ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

فڑنویس اپنے بیان پر قائم، پھر کہا بھارت ماتا کی جے نہ کہنے والوں کو ملک میں رہنے کا حق نہیں

ممبئی۔ مہاراشٹر کے وزیر اعلی دیویندر فڑنویس نے اپنے بھارت ماتا کی جے کہنے والے بیان پر قائم رہتے ہوئے کہا کہ وہ وزیر اعلی رہیں نہ رہیں لیکن بھارت میں رہنے والوں کو بھارت ماتا کی جے تو بولنا ہی پڑے گا۔

  • IBN Khabar
  • Last Updated: Apr 04, 2016 04:48 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
فڑنویس اپنے بیان پر قائم، پھر کہا بھارت ماتا کی جے نہ کہنے والوں کو ملک میں رہنے کا حق نہیں
مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ دیویندر فڑنویس: فائل فوٹو

ممبئی۔ مہاراشٹر کے وزیر اعلی دیویندر فڑنویس نے اپنے بھارت ماتا کی جے کہنے والے بیان پر قائم رہتے ہوئے کہا کہ وہ وزیر اعلی رہیں نہ رہیں لیکن بھارت میں رہنے والوں کو بھارت ماتا کی جے تو بولنا ہی پڑے گا۔ انہوں نے کانگریس کی طرف سے معافی کے مطالبے پر کہا کہ انہوں نے کچھ بھی غلط نہیں کہا جس کے لئے انہیں معافی مانگنی پڑے۔


پیر کو وزیر اعلی نے اسمبلی میں کہا کہ کیا میں نے بھارت ماتا کی جے کہا تو میں معافی مانگوں؟ انہوں نے کہا کہ میرا وزیر اعلی کا عہدہ  چلا جائے تو بھی چلے گا لیکن میں بھارت ماتا کی جے کہتا رہوں گا۔ انہوں نے ایک بار پھر اپنے بیان کو دہراتے ہوئے کہا کہ جو بھارت ماتا کی جے نہیں کہے گا اسے اس ملک میں رہنے کا حق نہیں ہے۔ ساتھ ہی انہوں نے یہ بھی کہا کہ میرے بیان کو کسی مذہب سے جوڑ کر مت دیکھیں۔


اس سے پہلے این سی پی لیڈر جتیندر نے فڑنویس کے بیان کی مخالفت کرتے ہوئے کہا تھا کہ کب کہنا ہے؟ صبح اٹھتے وقت کہنا ہے، رات کو سوتے وقت کہنا ہے، کب کہنا ہے بھارت ماتا کی جے اور اگر بھارت ماتا کی جے نہیں کہیں گے تو کون سے ملک بھیجیں گے۔ اس کا ویزا اور پاسپورٹ آپ دیں گے؟


بتا دیں کہ ہفتہ کو فڑنویس نے کہا تھا کہ بھارت ماتا کی جے نہ بولنے والوں کو ملک میں رہنے کا حق نہیں ہے۔ ان کے اس بیان پر جم کر ہنگامہ ہوا جس کے بعد فڑنویس نے کہا کہ اس بیان کا کسی مذہب سے کوئی لینا دینا نہیں ہے۔
First published: Apr 04, 2016 04:48 PM IST