ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

مہاراشٹر : چندر پور میں کورونا ہوا بے قابو ، اسپتالوں میں بستر کی قلت ، مریضوں کو ایمبو لنس میں لے کردر بہ در بھٹکنے پر لوگ مجبور

گزشتہ دو دنوں سے ایک مریض کے اہل خانہ اسے ایمبولینس میں لے کر در بدر بھٹکنے پر مجبور ہیں ۔ نہ تو اسے کووڈ اسپتال میں بستر دستیاب ہو پا رہا ہے اور نہ ہی وہ مریض کو دوبارہ گھر لے جاسکتے ہیں ۔

  • Share this:
مہاراشٹر : چندر پور میں کورونا ہوا بے قابو ، اسپتالوں میں بستر کی قلت ، مریضوں کو ایمبو لنس میں لے کردر بہ در بھٹکنے پر لوگ مجبور
مہاراشٹر : چندر پور میں کورونا ہوا بے قابو ، اسپتالوں میں بستر کی قلت ، مریضوں کو ایمبو لنس میں لے کردر بہ در بھٹکنے پر لوگ مجبور

مہاراشٹر : مہاراشٹر کے چندر پور میں کورونا کے معاملات کنٹرول سے باہر ہوتے جا رہے ہیں ۔ ضلع میں طبی نظام بری طرح متاثر ہوا ہے ۔ اسپتالوں میں بستر کی عدم دستیابی کے سبب اہل خانہ مریضوں کو ایمبولینس میں لئے در بدر بھٹکنے پر مجبور ہیں ۔ چند پور کے آس پاس کے اضلاع کے تمام نجی اور سرکاری اسپتالوں میں بیڈ پوری طرح سے بھرے ہوئے ہیں ۔ چندر پور ضلع کے اسپتالوں میں بیڈ کی عدم دستیابی کے سبب لوگوں کو پڑوسی ریاست تلنگانہ میں بیڈ کی تلاش میں دوڑ بھاگ کرنی پڑ رہی ہے،  باوجود اس کے لوگوں کو اسپتالوں میں بستر نہیں مل رہے ہیں۔


اتنا ہی نہیں گزشتہ دو دنوں سے ایک مریض کے اہل خانہ اسے ایمبولینس میں لے کر در بدر بھٹکنے پر مجبور ہیں ۔ نہ تو اسے کووڈ اسپتال میں بستر دستیاب ہو پا رہا ہے اور نہ ہی وہ مریض کو دوبارہ گھر لے جاسکتے ہیں ۔ لہذا ایسی صورتحال میں 41 سالہ نر شیٹیوار کورونا سے متاثر ہونے کے بعد بھی اسپتال کے باہر کھڑی ایمبولینس میں آکسیجن لگائے زندگی اور موت کی جنگ لڑ رہے ہیں ۔


چندر پور کے ضلع اسپتال کے سامنے کھڑی ایمبولینس میں پڑے مریض کا علاج نہیں ہو پا رہا ہے کیوں کہ وہاں وینٹی لیٹر کا بیڈ موجود نہیں ہے۔  سوال یہ ہے کہ کیا پڑوسی ریاست تلنگانہ کے اسپتالوں میں بھی بستر خالی نہیں ہیں۔  بتایا جارہا ہے کہ مریضوں کے اہل خانہ ایمبولینس میں مریض کو لے کر دو دو دنوں تک مختلف اسپتالوں میں بیڈ کی تلاش میں گھوم رہے ہیں ۔ اسی دوران جب مذکورہ مریض کی ایمبولینس کا آکسیجن سلنڈر بھی ختم ہو گیا تو اس مریض کے بیٹے نے اپنے والد کو خود ایمبولینس سے نکال کر اسپتال کے بستر پر لٹا دیا۔


مذکورہ مریض کے بیٹے ساگر نے نیوز 18 کو بتایا کہ وہ اپنے والد کو گزشتہ دو دنوں سے ایمبولینس میں لے کر چندر پور ضلع کے مختلف سرکاری و نجی اسپتالوں کے چکر کاٹ رہا ہے ۔ اسپتال میں بیڈ نہ ملنے کے سبب اس نے پڑوسی ریاست تلنگانہ کے مانچیریال تک کا سفر کیا ، مگر وہاں بھی انہیں اسپتال میں کوئی بستر نہیں ملا ۔ چنانچہ بے بس ہو کر اس نے ایمبولینس واپس چندر پور کے کووڈ اسپتال کے سامنے کھڑی کرکے انتظامیہ سے مدد کی درخواست کی ہے ۔

واضح رہے کہ ضلع میں کورونا کے مریضوں میں ریکارڈ توڑ اضافہ ہو رہا ہے۔ ایک ہزار سے زائد نئے کورونا کے معاملات سامنے آرہے ہیں۔ آج ضلع میں فعال مریضوں کی تعداد سات ہزار تک پہنچ چکی ہے ۔ کورونا سے اب تک ضلع میں 514 افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں۔  کورونا کے بڑھتے معاملوں کی وجہ سے انتظامیہ بھی بے بس نظر آرہی ہے۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Apr 15, 2021 05:06 PM IST