصیلات

      یہ بھی پڑھیں:
      Agnipath Scheme واپس لینے کا کوئی سوال نہیں، یہ نوجوانوں کیلئے سنہرا موقع : فوجی سربراہ

      کئی اپوزیشن جماعتوں کے ساتھ ساتھ فوجی تجربہ کاروں نے اس منصوبے پر تنقید کی ہے، جس میں 75 فیصد بھرتیوں کی چار سالہ مدت پر سوال اٹھایا گیا ہے۔ ساتھ ہی، حکومت اس اسکیم کا پرزور دفاع یہ کہتے ہوئے کر رہی ہے کہ مسلح افواج میں بھرتی کے لیے تبدیلی کا اقدام نوجوانوں کو قوم کی خدمت کا موقع فراہم کرے گا۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: