உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہاوڑہ میں پھر بھڑکا تشدد: شرپسندوں نے پولیس پر کیا پتھراؤ، کئی علاقوں میں دفعہ 144 نافذ

    Youtube Video

    west bengal violence: ہاوڑہ کے دائرہ اختیار میں البیریا سب ڈویژن میں قومی شاہراہوں، ریلوے اسٹیشن اور ملحقہ علاقوں میں سی آر پی سی کی دفعہ 144 کو 15 جون تک بڑھا دیا گیا ہے۔

    • Share this:
      کولکاتہ۔ مغربی بنگال کے ہاوڑہ ضلع کے پنچالا بازار میں سنیچر کو مظاہرین کے ایک گروپ نے پتھراؤ اور تشدد کا سہارا لیا۔ پولیس نے شرپسندوں کو روکنے کی کوشش کی تو ان پر بھی پتھراؤ کیا گیا۔ ایسے میں پولیس فورس شرپسند عناصر کو تتر۔بتر کرنے کے لیے آنسو گیس کے گولے داغنے پڑے۔ آپ کو بتا دیں کہ بی جے پی کی معطل ترجمان نوپور شرما کے متنازعہ تبصرے کو لے کر جمعہ سے ملک کی مختلف ریاستوں میں احتجاج دیکھا جا رہا ہے۔ اسی سلسلے میں جمعہ سے مغربی بنگال میں مختلف مقامات پر آتش زنی اور تشدد کے واقعات منظر عام پر آرہے ہیں۔

      ہاوڑہ کے دائرہ اختیار میں البیریا سب ڈویژن میں قومی شاہراہوں، ریلوے اسٹیشن اور ملحقہ علاقوں میں سی آر پی سی کی دفعہ 144 کو 15 جون تک بڑھا دیا گیا ہے۔ جمعہ کو نماز جمعہ کے بعد مغربی بنگال کے علاوہ دہلی، اتر پردیش، جھارکھنڈ، تلنگانہ سمیت کئی ریاستوں میں مظاہرے دیکھے گئے ہیں۔ اس دوران پولیس اور پتھراؤ کرنے والوں کے درمیان شدید جھڑپ ہوئی۔ جھارکھنڈ کی راجدھانی رانچی میں پرتشدد مظاہرے کے دوران دو افراد ہلاک ہو گئے۔ جمعہ کو مغربی بنگال کے ہاوڑہ ضلع میں افراتفری کے عناصر نے مختلف مقامات پر سڑکوں اور ریلوے ٹریک کو بند کر دیا گیا۔ ریاستی حکومت نے احتیاط کے طور پر جمعہ کی شام ہاوڑہ ضلع میں انٹرنیٹ کو معطل کر دیا تھا۔
      مشتعل لوگوں نے کولکاتہسے متصل ہاوڑہ میں بی جے پی کے دو دفاتر کو نشانہ بنایا۔ پارٹی نے دعویٰ کیا کہ البیڑیا میں ضلع بی جے پی دفتر اور پانچلا واقع دفتر میں توڑ پھوڑ کی اور پھر انہیں آگ کے حوالے کردیا۔ مظاہرین نے ڈومجور تھانے پر بھی حملہ کیا، جس میں 12 پولیس اہلکاروں کے زخمی ہونے کی خبر ہے۔ البیڑیا میں پولیس وین اور پولیس بوتھ میں بھی آگ لگا دی۔ یہاں پتھراو سے لے کر بم تک پھینکے گئے۔ نیوز ایجنسی پی ٹی آئی کے مطابق، ہاوڑہ ضلع میں 13 جون کو صبح 6 بجے تک کے لئے انٹرنیٹ خدمات بند کردی گئی ہے۔


      قابل ذکر ہے  کہ پیغمبر محمد صلی اللہ علیہ وسلم پر نازیبا اور توہین آمیز تبصرہ کے خلاف پورے ملکل میں شدید ناراضگی پائی جا رہی ہے اور بی جے پی سے معطل نوپور شرما اور نوین کمار جندل کی گرفتاری کے لئے جمعہ کو نماز کے بعد پورے ملک میں مسلم تنظیموں نے سڑک پر اترکر احتجاجی مظاہرہ کیا۔ احتجاج کے دوران کہیں پُرامن ماحول رہا تو کہیں اشتعال انگیز ماحول دیکھنے کو ملا۔ اترپردیش کے کئی اضلاع میں بھی ہنگامہ آرائی کی خبر آئی۔ پریاگ راج تشدد معاملے میں کئی افراد کو پولیس نے گرفتار کیا ہے جبکہ بڑی تعداد میں لوگوں کے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔

      دہلی کی جامع مسجد کے باہر بھی احتجاج کیا گیا۔ مظاہرین نے نوپور شرما اور نوین کمار جندل کی گرفتاری کا مطالبہ کیا۔ سب سے زیادہ اشتعال انگیز احتجاج جھارکھنڈ کی راجدھانی رانچی میں ہوا۔ کئی پولیس اہلکاروں کے زخمی ہونے کی خبر ہے۔ کولکاتہ میں بھی ہنگامہ کی خبر ہے۔ راجستھان کے کئی اضلاع میں بھی احتجاج کیا گیا۔ مدھیہ پردیش کے چھند واڑہ میں لوگوں نے احتجاجی مظاہرہ کیا، مگر پولیس کی سرگرمی سے کوئی ناگہانی حادثہ پیش نہیں آیا۔

      دہلی: Nupur Sharma کے خلاف جامع مسجد کے باہر احتجاج، گرفتاری کا مطالبہ

       

       

      پرسنل لا بورڈ کی علماء و دانشوروں سےTV channels کے مباحثوں، ڈبیٹس میں شرکت نہ کرنے کی اپیل

       

      رانچی میں  بھی فائرنگ سے ایک شخص کی موت
       وہیں رانچی میں بھی  پر تشدد صورتحال پیدا ہوگئی۔ یہاں ہجوم کی پتھر بازی اور پولیس اور مشتعل لوگوں کے درمیان گولی باری میں ایک نوجوان کی موت ہوگئی، جبکہ دو درجن سے زیادہ لوگ زخمی ہوگئے۔ ان میں آٹھ لوگوں کو گولیاں لگی ہیں۔ پتھراو میں ایس ایس پی اور سٹی ایس پی سمتی کئی پولیس اہلکار زخمی ہوگئے۔ اس دوران شہر کے سنکٹ موچن مندر پر پتھربازی ہونے کی خبر ہے۔ یہاں راہگیروں کو بھی پیٹا گیا۔ اطلاعات کے مطابق، بہار میں پی ڈبلیو ڈی وزیر نتن نوین کی گاڑی بھی اس دوران مشتعل لوگوں کی چپیٹ میں آگئی۔ ان کی گاڑی میں بھی توڑ پھوڑ کی خبر ہے۔ پولیس نے بڑی مشکل سے انہیں وہاں سے نکالا۔

      Published by:Sana Naeem
      First published: