ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

آج کل بھارت ماتا کی جے بولنا بھی سکھانا پڑتا ہے : بھاگوت

ناگپور : آر ایس ایس کے سربراہ موہن بھاگوت نے جے این یو تنازع پر پہلی مرتبہ اپنی خاموشی توڑ ہے۔ بھاگوت کا کہنا ہے کہ آج کل ملک میں بھارت ماتا کی جے بولنا بھی لوگوں کو سکھانا پڑتا ہے۔ بھاگوت نے کہا ہے کہ ایسا نہیں بولنے والوں کی تعداد زیادہ ہے۔

  • Pradesh18
  • Last Updated: Mar 03, 2016 12:31 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
آج کل بھارت ماتا کی جے بولنا بھی سکھانا پڑتا ہے : بھاگوت
ناگپور : آر ایس ایس کے سربراہ موہن بھاگوت نے جے این یو تنازع پر پہلی مرتبہ اپنی خاموشی توڑ ہے۔ بھاگوت کا کہنا ہے کہ آج کل ملک میں بھارت ماتا کی جے بولنا بھی لوگوں کو سکھانا پڑتا ہے۔ بھاگوت نے کہا ہے کہ ایسا نہیں بولنے والوں کی تعداد زیادہ ہے۔

ناگپور  : آر ایس ایس کے سربراہ موہن بھاگوت نے جے این یو تنازع پر پہلی مرتبہ اپنی خاموشی توڑ ہے۔ بھاگوت کا کہنا ہے کہ آج کل ملک میں بھارت ماتا کی جے بولنا بھی لوگوں کو سکھانا پڑتا ہے۔ بھاگوت نے کہا ہے کہ ایسا نہیں بولنے والوں کی تعداد زیادہ ہے۔

جے این یو تنازع پر اب تک بھاگوت کی جانب سے کوئی بیان نہیں آیا تھا۔ جے این یو طلبہ یونین کے صدر کنہیا کی گرفتاری سے ناراض طلبہ لگاتار آر ایس ایس کی تنقید کرتے رہے ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ یہ سب کچھ آر ایس ایس کا پوشیدہ ایجنڈا ہے۔

قابل ذکر ہے کہ جے این یو تنازع اور کنہیا کی گرفتاری کی وجہ سے مودی حکومت پہلے سے ہی بیک فٹ پر ہے اور اپوزیشن کی چوطرفہ تنقید کی زد میں ہے ۔ ایسے میں بھاگوت کے اس بیان سے بی جے پی اور مودی سرکار کی مشکلات مزید بڑھ سکتی ہیں ۔

First published: Mar 03, 2016 12:31 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading