உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اسکولی نصاب تعلیم سے پنڈت جواہر لال نہرو کا نام ہٹانے پر ہنگامہ، کانگریس نے کی مخالفت

    جے پور۔  راجستھان کے سابق وزیر اعلی اشوک گہلوت نے ریاست میں اسکولی نصاب تعلیم سے ملک کے اولین وزیر اعظم پنڈت جواہر لال نہرو کا نام مٹائے جانے کے ریاستی حکومت کے فیصلے کو شرمناک قرار دیتے ہوئے اس کی مذمت کی ہے۔

    جے پور۔ راجستھان کے سابق وزیر اعلی اشوک گہلوت نے ریاست میں اسکولی نصاب تعلیم سے ملک کے اولین وزیر اعظم پنڈت جواہر لال نہرو کا نام مٹائے جانے کے ریاستی حکومت کے فیصلے کو شرمناک قرار دیتے ہوئے اس کی مذمت کی ہے۔

    جے پور۔ راجستھان کے سابق وزیر اعلی اشوک گہلوت نے ریاست میں اسکولی نصاب تعلیم سے ملک کے اولین وزیر اعظم پنڈت جواہر لال نہرو کا نام مٹائے جانے کے ریاستی حکومت کے فیصلے کو شرمناک قرار دیتے ہوئے اس کی مذمت کی ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      جے پور۔  راجستھان کے سابق وزیر اعلی اشوک گہلوت نے ریاست میں اسکولی نصاب تعلیم سے ملک کے اولین وزیر اعظم پنڈت جواہر لال نہرو کا نام مٹائے جانے کے ریاستی حکومت کے فیصلے کو شرمناک قرار دیتے ہوئے اس کی مذمت کی ہے۔ مسٹر گہلوت نے  یہاں ایک بیان میں کہا کہ اسکولی نصابی کتابوں میں تاریخ سے ملک کے مرد معماروں کے نام ہٹانے والی حکومتیں خود مٹ جاتی ہیں لیکن تاریخ کا سچ نہیں مٹتا۔ انہوں نے کہا کہ ریاستی حکومت کی یہ سوچ تنگ ذہنیت کی علامت ہے اور ریاستی حکومت کی اس سازش کو بے نقاب کرنے کیلئے مہم چلائی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ گوڈسے کے نظریات سے متاثر ہوکر پنڈت نہرو کا نام نصابی کتابوں سے ہٹانے سے ان کی عظمت کو فراموش نہیں کیا جا سکے گا۔


      انہوں نے کہا کہ جدید ہندوستان کے خالق اور تحریک عدم موالات سے بھارت چھوڑو تحریک تک دس سال انگریزی استبداد کی قید کاٹنے والے عظیم مجاہد آزادی اور دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت کے بانی وزیر اعظم پنڈت جواہر لال نہرو کا نام اسکولی نصابی کتابوں سے ہٹا دینے کا راجستھان حکومت کا ایکٹ شرمناک ہے۔ سابق وزیر اعلی مسٹر گہلوت نے کہا کہ ملک میں پنچایت نظام کو پنچاتي راج کے طور پر جدید آئینی نظام میں قائم کرنے والے اور راجستھان کے ناگور سے ہی اس کی شروعات کرنے والے اولین وزیر اعظم مسٹر نہرو کا نام ہٹا دیا گیا جو راجستھان حکومت کی تنگ سوچ کو اجاگر کرتا ہے۔ راجستھان اسکول بورڈ کی آٹھویں کلاس کی کتاب میں نہرو کا نام تو ہٹا دیا ہی گیا ہے ساتھ ہی با بائے قوم مہاتما گاندھی کو قتل کرنے والے ناتھورام گوڈسے کا نام بھی ہٹا دیا گیا۔

      First published: