உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ملک کے وقتی سیاسی حالات سے مسلمان خوفزدہ نہ ہوں: جسٹس اے ایم احمدی

    ممبئی ۔ ہندوستان کے سابق چیف جسٹس اے ایم احمدی نے مسلمانوں سے کہا ہے کہ وہ ملک کے موجودہ وقتی سیاسی حالات سے خوف زدہ نہ ہوں بلکہ ملک کے آئین اور عدلیہ پر بھرپور اعتماد رکھیں جن کے تحت انہیں ہمیشہ انصاف کی امید بنی رہے گی۔

    ممبئی ۔ ہندوستان کے سابق چیف جسٹس اے ایم احمدی نے مسلمانوں سے کہا ہے کہ وہ ملک کے موجودہ وقتی سیاسی حالات سے خوف زدہ نہ ہوں بلکہ ملک کے آئین اور عدلیہ پر بھرپور اعتماد رکھیں جن کے تحت انہیں ہمیشہ انصاف کی امید بنی رہے گی۔

    ممبئی ۔ ہندوستان کے سابق چیف جسٹس اے ایم احمدی نے مسلمانوں سے کہا ہے کہ وہ ملک کے موجودہ وقتی سیاسی حالات سے خوف زدہ نہ ہوں بلکہ ملک کے آئین اور عدلیہ پر بھرپور اعتماد رکھیں جن کے تحت انہیں ہمیشہ انصاف کی امید بنی رہے گی۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      ممبئی ۔ ہندوستان کے سابق چیف جسٹس اے ایم احمدی نے مسلمانوں سے کہا ہے کہ وہ ملک کے موجودہ وقتی سیاسی حالات سے خوف زدہ نہ ہوں بلکہ ملک کے آئین اور عدلیہ پر بھرپور اعتماد رکھیں جن کے تحت انہیں ہمیشہ انصاف کی امید بنی رہے گی۔ گزشتہ شب ممبئی کے چنندہ مسلم شہریوں،جن میں قانون داں،صنعت کار،تاجر ،صحافی اور پیشہ ورافراد شامل تھے،ایک غیر رسمی ملاقات کے دوران جسٹس احمدی نے کہاکہ ملک میں اس قسم کے حالات آزادی کے بعد کئی مرتبہ پیدا ہوئے ہیں،لیکن یہ صرف سیاسی برتری کے لیے کی جانے والی کوشش ہے ،ملک کا آئین اور عدلیہ کی پوزیشن کافی مستحکم ہے اور اس کے تحت عام شہریوں،کمزور طقبات ،اقلیتوں اور پسماندہ طبقات کو ان کے حقوق ملتے رہے ہیں اور کسی کو اس بات کا حق نہیں ہے کہ ان کی حق تلفی کرسکے ۔


      ان معززین سے تبادلہ خیال کرتے ہوئے سابق چیف جسٹس نے کہا کہ البتہ اقلیتی فرقے کو تعلیمی میدان میں اپنی ایک علحیدہ شناخت بنانی ہوگی اور تعلیم کے میدان میں مزید ٹھوس کام کرنے کی کوشش کی جانی چاہئے اور اس کے ساتھ ساتھ مقابلہ جاتی امتحانات میں بھی حصہ لینا چاہئے تاکہ آئی اے ایس اورآئی پی ایس اور دیگر ریاستوں کی سرکاری نوکریوں میں شامل ہویا جاسکے ۔ انہوں نے تبادلہ خیال کے دوران اٹھائے جانے والے متعدد سوالات کا جواب دیا اور کہا کہ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو)جس کے وہ چھ سال چانسلر رہ چکے ہیں،کے اقلیتی کردار اور اس کی حیثیت کو نشانہ بنانے کی کوئی حکومت ہمت نہیں کرسکتی ہے ،یہ پیغام انہوں نے ارباب اقتدار کو واضح انداز میں دے دیا ہے کہ اے ایم یو ایکٹ کی جڑیں کافی گہری اور مضبوط ہیں ،اس لیے فکر مند ہونے کی صرورت نہیں ہے۔


      سابق چیف جسٹس اے ایم احمدی سے ملاقات کے دوران مسلمانوں کو ملک میں درپیش مسائل پر تبادلہ خیال کیا گیا ،ایڈوکیٹ مجید میمن نے کہا کہ ہمارے اپنے نوجوانوں اور خصوصی طورپر لڑکیوں میں تعلیم کے حصول کے لیے کافی جذبہ پایا جاتا ہے ،صرف حوصلہ بڑھانے اور ہمت افزائی ہونی چاہئے ۔

      First published: