ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

بی جے پی لیڈر کا متنازع بیان ، جرائم کم کرنا ہے تو بہاری طلبہ کو کوٹہ سے باہر نکالو

راجستھان کے کوٹہ سے رکن اسمبلی بھوانی سنگھ نے جمعہ کو بہار کے طالب علموں سے متعلق متنازع بیان دیا ہے ۔

  • Pradesh18
  • Last Updated: May 13, 2016 11:41 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
بی جے پی لیڈر کا متنازع بیان ، جرائم کم کرنا ہے تو بہاری طلبہ کو کوٹہ سے باہر نکالو
راجستھان کے کوٹہ سے رکن اسمبلی بھوانی سنگھ نے جمعہ کو بہار کے طالب علموں سے متعلق متنازع بیان دیا ہے ۔

راجستھان کے کوٹہ سے رکن اسمبلی بھوانی سنگھ نے جمعہ کو بہار کے طالب علموں سے متعلق متنازع بیان دیا ہے ۔ بھوانی سنگھ نے کہا کہ جب سے کوٹہ میں بہاری آئے ہیں ، یہاں کرائم بڑھ گیا ہے ۔


کوٹہ میں دو طلبہ گروپ میں پر تشدد جھڑپ میں ایک کی موت کے پر بھوانی سنگھ سے پوچھا گیا تو ان کا جواب تھا کہ بہار کے طلبہ نے کوٹہ میں جرائم کا ماحول بنا دیا ہے ۔ اگر جرائم کی شرح کم کرنی ہے ، تو بہاریوں کو یہاں سے نکالنا ہوگا ۔


ادھر بہار کے سینئر بی جے پی لیڈر سشیل کمار مودی نے رکن اسمبلی بھوانی سنگھ کے بیان کی مذمت کی ہے ۔  انہوں نے ٹوٹ کیا ہے کہ کوٹہ کے رکن اسمبلی نے بہاری طالب علموں سے متعلق غیر ذمہ دار بیان دیا ہے ۔  میں پارٹی رہنماؤں سے ان کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کروں گا ۔


قابل ذکر ہے کہ کوٹہ کے مہاویر نگر تھانہ حلقہ میں باہمی رنجش کی وجہ سے طالب علموں کے درمیان جھگڑا ہو گیا تھا ، جس میں تقریبا ایک درجن طلبہ نے دو طالب علموں پر چاقوؤں اور چھڑوں سے حملہ کر دیا ۔  اس حملے میں ایک طالب علم کی علاج کے دوران موت ہو گئی جبکہ دوسرے طالب علم کا اسپتال میں علاج جاری ہے ۔

بتایا جا رہا ہے کہ بہار کے نوادہ کے رہنے والا پرنس اپنے ساتھی سندیپ کے ساتھ کسی کام سے جا رہا تھا کہ راستے میں ہی ایک درجن سے بھی زیادہ طلبہ نے دونوں کو گھیر لیا اور دھاردار ہتھیاروں سے تابڑ توڑ حملہ کر دیا ۔  طالب علموں کو بچانے کے لئے مقامی لوگ آئے ، تو حملہ آور طلبہ نے ان پر بھی حملہ کر دیا ۔ حملہ کرنے کے بعد تمام طلبہ موقع سے فرار ہو گئے ۔ وہیں مقامی لوگوں نے دونوں طالب علموں کو اسپتال میں بھرتی کروایا ، جہاں علاج کے دوران پرنس کی موت ہو گئی ۔ بتایا جاتا ہے کہ مہلوک طالب علم پرنس ایلن کوچنگ انسٹی ٹیوٹ سے پی ایم ٹی کی تیاری کر رہا تھا ۔

tejaswai

ادھر بہار کے نائب وزیر اعلی تیجسوی یادو نے قتل کے ملزموں کی گرفتاری کے لیے راجستھان کی وزیر اعلی وسندھرا راجے سندھیا کو خط لکھا ہے ۔ تیجسوی نے لکھا ہے کہ اس طرح کے واقعات جہاں ایک بہاری نوجوان کا کچھ لوگوں نے قتل کر دیا ، ظالمانہ اور نفرت آمیز ہے ۔  اس طرح کے واقعات نہ صرف کوٹہ میں رہنے والے طلبہ کے درمیان عدم تحفظ کا احساس پیدا کرتے ہیں ، بلکہ ان کے والدین کو بھی غلط پیغام دیتے ہیں ۔ میں آپ سے اپیل کرتا ہوں کہ اس واقعہ کا نوٹس لیں اور اس بات کو یقینی بنائیں کہ قصورواروں کو جلد سے جلد گرفتار کیا جائے ۔

خیال رہے کہ ممبر اسمبلی بھوانی سنگھ پہلے بھی اپنے بے تکے بیانات کو لے کر موضوع بحث رہ چکے ہیں ۔ گزشتہ سال بھوانی سنگھ نے کہا تھا کہ گاڑی چلاتے وقت بے وقوف لوگ ہی ہیلمیٹ پہنتے ہیں ۔ اس کے علاوہ ایک ویڈیو وائرل ہوا تھا ، جس میں وہ بی جے پی کو ووٹ نہ دینے والے لوگوں کو گالیاں دے رہے تھے ۔
First published: May 13, 2016 11:41 PM IST