உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ناندیڑ میں دارالقضا کے فیصلوں سے 90 فیصد سے زائد فریقین مطمئن

    ناندیڑ۔ مسلمانوں کے شرعی مسائل کے حل کے لئے ملک بھر میں دارالقضا کا جال بچھایا گیا ہے ۔

    ناندیڑ۔ مسلمانوں کے شرعی مسائل کے حل کے لئے ملک بھر میں دارالقضا کا جال بچھایا گیا ہے ۔

    ناندیڑ۔ مسلمانوں کے شرعی مسائل کے حل کے لئے ملک بھر میں دارالقضا کا جال بچھایا گیا ہے ۔

    • ETV
    • Last Updated :
    • Share this:

      ناندیڑ۔ مسلمانوں کے شرعی مسائل کے حل کے لئے ملک بھر میں دارالقضا کا جال بچھایا گیا ہے ۔ اسی سلسلہ کے تحت دارالقضا کی ناندیڑ برانچ کو قائم ہوئے ایک سال کا عرصہ مکمل ہوچکا ہے ۔ آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کی نگرانی میں چلائے جارہے دارالقضا کے ناندیڑ میں ایک سال کے دوران نکاح ، طلاق ، خلع اور وراثت کی تقسیم سے متعلق سو کے قریب مقدمات کا فیصلہ کیا گیا ۔


      قاضی شہر مفتی ایوب قاسمی نے ایک سالہ کارکردگی پر اطمینان کا اظہار کیا ہے اوراسی طرح مستقبل میں بھی بہتر سے بہتر کارکردگی کا عزم ظاہر کیا ہے ۔ قانونی ماہرین کا ماننا ہے کہ دارالقضا کی وجہ سے حصول انصاف کے لئے عصری عدالتوں میں جانے پر ہونے والی وقت اور پیسے کی بربادی کو بچانے میں کافی مدد مل رہی ہے اور پیچیدہ سے پیچیدہ مسائل بھی بہ آسانی حل ہورہے ہیں ۔


      یہاں پر انصاف کی طلب میں آنے والے فریقین نے بھی اپنے تاثرات کچھ اسی انداز میں ظاہر کئے ۔ دارالقضا میں جب بھی انصاف کے حصول کے لئے کوئی مسئلہ پیش کیا جاتا ہے تو قاضی شہر دونوں فریقین کو مدعو کرتے ہیں ۔ دونوں کی باتوں کو سنجیدگی سے سنا جاتا ہے ۔اس کے بعد شرعی قوانین کی روشنی میں فیصلہ کیا جا تاہے ۔


      dar


      فیصلہ پر دونوں فریقین کو راضی کرنے کےلئے اسلام کے عائلی قوانین کی باریکیاں سمجھائی جاتی ہیں ۔ یہی وجہ ہے کہ 90 فیصد سے زائد معاملات میں دونوں فریقین مطمئن ہوکر لوٹے ہیں ۔

      First published: