مغربی بنگال : آسنسول میں مسلم پھیری والے سے مار پیٹ ، جے شری رام کہنے پر مجبور کرنے کا الزام

مغربی بنگال کے آسنسول کے پاس ہیرا پور علاقہ میں ایک مسلم پھیری والے سے مار پیٹ اور اس کو زبردستی جے شری رام بولنے کیلئے مجبور کرنے کے واقعہ کے بعد کشیدگی پھیل گئی ہے ۔

Jul 25, 2019 10:59 PM IST | Updated on: Jul 25, 2019 10:59 PM IST
مغربی بنگال : آسنسول میں مسلم پھیری والے سے مار پیٹ ، جے شری رام کہنے پر مجبور کرنے کا الزام

مغربی بنگال میں مسلم پھیری والے سے مار پیٹ ، جے شری رام کہنے پر مجبور کرنے کا الزام

مغربی بنگال کے آسنسول کے پاس ہیرا پور علاقہ میں ایک مسلم پھیری والے سے مار پیٹ اور اس کو زبردستی جے شری رام بولنے کیلئے مجبور کرنے کے واقعہ کے بعد کشیدگی پھیل گئی ہے ۔ انتطامیہ نے احتیاطا سیکورٹی میں اضافہ کردیا ہے اور انٹرنیٹ خدمات پر روک لگادی ہے ۔ اس واقعہ کے بعد سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو بھی وائرل کرایا گیا، جس کے ذریعہ ہندو - مسلم فساد ہونے کا دعوی کیا جارہا ہے ۔

آسنسول پولیس نے اس ویڈیو کو فرضی بتایا ہے اور ایسے کسی بھی واقعہ کو مسترد کردیا ہے ۔ پولیس کے مطابق فی الحال علاقہ میں کشیدگی ہے ، لیکن بڑی تعداد میں پولیس اہلکاروں کو تعینات کردیا گیا ہے ۔ افسران کے مطابق کچھ نوجوانوں نے ایک مسلم پھیری والے سے مار پیٹ کی اور اس کو جے شری رام بولنے کیلئے کہا تھا ۔ بعد میں اس کو مقامی اسپتال میں داخل کرایا گیا ۔ حالانکہ اس معاملہ میں ابھی تک کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی ہے ۔

Loading...

آسنسول کے پولیس کمشنر ڈی پی سنگھ نے نیوز ایجنسی پی ٹی آئی کو بتایا کہ سوشل میڈیا کے ذریعہ ماحول خراب کرنے کی کوشش نہ ہو ، اس لئے انٹرنیٹ خدمات روک دی گئی ہیں ، پولیس گشت بڑھادی گئی ہے ، حالات فی الحال قابو میں ہیں ۔ واقعہ کیلئے برسراقتدار ترنمول کانگریس اور بی جے پی نے ایک دوسرے کو مورد الزام ٹھہرایا ہے ۔

ترنمول کانگریس کے سینئر لیڈر اور آسنسول کے  میئر جتیندر تیواری نے الزام لگایا ہے کہ بی جے پی علاقہ کا ماحول خراب کرنا چاہتی ہے ۔ تو وہیں ریاستی بی جے پی کے ایک سینئر لیڈر نے ان الزامات کو بے بنیاد قرار دیا اور کہا کہ ایسے واقعات ثابت کرتے ہیں کہ ریاستی حکومت لا اینڈ آرڈر برقرار رکھنے میں ناکام ہوچکی ہے ۔

Loading...