ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

جمعیۃ علماء جے پور انڈین مجاہدین سے وابستگی کے الزام میں گرفتار 13 مسلم نوجوانوں کے مقدمات کی پیروی کرے گی

ممبئی۔ ملک میں دہشت گردی کے الزامات کے تحت گرفتار مسلم نوجوانو ں کو قانونی امدا د فراہم کرنے والی تنظیم جمعیۃ علماء ہند نے اب صوبہ راجستھان کے مقدمات کی پیروی کرنے کا بیڑہ اٹھایا ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Oct 04, 2016 06:02 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
جمعیۃ علماء جے پور انڈین مجاہدین سے وابستگی کے الزام میں گرفتار 13 مسلم نوجوانوں کے مقدمات کی پیروی کرے گی
ارشد مدنی کا کہنا ہے کہ حکومت کو گائے کو قومی جانور قرار دے دینا چاہئے جس کے ذریعہ گائے کا تحفظ کیا جا سکے

ممبئی۔ ملک میں دہشت گردی کے الزامات کے تحت گرفتار مسلم نوجوانو ں کو قانونی امدا د فراہم کرنے والی تنظیم جمعیۃ علماء ہند نے اب صوبہ راجستھان کے مقدمات کی پیروی کرنے کا بیڑہ اٹھایا ہے نیز اس تعلق سے جئے پور میں سال 2014میں انسداد دہشت گردی دستہ (اے ٹی ایس ) نے انجینئرنگ کی تعلیم حاصل کررہے 13 مسلم نوجوانوں کو گرفتار کر ان کے خلاف ممنو ع دہشت گرد تنظیم انڈین مجاہدین سے وابستہ ہونے کا الزامات عائد کرتے ہوئے یہ دعوی کیا تھا کہ ملزمین راجستھان میں دہشت گردانہ کارروائیاں انجام دینا چاہتے تھے کے مقدمات کی پیروی کے تعلق سے جمعیتہ کی مقامی وکلاء سے گفت و شنید جاری ہے ۔ واضح رہے کہ تقریباً ڈھائی سال کا عرصہ گذر جانے کے باوجود اس مقدمہ کا سامنا کررہے کسی ملزم کی ضمانت ہوئی اور نہ ہی مقدمہ کا آغاز ہوا۔ اس کی وجہ سے مایوس ملزمین کے اہل خانہ نے جمعیۃ علماء ہند کے صدر مولانا سید ارشد مدنی اور سیکریٹری قانونی امداد کمیٹی گلزار اعظمی سے25 اگست 2016کو دہلی میں ملاقات کی تھی اور ملزمین کو قانونی امداد دیئے جانے کی درخواست کی تھی ۔ دہلی میں ملاقات کے بعد ملزمین کے اہل خانہ نے گلزار اعظمی سے گذشتہ ماہ 28ستمبر کو ممبئی میں ملاقات کی اور جئے پور میں وکلاء کا بندوبست کرنے کی گذارش کی جس کے بعد گلزاراعظمی نے ممبئی سے ایڈوکیٹ شاہد ندیم انصاری اور دہلی سے ایڈوکیٹ مجاہد کو جئے پور روانہ کیا تا کہ وہ جئے میں وکلاء اور ملزمین کے اہل خانہ سے ملاقات کرکے حالات کا جائزہ لینے کے بعد ملزمین کی پیروی کے لئے قابل وکلاء کی خدمات حاصل کریں۔



انڈین مجاہدین جئے پور مقدمہ کے تعلق سے گلزار اعظمی نے کہا کہ اس معاملے میں اے ٹی ایس (راجستھان)نے 13 بےقصور اعلی تعلیم یافتہ مسلم نوجوانوں کو جھوٹے مقدمہ میں پھنسایا ہے اور ملزمین کے اہل خانہ کی درخواست پر جمعیۃ علماء نے ملزمین کے مقدما ت کی پیروی کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور اس تعلق سے وکلاء کے وفد نے جئے پور میں متعدد کریمنل و کلاء سے ملاقات کی اوران سے ملزمین کے مقدمہ کی پیروی کرنے کے تعلق سے تفصیلی گفتگو کی۔


گلزار اعظمی نے کہا کہ جمعیۃ علماء پہلے سے ہی ان ملزمین کے مقدمات کی پیروی کررہی ہے جنہیں جئے پور کے ساتھ ساتھ دہلی میں ملزم بنایا گیا ہے اور ایڈوکیٹ ایم ایس خان کو اس تعلق سے ذمہ داری سونپی گئی ہے لیکن جئے پور مقدمہ کی سماعت التواء کی شکار ہونے سے ملزمین کے دہلی کے مقدمات بھی التواء کا شکار ہیں ۔ گلزار اعظمی نے مزید کہا کہ ان کی اولین کوشش ہوگی کہ وہ جئے پور مقدمہ میں ملزمین کے خلاف فرد جرم عائد کرکے مقدمہ کی سماعت شروع کرانے کے لیئے وکلاء سے گذارش کریں گے ۔ جمعیۃ علماء سے قانونی امدا د حاصل کرنے کے لیئے ملزمین محمد عمر، محمد عاقب، محمد وقار، عبدالماجد، محمد واحد، محمد سجاد، محمد وقار، اشرف علی، مسرت اقبال، برکت علی، محمد ثاقب انصار اور عمار یاسر نے رجوع کیا اور ان کی درخواست منظور کرلی گئی ہے ۔




First published: Oct 04, 2016 06:02 PM IST