உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کوکن میں سیلاب متاثرین کی مدد کیلئے 40 سےزائد تنظیموں کی مشترکہ میٹنگ، حالات بہتر بنانے پر غور و خوض

    اس میٹنگ کوکن خطے میں ہونے والی تباہی کو مدنظر رکھتے ہوئے اب وہاں کے حالات بہتر کیسے بنائے جائیں اس پر غور وخوض کیا گیا۔

    اس میٹنگ کوکن خطے میں ہونے والی تباہی کو مدنظر رکھتے ہوئے اب وہاں کے حالات بہتر کیسے بنائے جائیں اس پر غور وخوض کیا گیا۔

    اس میٹنگ کوکن خطے میں ہونے والی تباہی کو مدنظر رکھتے ہوئے اب وہاں کے حالات بہتر کیسے بنائے جائیں اس پر غور وخوض کیا گیا۔

    • Share this:
    کوکن خطے میں سیلاب کے بعد ہونے والی تباہی کو مد نظر رکھتے ہوئے آج ممبئی کے حج ہاؤس میں منعقد آن لائن میٹنگ میں 40 سے زائد غیر سرکاری تنظیوں کے سربراہان کی شمولیت رہی۔ اس میٹنگ کوکن خطے میں ہونے والی تباہی کو مدنظر رکھتے ہوئے اب وہاں کے حالات بہتر کیسے بنائے جائیں اس پر غور وخوض کیا گیا۔

    مفتی اشفاق قاضی چیف قاضی جامع مسجد ممبئی دارالافتا نے کہا کہ کوکن میں متعد جماعتیں اور متعد تنظیمیں اپنے اپنے طریقے سے سیلاب متاثرین کی مدد کر رہے ہیں۔ ہمارا مقصد یہی ہے کہ ممبئی سمیت پورے مہارشٹر میں یہ تنظیمیں ایک ساتھ مل کرکوکن خطے میں سیلاب زده علاقوں میں کام کریں۔ ہر ایک تنظیم ایک پلیٹ فارم پر ایک ساتھ ہوں تاکہ مدد کے مشن کو ایک تحریک اور ایک کارواں کی شکل میں آگے بڑھایا جائے۔

    اس میٹنگ کو زوم کے مدد سے آن لائن رکھا گیا تاکہ دور دراز علاقوں کی تنظیمیں اس میٹنگ میں شامل نہیں ہو پائیں تو اس میٹنگ کے اغراض اور مقاصد ان تک پہنچ سکیں۔ مفتی اشفاق قاضی نے اس مدد کو مواخات کے نظریے سے دیکھنے اور اسے عملی جامہ پہنانے پر زور دیا چونکہ کوکن میں سیلاب سے آنے والی تباہی نے سب کچھ ختم کر دیا مالی اور معاشی اعتبار سے سیلاب کی زد میں آنے والے علاقے اب صفر ہیں۔

    ایسے لمحوں میں ان علاقوں کو پھر سے آباد کرنے اور ان کی زندگی بہتر بنانے کی ذمہ داری صرف حکومت کی ہی نہیں ہے بلکہ ہر صاحبِ حیثیت کی ہے جو مشکل اور نازک حالات کی نزاکت کو سمجھتے ہوئے اس کارِ خیر میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں تاکہ یہ علاقہ اور یہاں کی عوام زندگی پھر سے پہلے کے جیسے ہو جائے۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: