ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

ایٹروسیٹی قانون میں کسی بھی طرح کی کوئی تبدیلی برداشت نہیں کی جائے گی : دلت سماج

مہاراشٹر میں ایٹروسیٹی قانون کے معاملہ پر دلت اور مراٹھا سماج آمنے سامنے ہیں ۔ ایک طرف جہاں مراٹھا سماج ایٹروسیٹی قانون میں ترمیم کا مطالبہ کررہا ہے ، تو دوسری طرف دلت سماج ایٹرو سیٹی قانون میں کسی بھی طرح کی ترمیم کو برداشت کرنے سے انکار کررہا ہے۔

  • ETV
  • Last Updated: Oct 17, 2016 09:43 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ایٹروسیٹی قانون میں کسی بھی طرح کی کوئی تبدیلی برداشت نہیں کی جائے گی : دلت سماج
مہاراشٹر میں ایٹروسیٹی قانون کے معاملہ پر دلت اور مراٹھا سماج آمنے سامنے ہیں ۔ ایک طرف جہاں مراٹھا سماج ایٹروسیٹی قانون میں ترمیم کا مطالبہ کررہا ہے ، تو دوسری طرف دلت سماج ایٹرو سیٹی قانون میں کسی بھی طرح کی ترمیم کو برداشت کرنے سے انکار کررہا ہے۔

ناندیڑ : مہاراشٹر میں ایٹروسیٹی قانون کے معاملہ پر دلت اور مراٹھا سماج آمنے سامنے ہیں ۔ ایک طرف جہاں مراٹھا سماج ایٹروسیٹی قانون میں ترمیم کا مطالبہ کررہا ہے ، تو دوسری طرف دلت سماج ایٹرو سیٹی قانون میں کسی بھی طرح کی ترمیم کو برداشت کرنے سے انکار کررہا ہے۔ ایسے میں دونوں سماج کی جانب سے ریاست بھر میں احتجاجی تحریک چلائی جارہی ہے ۔ پہلے مراٹھا سماج نے اس کے خلاف حتجاج کیا ، تو اب دلت سماج نےاس کے جواب میں ناندیڑ میں اپنی طاقت کا مظاہرہ کیا۔

لاکھوں کی تعداد میں سڑکوں پر اتر کر دلت سماج نے کہا کہ ایٹروسیٹی قانون میں کسی بھی طرح کی کوئی تبدیلی برداشت نہیں کی جائے گی ۔ اسی طرح او بی سی سماج کو دیے گئے 27 فیصد ریزرویشن میں کسی بھی طرح دیگر سماج کو شامل نہیں کیا جانا چاہے ۔ مظاہرین نے مراٹھا سماج کی جانب سے ایٹرو سیٹی قانون کے بارے میں کیے جا رہے اعتراضات کو بے بنیاد قرار دیا ہے ۔

دلت سماج کے اس مہامورچہ کے مطالبات میں پانچ فیصد مسلم ریزرویشن کی بھی حمایت کا اعلان کیا گیا ۔ مورچہ میں شریک مظاہرین نے کہا کہ مسلم سماج دیگر پسماندہ طبقات کی طرح ہی پسماندہ ہے۔ اس کی پسماندگی کو دور کرنے کیلئے تعلیم اور ملازمت کے شعبہ میں ریزرویشن دیا جانا چاہئے ۔اسی طرح ریاست میں نافذ گئو ونش ہتیہ بندی قانون کو بھی منسوخ کرنے کا مظاہرین نے مطالبہ کیا ۔

First published: Oct 17, 2016 09:43 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading