ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

مہاراشٹر میں لاک ڈاؤن میں اضافی بجلی کی ادائیگی کے فرمان پر ابوعاصم اعظمی برہم 

مہاراشٹر سماجوادی پارٹی لیڈر و رکن اسمبلی بجلی کی شرح میں لاک ڈاؤن میں بے تحاشہ اضافہ اور بلوں کو معاف نہ کئے جانے کے وزیر توانائی نتن راؤت کے اس بیان پر سخت اعتراض اور ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے اسے غلط قرار دیا اور کہا ہے کہ لاک ڈاؤن میں جو اسکولیں، مذہبی ادارے,تعلیمی ادارے,گھروں سمیت صنعت کی بجلی کا بل دو سے تین گنا زائد بھیجے گئے ہیں لیکن سرکار یا بجلی محکمہ اس پر کوئی فیصلہ کرنے کو تیار نہیں ہے۔

  • Share this:
مہاراشٹر میں لاک ڈاؤن میں اضافی بجلی کی ادائیگی کے فرمان پر ابوعاصم اعظمی برہم 
ابوعاصم اعظمی کی فائل فوٹو

ممبئی۔ مہاراشٹر سماجوادی پارٹی لیڈر و رکن اسمبلی بجلی کی شرح میں لاک ڈاؤن میں بے تحاشہ اضافہ اور بلوں کو معاف نہ کئے جانے کے وزیر توانائی نتن راؤت کے اس بیان پر سخت اعتراض اور ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے اسے غلط قرار دیا اور کہا ہے کہ لاک ڈاؤن میں جو اسکولیں، مذہبی ادارے,تعلیمی ادارے,گھروں سمیت صنعت کی بجلی کا بل دو سے تین گنا زائد بھیجے گئے ہیں لیکن سرکار یا بجلی محکمہ اس پر کوئی فیصلہ کرنے کو تیار نہیں ہے۔ بجلی بل کی تخفیف کی بات تو چھوڑئیے بجلی محکمہ کے افسران یہ کہتے ہیں کہ جتنی بل دی گئی ہے اس کی ادائیگی ضروری ہے اس میں کوئی بھی تخفیف نہیں کی جائے گی جبکہ دیگر صوبوں راجستھان وغیرہ میں بجلی بلوں کی نرخ میں تخفیف کی گئی ہے۔


ریاستی سرکار کو اس سلسلے میں میٹنگ طلب کر کے بجلی بلوں کے معاملے میں غور و خوض کر کے بجلی بلوں کی اگر مکمل معافی نہیں ہوتی ہے تو اس کی شرح میں تخفیف پر غور کرنا چاہئے۔ چونکہ لاک ڈاؤن میں تو اسکولیں اور کام بند تھے تو کیسے مکمل بجلی کی بل ادا کی جاسکتی ہے اور یہ بجلی کے بل پہلے کے مقابلے میں زیادہ یعنی پہلے 40ہزار بجلی کا بل استعمال کر نے کے بعد آتا تھا تو اب لاک ڈاؤن میں بغیر استعمال کے بجلی کا بل 50ہزار سے زائد بھیجا گیا ہے۔


انہوں نے کہا کہ مسلسل عوام یہ کوشش کر رہی ہے کہ ان کا بجلی کا بل معاف ہو یا اس میں تخفیف کی جائے اس لئے بھیونڈی  میں ٹورنٹ، ممبئی میں ریلائنس اور اڈانی سمیت دیگر بجلی محکمہ کے چکر کاٹ رہے ہیں اس کے باوجود انہیں یہ جواب ملتا ہے کہ جو بجلی کا بل بھیجا گیا ہے وہ درست ہے۔ اس میں کوئی کمی بیشی نہیں ہوگی یہ سراسر غلط ہے۔ اس سے عوام کو پریشانیوں کا سامناکرنا پڑ رہا ہے کیسے وہ اتنی بڑی بجلی کا بل اور واجبات کی ادائیگی کریں گے جبکہ کام بھی بند تھا۔ بغیر استعمال کے کوئی اتنی بجلی کا بل کیسے ادا کرے گا یہ سوال ابوعاصم اعظمی نے وزارت بجلی سے کیا ہے اور مطالبہ کیا کہ اگر سرکار بجلی بل معافی کی استطاعت نہیں رکھتی ہے تو بجلی بل کی شرح میں تخفیف کر کے عوام کو راحت پہنچائے تاکہ وہ نصف بجلی بل کی ادائیگی کر سکیں۔

Published by: Nadeem Ahmad
First published: Nov 18, 2020 11:55 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading