உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مہاراشٹر وقف بورڈ کے تین ممبران کی معیاد میں توسیع کی درخواست ممبئی ہائی کورٹ نے کی خارج

    بامبے ہائی کورٹ ۔ فائل فوٹو

    بامبے ہائی کورٹ ۔ فائل فوٹو

    ممبئی ہائی کورٹ کی اورنگ آباد برانچ نے آج ایک اہم ترین فیصلہ میں مہاراشٹر اسٹیٹ وقف بورڈکے تین ممبران کی معیاد ختم ہونے پر نئی باڈی کی تشکیل تک برقرار رکھنے کی رٹ کو خارج کردیا ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      ممبئی: ممبئی ہائی کورٹ کی اورنگ آباد برانچ نے آج ایک اہم ترین فیصلہ میں مہاراشٹر اسٹیٹ وقف بورڈکے تین ممبران کی معیاد ختم ہونے پر نئی باڈی کی تشکیل تک برقرار رکھنے کی رٹ کو خارج کردیا ہے۔ واضح رہے کہ ہائی کورٹ میں بورڈ کے چھ ممبران حبیب فقیہ،بابا جانی درانی،سید جمیل ،حسین دلوائی ،آصف قریشی اور مولانا غلام احمد وستانوی نے رٹ داخل کی تھی کہ جب تک تین نئے ممبران منتخب نہیں ہوجاتے اس وقت اول الذکر تین ممبران کاانتخاب 3؍اپریل 2013میں آیا تھا اوران کی معیاد 2 اپریل 2018میں ختم ہورہی تھی اس سے قبل ان ممبران نے کورٹ میں رٹ داخل کردی تھی جسے اورنگ آباد ہائی کورٹ کے ڈیویژن بیچ جسٹس گنگا پور والا اور جسٹس دھاولے کی عدالت نے خارج کردیا۔
      پٹیشنر کی دلیل یہ تھی کہ وقف ایکٹ 1995 کی دفعہ 14,15اور 19 کے تحت ان کی معیاد میں توسیع کی جاسکتی ہے۔ دفعہ ۹ ۱(۴) میں ہے کہ منتخب کردہ ممبران کی تعداد میں ہمیشہ زیادہ رہے گی۔کورٹ نے ان تمام دلیلوں کوخار ج کرتے ہوئے اپنا فیصلہ سنا دیا۔
      تحریک اوقاف کے صدر شبیراحمد انصاری نے کہاکہ مذکورہ تین ممبران پر وقف املاک کو نقصان پہنچانے اور اس میں خرد برد کرنے کے معاملات سامنے آئے ہیں ،ہم نے ان کے گھوٹالوں کی شکایت ریاست کے وزیر اعلی دستاویزی ثبوتوں کے ساتھ کی ہے،جس کی کاپیاں فائل میں شامل ہیں۔اسی طرح ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ اگران کی معیاد میں اضافہ کیاجاتاہے تووہ اپنے کیے گئے غلط کاریوں پر پردہ ڈالنے کی کوشش کرسکتے ہیں اس لیے ان کی معیاد میں توسیع نہ کی جائے ۔
      First published: