உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    وجے مالیہ کے ممبئی میں واقع کنگ فشر دفتر کی بولی ہی نہیں لگی

    نئی دہلی۔ وجے مالیہ کی کمپنی کنگ فشر ائیرلائنس پر بقایہ قرض کی وصولی کے لئے اسٹیٹ بینک آف انڈیا کی طرف سے منعقد کنگ فشر ہاوس کی نیلامی کے لئے کسی نے بولی ہی نہیں لگائی۔ اسٹیٹ بینک آف انڈیا نے اس کے لئے آن لائن نیلامی کا عمل شروع کیا تھا جس کے لئے کوئی بولی نہیں لگی۔

    نئی دہلی۔ وجے مالیہ کی کمپنی کنگ فشر ائیرلائنس پر بقایہ قرض کی وصولی کے لئے اسٹیٹ بینک آف انڈیا کی طرف سے منعقد کنگ فشر ہاوس کی نیلامی کے لئے کسی نے بولی ہی نہیں لگائی۔ اسٹیٹ بینک آف انڈیا نے اس کے لئے آن لائن نیلامی کا عمل شروع کیا تھا جس کے لئے کوئی بولی نہیں لگی۔

    نئی دہلی۔ وجے مالیہ کی کمپنی کنگ فشر ائیرلائنس پر بقایہ قرض کی وصولی کے لئے اسٹیٹ بینک آف انڈیا کی طرف سے منعقد کنگ فشر ہاوس کی نیلامی کے لئے کسی نے بولی ہی نہیں لگائی۔ اسٹیٹ بینک آف انڈیا نے اس کے لئے آن لائن نیلامی کا عمل شروع کیا تھا جس کے لئے کوئی بولی نہیں لگی۔

    • IBN Khabar
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی۔ وجے مالیہ کی کمپنی کنگ فشر ائیرلائنس پر بقایہ قرض کی وصولی کے لئے اسٹیٹ بینک آف انڈیا کی طرف سے منعقد کنگ فشر دفتر کی نیلامی کے لئے کسی نے بولی ہی نہیں لگائی۔ اسٹیٹ بینک آف انڈیا نے اس کے لئے آن لائن نیلامی کا عمل شروع کیا تھا جس کے لئے کوئی بولی نہیں لگی۔ یہ دفتر ممبئی ایئر پورٹ کے پاس ولے پارلے علاقے میں ہے۔  یہ نیلامی صبح 10 بجے شروع ہوئی تھی۔

      کنگ فشر کا دفتر قریب 4 ہزار مربع میٹر کا ہے۔ بینک نے نیلامی کے لئے اس کی ابتدائی قیمت 150 کروڑ روپے رکھی تھی۔ مالیہ نے 17 بینکوں سے ہزاروں کروڑ کا قرض لے رکھا ہے، اکیلے اسٹیٹ بینک سے مالیا نے 1600 کروڑ روپے کا قرض لیا ہوا ہے۔

      غور طلب ہے کہ کنگ فشر ایئرلائنس کے خسارے میں جانے کے بعد مالیہ نے بینکوں سے تقریبا 9 ہزار کروڑ کا لون لیا تھا جسے وہ نہیں چکا پائے۔ جس کے بعد مالیہ کے خلاف اور ان کے بیرون ملک جانے پر روک کی مانگ کو لے کر ایس بی آئی سمیت 17 بینکوں نے عدالت میں عرضی بھی دی تھی۔ تاہم بعد میں پتہ چلا کہ مالیہ پہلے ہی ملک چھوڑ کر جا چکے ہیں۔
      First published: