ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

این آئی اے نے میرے بیان کو غلط ریکارڈ کیا، عشرت جہاں کے بارے میں فرسٹ ہینڈ نالج نہیں تھی: ہیڈلی

ممبئی: 26/11 کے ملزم ڈیوڈ ہیڈلی سے پوچھ گچھ جاری ہے اور اس دوران ایک بار پھر عشرت جہاں کے بارے میں ہیڈلی کا بیان بدلتا نظر آیا۔

  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
این آئی اے نے میرے بیان کو غلط ریکارڈ کیا، عشرت جہاں کے بارے میں فرسٹ ہینڈ نالج نہیں تھی: ہیڈلی
ممبئی: 26/11 کے ملزم ڈیوڈ ہیڈلی سے پوچھ گچھ جاری ہے اور اس دوران ایک بار پھر عشرت جہاں کے بارے میں ہیڈلی کا بیان بدلتا نظر آیا۔

ممبئی: 26/11 کے ملزم ڈیوڈ ہیڈلی سے پوچھ گچھ جاری ہے اور اس دوران ایک بار پھر عشرت جہاں کے بارے میں ہیڈلی کا بیان بدلتا نظر آیا۔ ہیڈلی نے کہا کہ عشرت جہاں کے بارے میں اس کے پاس فرسٹ ہینڈ نالج نہیں تھی۔ ہیڈلی نے یہ بھی بتایا کہ لکھوی نے اس کو مزمل بھٹ سے ملوایا تھا اور بتایا تھا کہ اکشر دھام اور عشرت جیسے آپریشن اسی نے کئے تھے۔ ہیڈلی کا کہنا ہے کہ جو بیان اس نے این آئی اے کو دیئے تھے اسے اس کو پڑھ کر نہیں سنایا گیا تھا۔ ساتھ ہی اس نے یہ بھی کہا کہ عشرت کے بارے میں اس نے جو بیان دیا تھا وہ نہیں جانتا کہ این آئی اے نے اس بات کو ریکارڈ کیوں نہیں کیا۔ وہیں پوچھ گچھ کر رہے ابو جندال کے وکیل نے دعوی کیا ہے کہ ہیڈلی نے عشرت کے بارے میں این آئی اے کو کوئی بیان نہیں دیا۔


ٹھاکرے کو سبق سکھانا ضروری


ہیڈلی نے بیان دیا کہ حافظ سعید نے اس سے کہا تھا کہ شیو سینا کے سابق سربراہ بال ٹھاکرے کو سبق سکھانا ضروری ہے۔ اس کے علاوہ ہیڈلی نے سعید سے کہا تھا کہ ٹھاکرے سے منسلک کام وہ 6 ماہ میں مکمل کر سکتا ہے۔ ہیڈلی نے سی بی آئی دفتر کا ویڈیو بھی بنایا تھا۔


غور طلب ہے کہ ہیڈلی نے جمعہ کو اپنے بیان میں کہا تھا کہ وہ بچپن سے ہی ہندستان سے نفرت کرتا رہا ہے۔ ساتھ ہی ہیڈلی نے کہا تھا کہ اس کے والد کی موت کے بعد پاکستان کے اس وقت کے وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی اس کے گھر بھی آئے تھے۔ بتا دیں کہ ہیڈلی نے ایسے بہت سے بیان بھی دئیے ہیں جو پہلے کے بیانات سے بدلے ہوئے تھے۔ فروری کی پوچھ گچھ میں اس نے عشرت جہاں کو لشکر کی خاتون فدائین بتایا تھا اور لشکر میں خواتین ونگ ہونے کی بات کہی تھی لیکن جمعہ کو اس نے ان دونوں باتوں سے انکار کر دیا۔
First published: Mar 26, 2016 11:52 AM IST