ہوم » نیوز » No Category

اننت کمار ہیگڑے کے اسلام مخالف بیان کے خلاف بھٹکل بند

بھٹکل : اننت کمار ہیگڑے کے اسلام مخالف بیان سے ناراض مسلمانوں نے بھٹکل اور آس پاس کے علاقوں میں بند کااہتمام کرکے ممبر پارلیمنٹ کی گرفتاری کا مطالبہ کیا ۔ مسلمانوں کے علاقوں میں بند کا زبردست اثر دیکھا گیا ۔ مسلمانوں کے ساتھ علاقے میں دیگر مذاہب کے ماننے والوں نے بھی بند میں ساتھ دیا ۔

  • ETV
  • Last Updated: Mar 06, 2016 02:02 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
اننت کمار ہیگڑے کے اسلام مخالف بیان کے خلاف بھٹکل بند
بھٹکل : اننت کمار ہیگڑے کے اسلام مخالف بیان سے ناراض مسلمانوں نے بھٹکل اور آس پاس کے علاقوں میں بند کااہتمام کرکے ممبر پارلیمنٹ کی گرفتاری کا مطالبہ کیا ۔ مسلمانوں کے علاقوں میں بند کا زبردست اثر دیکھا گیا ۔ مسلمانوں کے ساتھ علاقے میں دیگر مذاہب کے ماننے والوں نے بھی بند میں ساتھ دیا ۔

بھٹکل : اننت کمار ہیگڑے کے اسلام مخالف بیان سے ناراض مسلمانوں نے بھٹکل اور آس پاس کے علاقوں میں بند کااہتمام کرکے ممبر پارلیمنٹ کی گرفتاری کا مطالبہ کیا ۔ مسلمانوں کے علاقوں میں بند کا زبردست اثر دیکھا گیا ۔ مسلمانوں کے ساتھ علاقے میں دیگر مذاہب کے ماننے والوں نے بھی بند میں ساتھ دیا ۔

خیال رہے کہ گزشتہ ہفتہ اتر کنڑا ضلع کے ممبر پارلیمنٹ اننت کمار ہیگڑے نے اپنے ایک بیان میں کہا تھا کہ دنیا سے دہشت گردی کے خاتمہ کے لئے اسلام کو ختم کرنا ضروری ہے۔ اننت کمار کے اس بیان کے بعد سے مسلمانوں میں شدید بے چینی ہے ۔

مسلمانوں کی سیاسی و سماجی قیادت کر نے والے ادارے مجلس اصلاح و تنظیم بھٹکل لگاتار کاروائی کا مطالبہ کررہا ہے ۔ تنظیم کا مطالبہ ہے کہ حکومت ممبر پارلیمنٹ کے بیان کا سخت نوٹس لے اور انہیں گرفتار کر ے ۔ بھٹکل کےمسلمانوں نے جمعہ تک ممبر پارلیمنٹ کوگرفتار کر نے کا مطالبہ کیا تھا، بصورت دیگر سنیچر کو بھٹکل اور آس پاس کے مسلمانوں سے اپیل کی گئی تھی کہ وہ اپنے کاروبار اور تعلیمی اداروں کو علامتی طور پر بند رکھیں ۔

تنظیم کی آواز پرمسلمانوں نے بند کو کامیاب بنانے میں اور ممبر پارلیمنٹ کی گرفتاری کے لئے دباؤ بنانے میں پورا تعاون کیا ۔ حالات کی نزاکت کو دیکھتے ہوئے بھٹکل میں پولیس کا معقول بند وبست کیا گیا ۔ احتیاطی تدابیر کے طور پر پورے ضلع میں دفعہ 144بھی نافذ ہے ۔

دوسری جانب تنظیم نے مسلم نوجوانوں سے حالات کو قابو میں رکھنے اور قانون ہاتھ میں نہ لینے کی اپیل کی تھی ۔ تنظیم کی جانب سے دی گئی بند کی کال کا مسلمانوں کے کاروبار اور مسلم علاقوں میں مکمل طور پر اثر دیکھنے کوملا۔ بھٹکل سے گزرنے والی قومی شاہراہ پر معمول سے بہت ہی کم گاڑیوں کی آمد ورفت دیکھی گئی ۔

بھٹکل کے سماجی ادارے مجلس اصلاح و تنظیم کے نائب صدر نے بتایا کہ اس بند کے بعد بھی اگر حکومت ممبر پارلیمنٹ کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کرتی ہے ، تو دہلی میں وزیر اعظم سے ملاقات کر کے وہ یہ مطالبہ دہرائیں گے۔

First published: Mar 06, 2016 02:01 PM IST