ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

West Bengal Election 2021:مغربی بنگال میں چھٹے مرحلے کے تحت 43اسمبلی حلقوں میں پولنگ جاری، سخت سکیورٹی انتظامات

West Bengal Election 2021:اس مرحلے کے دوران (6th Phase voting)جن 306 امیدواروں کی سیاسی قسمت کا فیصلہ کیا جائے گا ان میں بھارتیہ جنتا پارٹی (Bharatiya Janata Party) کے قومی نائب صدر مکول رائے (Mukul Roy)، ترنمول کانگریس (Trinamool Congress) کے وزراء جیوتیپریو مالِک (Jyotipriyo Mallick )، چندریما بھٹاچاریہ (Chandrima Bhattacharya)، اور سی پی آئی (ایم) CPI(M) کے رہنما تمنائے بھٹاچاریہ (Tanmay Bhattacharya) جیسے اہم سیاسی رہنما شامل ہیں۔

  • Share this:
West Bengal Election 2021:مغربی بنگال میں چھٹے مرحلے کے تحت 43اسمبلی حلقوں میں پولنگ جاری، سخت سکیورٹی انتظامات
مغربی بنگال میں اسمبلی انتخابات کے تحت 6 مرحلے کی پولنگ جاری

آج مغربی بنگال میں اسمبلی انتخابات (West Bengal Election 2021)کے6 مرحلے تحت پولنگ  (6th Phase voting)جاری ہے ۔ اس کے ساتھ ہی شمالی 24 پرگناس (North 24 Parganas)، نادیہ (Nadia)، اتر ڈینج پور (Uttar Dinajpur ) اور پورہ باردھمن (Purba Bardhaman) کے کچھ حصوں میں 43 اسمبلی حلقوں کے 14,480 پولنگ اسٹیشنوں پر رائے دہی ہورہی ہے۔اس مرحلے کے دوران جن 306 امیدواروں کی سیاسی قسمت کا فیصلہ ہوگا۔ ان میں بھارتیہ جنتا پارٹی (Bharatiya Janata Party) کے قومی نائب صدر مکول رائے (Mukul Roy)، ترنمول کانگریس (Trinamool Congress) کے وزراء جیوتیپریو مالِک (Jyotipriyo Mallick )، چندریما بھٹاچاریہ (Chandrima Bhattacharya)، اور سی پی آئی (ایم) CPI(M) کے رہنما تمنائے بھٹاچاریہ (Tanmay Bhattacharya) جیسے اہم سیاسی رہنما شامل ہیں۔اس کے علاوہ نمایاں ناموں میں فلم ہدایتکار راج چکرورتی (Raj Chakraborty) اور اداکار کوشانی مکھرجی (Koushani Mukherjee) بھی شامل ہیں۔ جو بالترتیب بارک پورے (Barrackpore) اور شمالی کرشن نگر (Krishnanagar North) حلقوں سے ٹی ایم سی کے امیدوار ہیں۔



انتخابی کمیشن (Election Commission ) کے ایک عہدیدار نے پی ٹی آئی کو بتایا کہ پول پینل نے چھٹے مرحلے کے انتخابات (6th Phase voting) کے دوران مرکزی افواج کی کم از کم 1,071 نفری تعینات کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔گذشتہ 10 اپریل کو ہونے والے انتخابات کے چوتھے مرحلے کے دوران کوچ بہار (Cooch Behar) میں سیکیورٹی فورسز کی فائرنگ کے بعد ہلاک ہونے والے چار افراد سمیت پانچ اموات کے بعد یہ وسیع تر انتظامات کیے گئے ہیں ، ان اموات نے ٹی ایم سی اور بی جے پی کے مابین الفاظ کی ایک تلخ جنگ کو جنم دیا ہے۔

ریاست کی وزیر اعلی وزیر ممتا بنرجی (Mamata Banerjee ) نے وزیر داخلہ امیت شاہ (Amit Shah) کے استعفی اور وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi ) پر لاشوں پر سیاست کرنا کا الزام عائد کیا۔دریں اثناء عالمی وبا کورونا وائرس (کووڈ۔19) کے کیسوں میں لگاتار اضافے کے درمیان چھٹے مرحلے کے انتخابات کا انعقاد کیا جارہا ہے۔ مغربی بنگال میں اب تک کا سب سے زیادہ ایک دن میں کورونا کیسوں کا ریکارڈ 9,819 افراد ہیں۔

گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک میں مجموعی طور پر 2.95 لاکھ کووڈ کیسز درج کیے گئے ہیں۔ وہیں 2,023 اموات ریکارڈ کی گئیں۔

ٹی ایم سی نے الیکشن کمیشن کو ایک یادداشت پیش کی تھی جس میں اس پر زور دیا گیا تھا کہ وہ جاری پولنگ کے 6 ، 7 اور 8 ویں مراحل کو ایک ساتھ جمع کریں۔ بنگال کانگریس کے سربراہ ادھیر چودھری (Adhir Chowdhury) نے رائے شماری کے نگراں انتخابات پر آخری تین مراحل ملتوی کرنے کی اپیل کی تھی۔

ممتا بنرجی اور پرشانت کشور نے حالیہ مہموں کے دوران رائے شماری کے حکمت عملی پر مودی حکومت پر کووڈ بحران کو نظر انداز کرنے کا الزام لگایا ہے۔ تاہم دی انڈین ایکسپریس کو دیئے گئے ایک حالیہ انٹرویو میں امت شاہ نے کہا کہ جاری انتخابات اور کووڈ کیسوں میں موجودہ بڑھتی ہوئی وارداتوں کے درمیان کوئی تعلق نہیں ہے۔

ہندوستان - بنگلہ دیش سرحد کے قریب متاو کے گڑھ بوناون (Bongaon) اور کرشن نگر (Krishnanagar) میں اسمبلی حلقوں میں بھی چھٹے مرحلے کے تحت پولنگ جاری ہے۔


ریاست میں ایک اندازے کے مطابق 30 لاکھ ووٹروں کے ساتھ اس برادری کو یہ حیثیت حاصل ہے کہ وہ نادیہ، شمالی اور جنوبی 24 پرگنا اضلاع میں کم سے کم چار لوک سبھا نشستوں اور 30 تا 40 اسمبلی نشستوں پر نتائج پر اثر انداز ہوسکے۔

ٹی ایم سی اور بی جے پی دونوں نے متاو کا اعتماد حاصل کرنے کے لئے سخت کوششیں کیں، بھگوا پارٹی سی اے اے (CAA ) اور ممتا بنرجی کے ذریعہ اپنی حالیہ جلسوں میں یہ کہتے ہوئے کہ مہاجروں کو شہریت دینے کے اپنے وعدے کے ساتھ انہیں منوانے کی کوشش کر رہی ہے کہ ریاستی حکومت پہلے ہی انہیں قانونی شہری تسلیم کرتی ہے۔ابھی تک مغربی بنگال کے 180 حلقوں میں انتخابات ہوچکے ہیں اور باقی 114 نشستوں پر 22 اور 29 اپریل کے درمیان انتخابات ہونے ہیں۔ ووٹوں کی گنتی 2 مئی کو ہوگی۔

ریاست میں 20 اپریل کو خام بم دھماکے کے تین واقعات کی اطلاع ملی۔ یہ تینوں واقعات ان حلقوں میں پیش آئے جہاں آج چھٹے مرحلے کے تحت انتخابات ہورہے ہیں۔ان دھماکوں مجموعی طورپرایک شخص اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھا۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Apr 22, 2021 08:02 AM IST