உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    West Bengal: اغوا کی گئی 3 نابالغ لڑکیاں رہا، زبردستی کرایا جا رہا تھا یہ کام

    West Bengal: اغوا کی گئی 3 نابالغ لڑکیاں رہا، زبردستی کرایا جا رہا تھا یہ کام

    West Bengal: اغوا کی گئی 3 نابالغ لڑکیاں رہا، زبردستی کرایا جا رہا تھا یہ کام

    Bihar News: اینٹی ہیومن ٹریفکنگ کی ٹیم نے بیتیا کے نرکٹیا گنج کے شکار پور تھانہ علاقے کے دھوم نگر مندر کے پاس چھاپہ ماری کرکے تینوں لڑکیوں کو ریسکیو کیا۔ چھاپہ ماری میں آرکیسٹرا چلانے وال گڈو چورسیا کو گرفتار کیا گیا ہے۔ چھڑائی گئی تینوں لڑکیاں مغربی بنگال کی رہنے والی ہیں اور ان کے یہاں اغوا بنا کر کام کروایا جا رہا تھا۔

    • Share this:
      بیتیا: بہار کے مغربی چمپارن ضلع کے بیتیا (Bettiah) میں آرکیسٹرا پر چھاپہ ماری کرکے تین نابالغ لڑکیوں کو آزاد کرایا گیا ہے۔ اینٹی ہیومن ٹریفکنگ (Human Trafficking) کی ٹیم نے نرکٹیا گنج کے شکار پور تھانہ علاقے کے دھوم نگر مندر کے پاس چھاپہ ماری کرکے تینوں لڑکیوں کو ریسکیو کیا۔ چھاپہ ماری میں آرکیسٹرا چلانے والے گڈو چورسیا کو گرفتار کیا گیا ہے۔ چھڑائی گئیں تینوں لڑکیاں مغربی بنگال (West Bengal) کی رہنے والی ہیں۔ چھاپہ ماری کے دوارن اینٹی ہیومن ٹریفکنگ یونٹ ٹیم، رکسول کے انچارج سینئر انسپکٹر منوج شرما کے ساتھ مشن مکتی فاونڈیشن دہلی، ریسکیو فاونڈیشن دہلی، بال کلیان سمیتی بیتیا، چائلڈ لائن بیتیا اور مہیلا تھانہ کے علاوہ شکار پور تھانہ پولیس بھی موجود رہی۔

      موصولہ اطلاع کے مطابق، تھانہ انچارج سینئر انسپکٹر منوج کمار شرما کے پاس مغربی بنگال سے ایک شخص نے فون کرکے مدد مانگتے ہوئے کہا کہ ان کی بیٹی گزشتہ تین چار دن سے گھر نہیں لوٹی ہے۔ انہوں نے کوتوالی تھانہ جلپائی گڑی میں اس سے متعلق ایف آئی آر درج کروائی ہے۔ مقامی پولیس نے اس پر کام کرنا شروع کیا، جس میں لاپتہ لڑکی نے جس موبائل نمبر سے بات کی تھی، اس نمبر کی لوکیشن نکالی گئی تو وہ مغربی چمپارن ضلع کے بیتیا کے نرکٹیا گنج کی نکلی۔ پولیس نے کال ڈیٹیل سے اس شخص کا نمبر نکالا، جس پر لڑکی کے نمبر سے کال کی گئی تھی۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      Boyfriend نے مغربی بنگال کی گرل فرینڈ کو دہلی میں بیچا، پھر ریڈ لائٹ ایریا لائی گئی، پڑھیں لڑکی کی درد بھری کہانی

      پولیس کے ذریعہ آرکیسٹرا پر چھاپہ ماری کرکے وہاں سے تین نابالغ لڑکیوں کو چھڑایا گیا۔ جب فون کرنے والے نے لڑکی کے والد کو اس کی اطلاع دی تو وہ خوشی سے رو پڑے۔ انہوں نے کہا کہ ہم غریب مزدور ہیں، ہم امید چھوڑ چکے تھے کہ ہماری بچی کبھی واپس آئے گی۔

      وہیں، چائلڈ ویلفیئر کمیٹی کے چیئرمین آدتیہ کمار نے کہا کہ بچوں سے مزدوری کروا کر ان کی زندگی برباد کی جارہی ہے۔ رہا کرائی گئی تینوں لڑکیوں اور ان سے غیر قانونی طریقے سے آرکیسٹرا میں کام کروانے والے شخص کو پکڑ کر شکار پور تھانہ کو سونپ دیا گیا ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: