ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

راجستھان میں کانگریس پارٹی کی سنچری مکمل کرنے والی کون ہیں شافیہ زبیر؟

راجستھان اسمبلی میں کانگریس کو اکثریت کے ہندسہ تک پہنچانے والی شافیہ زبیر جامعہ ملیہ اسلامیہ کے سابق طالب علم زبیر خان کی اہلیہ ہیں

  • Share this:
راجستھان میں کانگریس پارٹی کی سنچری مکمل کرنے والی کون ہیں شافیہ زبیر؟
شافیہ زبیر: فائل فوٹو

راجستھان اسمبلی میں کانگریس کو اکثریت کے ہندسہ تک پہنچانے والی شافیہ زبیر جامعہ ملیہ اسلامیہ کے سابق طالب علم زبیر خان کی اہلیہ ہیں۔ رام گڑھ ضمنی الیکشن میں کانگریس کی امیدوار شافیہ زبیر نے جیت درج کر کے 200 رکنی اسمبلی میں کانگریس کی سیٹوں کی سنچری پوری کر دی۔


شافیہ زبیر نے اپنے نزدیکی حریف بھارتیہ جنتا پارٹی کے امیدوار سکھونت سنگھ کو 12,228 ووٹوں سے شکست دی۔ الور کے رام گڑھ اسمبلی حلقہ میں شافیہ زبیر کو کل 83,311 ووٹ ملے جبکہ بی جے پی امیدوار سکھونت سنگھ کو 71,083 ووٹ ملے۔ وہیں، بی ایس پی کے امیدوار جگت سنگھ نے 24,856 ووٹ حاصل کئے۔


الیکشن نتیجہ کے اعلان کے بعد شافیہ زبیر نے کہا کہ ’’ میں اس بات سے بہت خوش ہوں کہ میری جیت سے کانگریس نے اب 100 کا ہندسہ پار کر لیا ہے اور وہ برابری پر پہنچ گئی ہے‘‘۔ انہوں نے اپنی جیت کے لئے رائے دہندگان کا شکریہ ادا کیا اور لوگوں کی ترقی کے لئے کام کرنے کا وعدہ کیا۔


جیت کے بعد راجستھان کے وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت نے اعلان کیا کہ ’’ لڑکوں اور لڑکیوں کو بے روزگاری بھتہ کے طور پر دو سال تک بالترتیب 3,000 اور 3,500 روپئے دئیے جائیں گے۔ شافیہ زبیر کی جیت کے بعد راجستھان اسمبلی میں خواتین ارکان اسمبلی کی تعداد بڑھ کر اب 24  ہو گئی ہے۔

جیت حاصل کرنے کے بعد شافیہ زبیر نے کہا کہ’’ یہ جیت ان لوگوں کی جیت ہے جو بی جے پی کے دور میں پریشان حال رہے ہیں‘‘۔ انہوں نے کہا ’’جیت حاصل کرنے کے بعد اب وہ رام گڑھ میں بہتر سہولتیں فراہم کرنے کی کوشش کریں گی کیونکہ پچھلے پانچ سال میں بی جے پی کی حکومت نے یہاں سب کچھ درہم برہم کر دیا تھا‘‘۔

بی جے پی پر نشانہ سادھتے ہوئے شافیہ زبیر نے کہا کہ ’’ بی جے پی کی پھوٹ ڈالو اور راج کرو والی پالیسی سے عوام اب اکتا چکے ہیں۔ اب نوجوانوں کو روزگار چاہئے، خواتین کو بہتر ماحول چاہئے۔ ان کی آمدنی میں اضافہ ہونا چاہئے‘‘۔

ریاستوں کی مجموعی 200 اسمبلی نشستوں کی 199 سیٹوں پر 7 دسمبر کو انتخابات ہوئے تھے اور 11 دسمبر کو نتائج کا اعلان ہوا تھا۔ ان میں سے 99 سیٹیں کانگریس نے جیتی تھیں جبکہ بی جے پی کو 73 سیٹیں ملی تھیں۔ الور کے رام گڑھ اسمبلی حلقے میں بی ایس پی کے امیدوار کی موت کے بعد یہاں الیکشن ملتوی کردیا گیا تھا۔

شافیہ زبیر کی جیت کے ساتھ ہی اب راجستھان میں مسلم ارکان اسمبلی کی تعداد بڑھ کر 9 ہو گئی ہے۔ ایک بی ایس پی رکن اسمبلی کے علاوہ بقیہ سبھی 8 ایم ایل اے کانگریس پارٹی سے ہیں۔

خیال رہے کہ ریاست میں مسلمانوں کی 12 فیصد آبادی اور راجستھان اسمبلی میں مسلمانوں کی تعداد کے تناسب کے لحاظ سے مسلمانوں کو نمائندگی نہیں ملی ہے۔ ریاست کے مسلمان اسمبلی میں مناسب نمائندگی کے لئے کانگریس سے امید لگائے ہوئے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ اگر کانگریس گہلوت کابینہ میں ردوبدل کرتی ہے تو راجستھان کے الور اور بھرت پور سے دو ارکان اسمبلی اس کے مضبوط دعویدار ہیں اور انہیں کابینہ میں ضرور جگہ دینی چاہئے اور شافیہ زبیر ان دو مضبوط دعویداروں میں سے ایک ہیں۔

 
First published: Feb 01, 2019 11:37 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading