ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

کانگریس میں شامل ہوئےآرایس ایس کی ذیلی تنظیم مسلم راشٹریہ منچ سے منسلک 5 ہزارکارکنان

مسلم راشٹریہ منچ کے شہر صدرریاض خان نے اس کی اطلاع دی۔ انہوں نے الزام لگایا کہ آرایس ایس اوربی جے پی ان کے مطالبات کو نظرانداز کررہے تھے۔ 

  • Share this:
کانگریس میں شامل ہوئےآرایس ایس کی ذیلی تنظیم مسلم راشٹریہ منچ سے منسلک 5 ہزارکارکنان
علامتی تصویر

راشٹریہ سیوم سیوک سنگھ (آرایس ایس) کی ذیلی تنظیم مسلم راشٹریہ منچ کے تقریباً! 5 ہزار کارکنان اورکئی عہدیداران کا نگریس میں شامل ہوگئے۔ ان لوگوں کا الزام ہے کہ تنظیم میں ان کے ساتھ بھید بھاو ہورہا تھا، اس لئے انہوں نے اپنے احترام کے لئے کانگریس کا 'ہاتھ تھامنے کا فیصلہ کیا۔ مسلم راشٹریہ منچ کے شہرصدرریاض خان نے اس کی اطلاع دی۔


انہوں نے الزام لگایا کہ آرایس ایس اور بی جے پی ان کے مطالبات کو نظرانداز کررہے تھے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ منچ کے تقریباً 5 ہزارکارکنان اور 20 دیگرعہدیداران ان کے ساتھ کانگریس میں شامل ہوئے ہیں۔ ناگپورلوک سبھا سیٹ سے کانگریس امیدوار نانا پٹولے نے ایک تقریب میں سبھی نئے اراکین کا خیرمقدم کیا۔


واضح رہے کہ مسلم راشٹریہ منچ آرایس ایس کی ذیلی تنظیم ہے اوراس کے سربراہ آرایس ایس سینئرلیڈراندریش کمارہیں۔ منچ کےسرپرست  اندریش کمارنےگزشتہ ماہ فروری میں ہی مسلمانوں کو مشورہ دیتے ہوئے کہا تھا کہ مسلمان فیصلہ کرتے وقت کسی سیاسی پارٹی کے بہکاوے میں نہ آئیں بلکہ اپنے مستقبل کا فیصلہ خود کریں۔ یہ بات انہوں نے یہاں دہلی میں ایک تقریب کے دوران مودی حکومت کے نامزد کردہ مسلم عہدیداروں کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی تھی۔


نیوز ایجنسی پی ٹی آئی کے ان پٹ کے ساتھ
First published: Mar 31, 2019 12:52 PM IST