ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

ہوٹل کے کمرے میں لڑکی کے ساتھ ہورہا تھا یہ گھنونا کام، مجبور باپ کھڑا رہا کمرے کے باہر: جانیں پورا معاملہ

راجستھان (Rajasthan) کے چورو ضلع سے ایک اجتماعی عصمت دری (Gang Rape) کا ایک معاملہ سامنے آیا ہے۔ ضلع کی سردارشہر تحصیل کے بھانی پورہ پولیس اسٹیشن (Bhanipura Police Station ) میں 19 سالہ بچی کی اجتماعی عصمت دری کا معاملہ درج کیا گیا ہے۔

  • Share this:
ہوٹل کے کمرے میں لڑکی کے ساتھ ہورہا تھا یہ گھنونا کام، مجبور باپ کھڑا رہا کمرے کے باہر: جانیں پورا معاملہ
علامتی تصویر۔

راجستھان (Rajasthan) کے چورو ضلع سے ایک اجتماعی عصمت دری (Gang Rape) کا ایک معاملہ سامنے آیا ہے۔ ضلع کی سردارشہر تحصیل کے بھانی پورہ پولیس اسٹیشن (Bhanipura Police Station ) میں 19 سالہ بچی کی اجتماعی عصمت دری کا معاملہ درج کیا گیا ہے۔ بچی کی شکایت پر بھانی پورہ پولیس نے شیام لال، وجئے ، لال چند ، دلیپ بھاٹ کے خلاف مقدمہ درج کرلیا ہے۔ متاثرہ لڑکی کا چورو سرکاری بھارتیہ اسپتال ، چورومیں طبی علاج کرایا گیا۔

سب سے پہلے گھر میں اکیلے پاکر کیا ریپ

لڑکی کو پہلے ہوٹل (Hotel  ) بلایا گیا اور ریپ کیا گیا۔ الزام ہے کہ اس کے بعد اسے 3 افراد کو ڈیڑھ لاکھ روپے میں بیچ دیاگیا۔ تینوں ملزم اس نوجوان خاتون کو ہنومان گڑھ کے 14 ایس ایس ڈبلیو چک گاؤں لے گئے جہاں اس کو یرغمال بناکر رکھا گیا اور دو ماہ تک اس نے اس کی عصمت دری کی۔ متاثرہ لڑکی کے ساتھ جسمانی استحصال کا عمل 2 سال پہلے شروع ہوا تھا۔ یہ الزام ہے کہ متاثرہ کے اہل خانہ شیام لال نامی ایک شخص کے دباؤ میں تھے۔ جس نے 2 سال قبل جب وہ نابالغ تھی تو اسے اس گھر میں اکیلا پاکر ریپکی واردات کو انجام دیا۔

پھر کولڈرنک میں نشیلی اشیا پکاکر ہوٹل میں کیا ریپ

اس نے متاثرہ لڑکی کو دھمکی دی کہ اگر اس نے کسی کو بتایا تو وہ اس کے بھائیوں کو مار ڈالے گا۔ 15 مارچ کو ملزم شیام لال نے بچی کے والد کو فون کیا اور اسے سنگم ہوٹل بلایا۔ بچی کے والد اسے اپنے ساتھ سنگم ہوٹل لے گئے ، جہاں شیام لال نے اسے کولڈ ڈرنک میں نشیلی اشیا پلادی اور ہوٹل کے اوپر والے کمرے میں لے جاکر اس گھنونے کام کو انجام دیا۔ اس دوران لڑکی کی فیملی ہوٹل کے باہر موجود رہی۔

عصمت دری کے بعد شیام لال نے دھمکی دیکر اس کو کسی کو کچھ نہ بتانے کو کہا، تبھی وجے میگھوال ، لا لچند ، دلیپ بھاٹ ایک گاڑی لیکر وہاں پہنچے اور اسے زبردستی گاڑی میں بٹھا کر لے گئے۔ ان ملزموں نے لڑکی کو بتایا کہ اسے ڈیڑھ لاکھ روپے میں انہیں بیچا گیا ہے۔ تینوں ملزم بچی کو 14 ایس ایس ڈبلیو چک ہنومان گڑھ لے گئے۔ وہیں تینوں ملزمان 2 ماہ تک یرغمال بناکر، مار پیٹ کرکے متاثرہ لڑکی کا ریپ کرتے رہے۔ 22 مئی کو جب ملزم وجئے شراب کی وجہ سے بے ہوش ہوگیا تو متاثرلڑکی موقع دیکھ کر وہاں سے فرار ہوگئی۔ اور یہ سارہ واقعہ کھل کر سامنے آیا۔
First published: May 31, 2020 07:07 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading