ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

مغربی بنگال اسمبلی انتخابات: ممتا بنرجی نے امت شاہ کے دعوی کا مذاق اڑایا

وزیر اعلی ممتابنرجی نے مرکزی وزیر داخلہ کے ذریعہ پہلے مرحلے میں ہوئی 30سیٹوں کی پولنگ میں 26سیٹیں جیتنے کے دعوی پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ انہیں ان چار سیٹوں پر بھی جیت کا دعوی کردینا چاہیے-انہوں نے کہاکہ بی جے پی بڑا رسوگولا کے علاوہ کچھ نہیں ملے گا-

  • UNI
  • Last Updated: Mar 29, 2021 04:41 PM IST
  • Share this:
مغربی بنگال اسمبلی انتخابات: ممتا بنرجی نے امت شاہ کے دعوی کا مذاق اڑایا
مغربی بنگال اسمبلی انتخابات: ممتا بنرجی نے امت شاہ کے دعوی کا مذاق اڑایا

کولکاتہ: وزیر اعلی ممتابنرجی نے مرکزی وزیر داخلہ کے ذریعہ پہلے مرحلے میں ہوئی 30 سیٹوں کی پولنگ میں 26سیٹیں جیتنے کے دعوی پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ انہیں ان چار سیٹوں پر بھی جیت کا دعوی کردینا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی کو بڑا رسگولا کے علاوہ کچھ نہیں ملے گا۔

ممتا بنرجی سے سوال کیا کہ آخر امت شاہ اتنے یقین کے ساتھ کیسے کہہ سکتے ہیں؟ کیا انہوں نے ووٹنگ مشین دیکھی ہے؟ انہوں نے کہ وہ بھرم پھیلانےکی کوشش کررہے ہیں جب کہ بنگال کے عوام نے انہیں سبق سکھانے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

ممتا بنرجی نے کہا کہ بنگال پر کوئی بھی باہری حکومت نہیں کرسکتا ہے۔ ممتابنرجی نےکہا کہ مودی زمین لےکر اپنے دوستوں اڈانی کے حوالہ کررہے ہیں۔ انہوں نے ملک کے سرمایے کو چند دوستوں کے ہاتھوں سپرد کرنےکی کوشش کی جا رہی ہے۔


ممتا بنرجی سے سوال کیا کہ آخر امت شاہ اتنے یقین کے ساتھ کیسے کہہ سکتے ہیں؟ کیا انہوں نے ووٹنگ مشین دیکھی ہے؟
ممتا بنرجی سے سوال کیا کہ آخر امت شاہ اتنے یقین کے ساتھ کیسے کہہ سکتے ہیں؟ کیا انہوں نے ووٹنگ مشین دیکھی ہے؟


وزیر اعلی نے کہا کہ 2 مئی کو ریاست کے عوام باہری عناصر کو باہر کا راستہ دکھائیں گے۔ بنگال نے کبھی بھی باہری عناصر کو تسلیم نہیں کیا ہے۔ ممتابنرجی نے الیکشن کمیشن سے اپنی ذمہ داری ادا کرنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی فورسیز کے جوان خواتین اور ضعیفوں کو بی جے پی کو ووٹ کرنے کےلئے کہہ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ سلسلہ بند ہونا چاہئے۔ ممتابنرجی نے کہاکہ یہ اترپردیش نہیں ہے، یہ بنگال ہے اور بنگال کے عوام اپنے کلچر کی حفاظت کے لئے سنجیدہ ہیں۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Mar 29, 2021 04:16 PM IST