ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

 معصوم بچے کو سگریٹ۔بیڑی سے جلاتا تھا ماں کا عاشق اور پھر کرتا تھا یہ خوفناک کام، کھڑے ہو جائیں گے رونگٹے

آخر کار وہ معصوم کسی طرح ہمت کرکے ایک روز وہاں سے بھاگ نکلا۔ بھاگنے کے بعد اسے اپنے ماں کے عاشق کے خوفناک ظلم و ستم سے چھٹکارا ملا۔ وہ بھاگ کر سری گنگانگر میں رہ رہے اپنے دادا۔دادی کے پاس پہنچا۔ وہاں آکر اس نے اپنے اوپر ہو رہے ظلم کی آپ بیتی اپنے دادا۔دادی کو سنائی۔

  • Share this:
 معصوم بچے کو سگریٹ۔بیڑی سے جلاتا تھا ماں کا عاشق اور پھر کرتا تھا یہ خوفناک کام، کھڑے ہو جائیں گے رونگٹے
آخر کار وہ معصوم کسی طرح ہمت کرکے ایک روز وہاں سے بھاگ نکلا۔ بھاگنے کے بعد اسے اپنے ماں کے عاشق کے خوفناک ظلم و ستم سے چھٹکارا ملا۔ وہ بھاگ کر سری گنگانگر میں رہ رہے اپنے دادا۔دادی کے پاس پہنچا۔ وہاں آکر اس نے اپنے اوپر ہو رہے ظلم کی آپ بیتی اپنے دادا۔دادی کو سنائی۔

سری گنگا نگر ضلع میں ایک ماں کا اپنے معشوق کے ساتھ چلے جانا اس کے بچوں کیلئے جہن ثابت ہوا۔ اپنے عاشق کے ساتھ رہ رہی ماں کے 10 سال کے بچے سے عاشق نے نہ صرف گھر اور کھیت کا کام کرایا بلکہ معصوم بچہ جتنی روٹی کھاتا اتنی مرتبہ اس کے جسم پر سگریٹ سے زخم دیتا۔ سب سے دکھ کی بات یہ ہے کہ شخص کے اس ظلم میں اس بچے کی ماں نے بھی خاموشی سادھ رکھی تھی جس وجہ سے بچہ اتنا زیادہ خوف میں رہا کہ اپنے اوپر ہو وہے اس دردناک ظلم کی مخالفت بھی نہیں کر پایا۔


ہمت کرکے ایک روز بھاگ نکلا معصوم

آخر کار وہ معصوم کسی طرح ہمت کرکے ایک روز وہاں سے بھاگ نکلا۔ بھاگنے کے بعد اسے اپنے ماں کے عاشق کے خوفناک ظلم و ستم سے چھٹکارا ملا۔ وہ بھاگ کر سری گنگانگر میں رہ رہے اپنے دادا۔دادی کے پاس پہنچا۔ وہاں آکر اس نے اپنے اوپر ہو رہے ظلم کی آپ بیتی اپنے دادا۔دادی کو سنائی۔ اس کے بعد اس ظلم کے بارے میں چائلڈ ہیلپ لائن (Child Helpline) کو بتایا گیا۔ چائلڈ ہیلپ لائن اور (Child Welfare Committee) نے اطلاع ملنے پر بچےکو اپنی پناہ میں لیا۔ اب ماں کے عاشق کے خلاف (Child Welfare Committee) کے ذڑیعے مقدمہ درج کروایا جارہا ہے۔


چائلڈ ویلفئر کمیٹ کے صدر ایڈووکیٹ لکشمی کانت سینی نے بتایا کہ معصوم بچے کی ماں اپنے شوہر کا گھر چھوڑ کر دو۔تین سال سے اپنے عاشق بل جیت (20) کے ساتھ اس کے گھر پر رہ رہی ہے۔ اس کے ساتھ اس کے تین بچے بھی رہ رہے ہیں۔ معصوم نے بتایا کہ ماں کے عاشق شخص کے ذریعے اس سے کام کروایا جاتا تھا اور اس کے جسم پر بیڑی اور سگریٹ سے جلا کر زخم کئے جاتے تھے۔ یہی نہیں اس کی سات سالہ چھوٹی بہن سے بھی گھر کا کام کروایا جاتا ہے۔

اب اس کے دونوں چھوٹے بھائی۔بہنوں کو بھی (Child Welfare Committee) اپنی پناہ میں لینے کے عمل میں مصروف ہوئی ہے۔ ادھر دس سالہ معصوم نے اپنی ماں کے ساتھ جانے سے انکار کر دیا اور اپنے دادا۔دادی کے ساتھ رہنے کی بات کہی ہے۔ وہیں سب سے خاص بات یہ رہی کہ جب (Child Welfare Committee) نے اس کے سگے والد، دادا۔دادی اور دیگر رشتے داروں کو بلایا تو سبھی نے اپنے کام، مزدوری خراب ہونے کا حوالہ دیتے ہوئے آنے سے انکار کر دیا۔
Published by: sana Naeem
First published: Sep 03, 2020 08:58 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading