உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    الور پولیس کی غنڈہ گردی کی سی ایم او نے نکالی ہوا، وزیر داخلہ بھی ناراض ، کانسٹیبل معطل

    الور :جرائم پر نکیل کسنے میں ناکام الور پولیس کا ڈنڈا اب میڈیا پر چل رہا ہے۔ الور پولیس کی اس بے رحمی پر وزیر اعلی وسندھرا راجے بھی ناراض ہیں اور انہوں نے فوری طور پر قصوروار پولیس اہلکاروں پر کارروائی کرنے کی ہدایت دی ہے۔

    الور :جرائم پر نکیل کسنے میں ناکام الور پولیس کا ڈنڈا اب میڈیا پر چل رہا ہے۔ الور پولیس کی اس بے رحمی پر وزیر اعلی وسندھرا راجے بھی ناراض ہیں اور انہوں نے فوری طور پر قصوروار پولیس اہلکاروں پر کارروائی کرنے کی ہدایت دی ہے۔

    الور :جرائم پر نکیل کسنے میں ناکام الور پولیس کا ڈنڈا اب میڈیا پر چل رہا ہے۔ الور پولیس کی اس بے رحمی پر وزیر اعلی وسندھرا راجے بھی ناراض ہیں اور انہوں نے فوری طور پر قصوروار پولیس اہلکاروں پر کارروائی کرنے کی ہدایت دی ہے۔

    • ETV
    • Last Updated :
    • Share this:

      الور :جرائم پر نکیل کسنے میں ناکام الور پولیس کا ڈنڈا اب میڈیا پر چل رہا ہے۔ الور پولیس کی اس بے رحمی پر وزیر اعلی وسندھرا راجے بھی ناراض ہیں اور انہوں نے فوری طور پر قصوروار پولیس اہلکاروں پر کارروائی کرنے کی ہدایت دی ہے۔


      الور کے نوگاواں کے تاج خاں کے باس میں بورویل میں گرے بچے کی خبر کی کوریج کررہی میڈیا کی ٹیم پر پولیس کے ڈنڈے کے خلاف وزیر اعلی کے دفتر نے ایکشن لیا ہے۔ یہی نہیں وزیر اعلی کے حکم کے بعد حملہ کرنے والے کانسٹیبل کو معطل بھی کر دیا گیا ہے۔


      قابل ذکر ہے کہ الور کے رام گڑھ میں ایک تین سال کا بچہ بورویل میں گر گیا تھا۔ اس کی کوریج کرنے جے پور سے پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کی ٹیمیں گئی تھیں۔ منگل کی رات جب میڈیا واقعہ کی کوریج کر رہا تھا تو الور میں تعینات ڈی ایس پی ہمانشو اور کچھ دیگر پولیس اہلکاروں نے میڈیا سے گالی گلوچ شروع کر دی۔ اسی دوران ڈی ایس پی بھڑک گئے۔ انہوں نے صحافیو ں کو دھمکاتے ہوئے کہا کہ ہو گئی صحافت، یہاں سے چلے جائیں ورنہ پٹیںگے۔


      مگر صحافیوں نے کوریج جاری رکھی تو انہوں نے دھکا مکی شروع کر دی اور ایک کانسٹیبل نے الیکٹرانک میڈیا کے ارکان کی پٹائی شروع کر دی۔ اس واقعہ میں جي ٹی وي کے صحافی آشوتوش شرما زخمی ہو گئے۔ انہیں اسپتال لے جایا گیا۔ واقعہ کے بعد کانسٹیبل سلطان کو معطل کردیا گیا۔


      ادھر پولیس کی اس کارروائی سے ناراض ریاست بھر کے صحافیوں کے ایک گروپ نے بدھ کی صبح وزیر داخلہ گلاب چند کٹاریا اور ڈی جی پی منوج بھٹ سے ملاقات کی ۔ ڈی جی پی نے صحافیوں کے مطالبات پر غور کرنے کے بعد تحقیقات کا حکم دیا۔ وہیں وزیر داخلہ کٹاریا نے فورا ہی ڈی جی پی کو شام تک ایکشن رپورٹ دینے کو کہا ہے۔

      First published: