ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

ناندیڑ بلدیہ میں اپوزیشن ختم ہونے کے بعد اب کانگریس کو باہر سے گھیرنے کی تیاری

انتخابات میں کانگریس پارٹی کو ملنے والی یکطرفہ کامیابی نے اپوزیشن کے وجود کو ختم کردیا ہے ۔81 سیٹوں کے لئے ہوئے انتخابات میں 73 سیٹوں پر کانگریس پارٹی نے قبضہ کرلیا ہے ۔

  • ETV
  • Last Updated: Oct 19, 2017 02:17 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ناندیڑ بلدیہ میں اپوزیشن ختم ہونے کے بعد اب کانگریس کو باہر سے گھیرنے کی تیاری
انتخابات میں کانگریس پارٹی کو ملنے والی یکطرفہ کامیابی نے اپوزیشن کے وجود کو ختم کردیا ہے ۔81 سیٹوں کے لئے ہوئے انتخابات میں 73 سیٹوں پر کانگریس پارٹی نے قبضہ کرلیا ہے ۔

ناندیڑ : انتخابات میں کانگریس پارٹی کو ملنے والی یکطرفہ کامیابی نے اپوزیشن کے وجود کو ختم کردیا ہے ۔81 سیٹوں کے لئے ہوئے انتخابات میں 73 سیٹوں پر کانگریس پارٹی نے قبضہ کرلیا ہے ۔ بی جے پی 6 شیوسینا ایک اور ایک آزاد امیدوار کامیاب ہوئے ہیں ۔ یکطرفہ کامیابی نے اپوزیشن کے وجود کو ختم کردیا ہے ۔ایسے میں شہر کی ترقی کے لئے اپوزیشن کے رول کو منوانے کے لئے ہاؤس کے باہر ہی ایک مضبوط کمیٹی بنانے پرغور کیا جا رہا ہے ۔ اس سلسلہ میں سماجی کارکن محمد سکندر مولانا نے پہل کرتے ہوئے انور گارڈن میں ایک میٹنگ کی ۔

میٹنگ میں ایسے نمائندوں کو مدعو کیا گیا تھا جو مختلف سیاسی جماعتوں اور آزاد امیدواروں کی حیثیت سے انتخابات میں حصہ لئے تھے ۔ تاہم انہیں شکست کا سامنا کرنا پڑا ۔ میٹنگ میں عزیز قریشی ، دلت لیڈرسریش گائیکواڑ، ایم آئی ایم کےاطہر سنار، این سی پی کے فیروز لالہ، انورجاوید سابقہ نمائندہ کارپوریٹر سید فصیح ، محمد رفیق باغبان، سینئر سماجی شخصیت محمد صمد سیٹھ اور دیگر افراد شریک رہے۔

میٹنگ میں انتخابات کے دوران پیش آنے والے مختلف واقعات کا ذکر کیا گیا ۔ بیشتر افراد نے الزام لگایا کہ یہ انتخابات کانگریس پارٹی نے اپنی خوبیوں اور ایماندارانہ کوششوں نے نہیں بلکہ پیسوں کے دم پر جیتا ہے ۔ کانگریسی امیدواروں نے کھلے عام رائے دہندگان میں پیسے بانٹے اور پولیس تماشائی بنی دیکھتی رہی ۔

First published: Oct 19, 2017 02:17 PM IST