உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بامبے ہائی کورٹ کا محرم سے متعلق بڑا فیصلہ، جلوس کے لئے شرائط کے ساتھ منظوری

    بامبے ہائی کورٹ کا محرم سے متعلق بڑا فیصلہ، جلوس کے لئے شرائط کے ساتھ منظوری

    بامبے ہائی کورٹ کا محرم سے متعلق بڑا فیصلہ، جلوس کے لئے شرائط کے ساتھ منظوری

    بامبے ہائی کورٹ نے شیعہ مسلم کمیونٹی کو کورونا وائرس کے پیش نظر بعض شرائط کے ساتھ محرم کا جلوس نکالنے کی اجازت دے دی۔ جسٹس کے کے تاتیڈاور جسٹس پی کے چوان نے کہا کہ 20 اگست کو تین گھنٹے کے جلوس کے دوران صرف سات ٹرکوں والے جلوس کی اجازت ہوگی۔

    • Share this:
    ممبئی: کورونا کے خطرے کے پیش نظر ریاستی حکومت نے تمام مذہبی پروگراموں پر پابندی لگا دی ہے ، ایسی صورتحال میں کسی بھی قسم کے اجتماع پر پابندی ہے۔ بامبے ہائی کورٹ کی جانب سے کچھ شرائط کے ساتھ محرم کے جلوس کی اجازت دی ہے۔ ممبئی ہائی کورٹ نے شیعہ مسلم کمیونٹی کو کورونا وائرس کے پیش نظر بعض شرائط کے ساتھ محرم کا جلوس نکالنے کی اجازت دے دی۔ جسٹس کے کے تاتیڈ اور جسٹس پی کے چوان نے کہا کہ 20 اگست کو تین گھنٹے کے جلوس کے دوران  صرف سات ٹرکوں والے جلوس کی اجازت ہوگی۔

    کورونا وائرس پروٹوکول پر عمل کرتے ہوئے ہر ٹرک میں 15 سے زیادہ افراد نہیں ہونے چاہئے۔ بینچ نے کہا کہ صرف وہی لوگ جنہوں نے اینٹی کورونا وائرس ویکسین کی دونوں خوراکیں لی ہیں اور آخری خوراک کے 14 دن گزر چکے ہیں، انہیں ٹرک میں سوار ہونے کی اجازت ہوگی۔ بنچ نے کہا، پانچ تعزیہ نکالنے کی اجازت دی جائے گی۔ 105 افراد میں سے صرف 25 کو کربلا کے اندر جانے کی اجازت ہوگی۔ بنچ نے یہ حکم آل انڈیا ادارہ تحفظ حسینیہ کی دائر کردہ درخواست پر دی ہے۔

    ہائی کورٹ کی جانب سے کچھ شرائط کے ساتھ محرم کے جلوس کی اجازت دی ہے۔
    ہائی کورٹ کی جانب سے کچھ شرائط کے ساتھ محرم کے جلوس کی اجازت دی ہے۔


    درخواست میں محرم کے دوران جلوس نکالنے اور مذہبی پروگرام  کی اجازت دینے کی درخواست کی گئی تھی۔ درخواست گزار کی جانب سے پیش ہونے والے سینئر ایڈوکیٹ راجندر شیروڈکر نے ہائی کورٹ کو آگاہ کیا کہ تعزیہ اور کھانے اور پانی کے لئے اسٹال لگانا شیعہ مذہب کا حصہ ہے۔ اس کے بغیر رسم مکمل نہیں ہوگی۔ سرکاری وکیل پورنیما کنتھا ریہ نے درخواست کی مخالفت کی اور دلیل دی کہ مذہبی جلوس میں ہجوم کو کنٹرول کرنا مشکل ہو جاتا ہے۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: