ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

شہریت ترمیمی قانون کے خلاف پُر تشدد مظاہرے کے معاملے میں کانگریس کارپوریٹر سمیت 49گرفتار

اس دوران احمدآباد سمیت ریاست بھر میں آج امن کا ماحول ہے۔شاہ عالم سمیت آس پاس کے علاقوں میں پولیس کو بڑے پیمانے پر تعینات کیاگیاہے۔

  • Share this:

گجرات میں احمدآباد کے مسلم اکثریت شاہ عالم علاقے میں شہریت ترمیمی قانون(سی اےاے) اور قومی شہریت کے رجسٹر (این آر سی)کے خلاف ہوئے پُر تشدد مظاہرے کے سلسلے میں آج صبح کانگریس کے ایک مقامی کارپوریٹ سمیت 49لوگوں کو گرفتار کرلیاگیا۔

پُر تشدد واقعات اور پتھراؤ میں پولیس ڈپٹی کمشنر اور ایڈیشنل کمشنر سمیت 26پولیس اہلکار زخمی ہوگئےتھے۔ اس سلسلے میں دیررات ایسن پور پولیس اسٹیشن میں وہاں کے انسپیکٹر جے ایم سولنکی،جو خود زخمیوں میں شامل تھے،نے قتل کی کوشش،ہنگامہ کرنے،عوامی املاک کو نقصان پہنچانے اور سرکاری حکم کی خلاف ورزی کرنے کے الزامات کے ساتھ کل 50نامزد اور 5000 نامعلوم لوگوں کے خلاف معاملہ درج کرایاتھا۔

سولنکی نے آج یو این آئی کو بتایا کہ پکڑے گئے لوگوں میں احمدآباد میونسیپل کارپوریشن میں دانی لیمڑا علاقے کے کانگریس کارپوریٹر شہزاد پٹھان بھی شامل ہیں۔ بغیر اجازت ریلی نکالنے والی بھیڑ کو کل جب پولیس نے روکنے کی کوشش کی تھی تو اس نے زبردست پتھراؤ شروع کردیا۔ بچنے کےلئے چھپ رہے پولیس والوں پر نزدیک سے تیز پتھراؤ کے کئی سی سی ٹی وی فوٹیج بھی وائرل ہوگئے ہیں۔ ان کی قانونی سائنس لیب کے ذریعہ جانچ کراکر ہنگامہ کرنےوالوں کی شناخت کرکے پکڑنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ پولیس کو اپنی ہی جان بچانے اور مشتعل بھیڑ کو قابوکرنے کےلئے آنسوں گیس کے گولے چھوڑنے پڑےتھے اور لاٹھی چارج کرنی پڑی تھی۔


دوسری سمت گجرات کے بناس کانٹھا ضلع کے چھاپی میں مظاہرے کے دوران بھیڑ کے پولیس پر حملے کی کوشش کے معاملے میں بھی پولیس نے 22نامزد اور 3000نامعلوم افراد کے خلاف معاملہ درج کیاہے۔ یہ واقعہ کانگریس حمایت یافتہ آزاد رکن اسمبلی جگنیش میوانی کے اسمبلی حلقے وڈگام میں ہوا تھا۔ بند اور مظاہروں میں میوانی نے ٹویٹ کرتے ہوئے پولیس کو گھیرے جانے کے واقعہ کا بھی ذکر کیا تھا۔

اس دوران احمدآباد سمیت ریاست بھر میں آج امن کا ماحول ہے۔شاہ عالم سمیت آس پاس کے علاقوں میں پولیس کو بڑے پیمانے پر تعینات کیاگیاہے۔
First published: Dec 20, 2019 01:13 PM IST