ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

’ کوئی بھوکا نہ سوئے' لاک ڈاؤن کے دوران ممبئی کی ایک مسجد سے نئے مشن کا آغاز

ممبئی کے ساکی ناکہ میں خیرانی روڈ پر جامع مسجد اہلحدیث کی جانب سے شروع کئے گئے ' کوئی بھوکا نہ سوئے' کے مشن کے تحت ہر روز کم از کم 800 افراد کو کھانا مہیا کیا جا رہا ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Apr 15, 2020 08:07 PM IST
  • Share this:
’ کوئی بھوکا نہ سوئے' لاک ڈاؤن کے دوران ممبئی کی ایک مسجد سے نئے مشن کا آغاز
فوٹو: عاطف سنابلی کی فیس بک وال سے

ممبئی۔ کہا جاتا ہے کہ ہر شر میں خیر کا پہلو پوشیدہ ہوتا ہے۔ اس وقت ساری دنیا ایک چھوٹے سے جرثومہ سے پریشان ہے جس نے پوری دنیا میں کہرام مچا رکھا ہے اور اس کے قہر سے ہر طرف تباہی و بربادی کے نظارے جا بجا دیکھنے کو مل رہے ہیں۔ کروڑوں لوگ اپنے گھروں سے دور مختلف دور دراز علاقوں میں پھنسے ہوئے ہیں اور کھانے پینے کو محتاج ہو گئے ہیں۔ دن بھر محنت مزدوری کر کے شام کو اپنا اور اپنے بچوں کا پیٹ بھرنے والا محنت کش مزدور طبقہ سب سے زیادہ پریشان ہے۔


کورونا وائرس کے اس شر سے کیا امیر کیا غریب سب پریشان ہیں لیکن اسی شر سے خیر کی نئی روشنیاں بھی پھوٹ رہی ہیں۔ یوں تو دنیا لوگوں کی مدد کرنے ، بھوکوں کو کھانا کھلانے، علاج معالجہ کرنے اور خدمت خلق کرنے والوں سے کبھی خالی نہیں رہی۔ لیکن اسی کورونا وائرس نے اس سمت میں بھی نئی راہیں دکھائی ہیں۔ لوگوں کے دلوں کو مزید نرم کر دیا۔ انھیں ایک دوسرے کا غمخوار اور ہمدرد بنا دیا۔ دوسروں کی پریشانی، غریبوں کی بھوک اور پیاس کے احساس کو لوگ پہلے سے زیادہ محسوس کرنے لگے ہیں اور اس وقت ہر کوئی دامےدرمے اور سخنے قدمے پریشان حالوں کی مدد کرنے کو اپنی سعادت سمجھ رہا ہے۔ یہی ہے وہ خیر کا پہلو جو اب ہر طرف پھیل رہا ہے۔


ممبئی کی ایک مسجد سے بھی ایسی ہی روشنی کی ایک نئی کرن پھوٹی ہے اور ' کوئی بھوکا نہ سوئے' اس مشن کا آغاز کیا گیا ہے۔ اور یہ مسجد اس پیغام کو معاشرے میں بھیجنے میں کامیاب ہو گئی ہے کہ ایسے مشکل وقتوں میں انسانیت کی فلاح و بہبود کے لیے اپنا رول ادا کرنے میں مسجدیں بھی کسی سے پیچھے نہیں ہیں۔


ممبئی کے ساکی ناکہ میں خیرانی روڈ پر جامع مسجد اہلحدیث کی جانب سے شروع کئے گئے ' کوئی بھوکا نہ سوئے' کے مشن کے تحت ہر روز کم از کم 800 افراد کو کھانا مہیا کیا جا رہا ہے۔


ممبئی کے ساکی ناکہ میں خیرانی روڈ پر جامع مسجد اہلحدیث کی جانب سے شروع کئے گئے ' کوئی بھوکا نہ سوئے' کے مشن کے تحت ہر روز کم از کم 800 افراد کو کھانا مہیا کیا جا رہا ہے۔ اس ضمن میں جمعیتہ اہلحدیث کے امام مولانا عاطف سنابلی نے بتایا کہ اس لاک ڈاؤن کے سبب غریب اور مزدور طبقہ بہت زیادہ پریشان ہے اور ان کے کھانے پینے کا انتظام کرنا ہم سب کا فرض عین ہے۔ انہوں نے کہا کہ کووڈ ۔19 کی طرح بھوک بھی ایک شدید عارضہ ہے اور یہ ذات پات، مذہب، دھرم ، امیر اور غریب ہر ایک کو متاثر کرتا ہے۔ انھوں نے امید اور خواہیش ظاہر کی کہ اس موقع پر دیگر علاقوں کی مساجد میں بھی اسی طرح کا انتظام کیا جانا چاہیے۔

انہوں نے بتایا کہ جامع مسجد اہلحدیث، خیرانی روڈ کے ذمہ داروں نے اس بات کو محسوس کرکے مقامی نوجوانوں اور اہل خیر حضرات کے تعاون سے اس کوشش کا آغاز کیا کہ کوئی بھی بھوکا نہ سونے پائے۔ اس کے لیے محتاجوں کی تمام ضروریات زندگی کے انتظامات کئے جا رہے ہیں۔ دو وقت کھانوں کے تیار شدہ پیکٹس اور فیملی کے ساتھ رہنے والوں کو راشن اور چھوٹے بچوں کے لیے دودھ اور نقد رقم کا بھی انتظام کیا جارہا ہے۔ کھانے میں ویج بریانی ، دال کھچیڑی وغیرہ شامل ہے جسے موجودہ منظرنامے کو مدنظر رکھتے ہوئے انتہائی حفظان صحت کے ساتھ پکایاجا رہا ہے اور کھانے پینے کی خدمت کے دوران معاشرتی فاصلاتی اصولوں پر بھی سختی سے عمل کیا جارہا ہے۔ مولانا عاطف نے اس بات پر زور دیا کہ دیگر علاقوں کی مساجد میں بھی اسی طرح خدمت خلق کے کاموں کو فوری شروع کیا جانا چاہیے۔

خیال رہے کہ  23 مارچ کے بعد سے ہر روز دونوں وقت 800 افراد کو کھانا مہیا کیا جا رہا ہے اور علاقے میں 200 مکینوں کو راشن کے پیکٹ تقسیم کیے جا رہے ہیں۔
First published: Apr 15, 2020 08:07 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading