ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

گجرات : سرجری کراکر 20 مرد بننا چاہتے ہیں خاتون ، احمد آباد میں ہوئے 1000 آپریشن ، وجہ جان کر رہ جائیں گے دنگ

ایسا ہی ایک معاملہ ڈاکٹر جیسنور دائرا (Dr. Jesnoor Dayara) کا بھی ہے ، جو ایک ٹرانس وومین (Transwoman) ہیں ۔ انہوں نے حال ہی میں روس کی ایک یونیورسٹی سے ایم بی بی ایس (MBBS) کی ڈگری حاصل کی ہے ۔ ان کی پیدائش مرد کے طور پر ہوئی تھی ، لیکن دل سے وہ خود کو خاتون مانتی ہیں ۔ اسی حساب سے رہنا بھی چاہتی ہیں ۔

  • Share this:
گجرات : سرجری کراکر 20 مرد بننا چاہتے ہیں خاتون ، احمد آباد میں ہوئے 1000 آپریشن ، وجہ جان کر رہ جائیں گے دنگ
گجرات : سرجری کراکر 20 مرد بننا چاہتے ہیں خاتون ، احمد آباد میں ہوئے 1000 آپریشن ۔ علامتی تصویر ۔

احمد آباد : گجرات میں ان دنوں جینڈر چینج کا ٹرینڈ بڑھتا جارہا ہے ۔ دوہری شخصیت والے ایسے 20 لوگ سامنے آئے ہیں ، جو سرجری کے ذریعہ اپنی جنس تبدیل کراکر مرد سے عورت بن رہے ہیں ۔ ان میں سے کئی لوگ سرجری کے الگ الگ مرحلے میں پہنچ چکے ہیں ۔ تبدیلی جنس کیلئے سرجری کرانے والے کئی لوگ اپنی اپنی شناخت چھپانے کی خاطر گاوں و محلہ میں پہلے کی طرح ہی رہتے ہیں ۔ اچھی بات یہ ہے کہ سماج بھی اب انہیں آرام سے قبول کررہا ہے ۔


دینک بھاسکر کی ایک رپورٹ میں پلاسٹک سرجن ڈاکٹر ہرش امین نے بتایا کہ 2020 ۔ 21 میں صرف احمد آباد میں ہی ایسی سرجری کا ہندسہ 1000 تک پہنچ گیا ہے ۔ سال بھر میں 50 ۔ 60 مریضوں نے پوچھ گچھ کی ، جس میں سے 14 مردوں کی سرجری میں کرچکا ہوں ۔ میری طرح احمد آباد میں 80 سے زیادہ پلاسٹک سرجن ہیں ۔


وہیں احمد آباد کے سینئر پلاسٹک سرجن ڈاکٹر شری کانٹ لاگونکر بتاتے ہیں کہ کارپوریٹ اسپتال میں اس طرح کی سرجری کیلئے آٹھ لاکھ روپے تک کا خرچ ہوسکتا ہے ۔ زیادہ تر لوگ شناخت ظاہر ہونے سے بچنے کیلئے بیرون ممالک ایسی سرجری کرانے جاتے ہیں ، لیکن اب ٹرینڈ بدل رہا ہے ۔ گزشتہ 15 دنوں میں احمد آباد میں ہی چھ لوگوں کی ایسی سرجری ہوچکی ہے ۔


ایسا ہی ایک معاملہ ڈاکٹر جیسنور دائرا کا بھی ہے ، جو ایک ٹرانس وومین ہیں ۔ انہوں نے حال ہی میں روس کی ایک یونیورسٹی سے ایم بی بی ایس کی ڈگری حاصل کی ہے ۔ ان کی پیدائش مرد کے طور پر ہوئی تھی ، لیکن دل سے وہ خود کو خاتون مانتی ہیں ۔ اسی حساب سے رہنا بھی چاہتی ہیں ۔ انہوں نے اپنی یہ خواہش کبھی بھی اپنے گھروالوں کو نہیں بتائی تھی ، لیکن اب انہیں اس بات کو قبول کرنے میں کوئی ہچکچاہٹ نہیں ہے ۔ اب وہ اپنا جینڈر بھی بدلوانا چاہتی ہیں ۔

ہر کسی کی طرح ڈاکٹر جیسنور بھی اپنے بچے کی پرورش کرنا چاہتی ہیں ۔ وہ سال کے آخر تک اپنا جینڈر تبدیل کرواکر پوری طرح سے خاتون بننے کیلئے تیار ہیں ۔ لیکن اس سے پہلے انہوں نے اپنا سیمن فریز کروادیا ہے ۔ اس سے بچہ بایولاجیکل طور پر انہیں کا ہوگا ، کیونکہ باپ کے طو رپر یہ ان کے سیمن میں موجود اسپرم سے ہی جنم لے گا ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Mar 09, 2021 11:25 AM IST