உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بی جے پی رکن اسمبلی کے دفتر میں توڑپھوڑ معاملہ میں ہاردک سمیت تین قصوروار، 2 برس کی سزا

    ہاردک پٹیل : فائل فوٹو

    ہاردک پٹیل : فائل فوٹو

    گجرات کے ضلع مہسانہ کے وس نگر کی ایک عدالت نے آج ہاردک پٹیل ، سردار پٹیل گروپ کے صدر لال جی پٹیل اور ایک دیگر سمیت تین لوگوں کو بی جے پی رکن اسمبلی رشی کیش پٹیل کے دفترمیں ہوئی توڑپھوڑ کے معاملہ میں دو دو برس کی عام جیل کی سزا سنائی ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      مہسانہ۔ گجرات کے ضلع مہسانہ کے وس نگر کی ایک عدالت نے آج پاٹیدار آرکشن آندولن سمیتی (پی اے اے ایس) کے لیڈر ہاردک پٹیل ، سردار پٹیل گروپ کے صدر لال جی پٹیل اور ایک دیگر سمیت تین لوگوں کو تین برس پہلے وہاں ریزرویشن کی حمایت میں ایک ریلی کے دوران اس وقت کے بی جے پی رکن اسمبلی رشی کیش پٹیل کے دفترمیں ہوئی توڑپھوڑ کے معاملہ میں دو دو برس کی عام جیل کی سزا سنائی ہے۔ 23جولائی 2015کو ہوئے اس واقعہ میں مجموعی طورپر 17 نامزد قصورواروں میں سے 14 دیگر کو عدالت نے رہا کردیا۔


      عدالت نے تینوں کو پچاس پچاس ہزار روپے کے جرمانہ کی بھی سزا سنائی اور اس رقم میں سے دس ہزار روپے شکایت کرنے والے اور ایک نیوز چینل کے کیمرہ مین سریش ونول(جن پر بھیڑ نے حملہ کرکے ان کا کیمرہ توڑ دیا تھا ) کو دینے کا حکم دیا۔ اس کے علاوہ اس رقم سے واقعہ کے دوران آتش زدگی میں جلی کار کے مالک بابوجی ٹھاکر کو ایک لاکھ روپے اور چالیس ہزار روپے اس وقت کے رکن اسمبلی  پٹیل کو بھی بطور معاوضہ دینے کا اعلان کیا ہے۔


      دو برس کی سزا ہوجانے کے بعد آج ہی تینوں کو ضمانت مل جانے کی پوری امید ہے۔ خیال رہے کہ مذکورہ ریلی کے دوران بھیڑ نے  پٹیل کے دفتر میں توڑپھوڑ کی تھی اور آتشزدگی کرکے ایک کار کو بھی جلا دیا تھا۔ عدالت نے تینوں کو صرف فساد کرنے یعنی رائیٹنگ کی دفعہ تحت ہی قصورورار ٹھہرایا ہے، کئی دیگر دفعات میں بری کردیا ہے۔

      First published: