உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    شیوسینا کی مخالفت کے باوجود ہم نے مراٹھی اسکولوں میں اردو اساتذہ کی تعیناتی کی: كھڑسے‎

    نئی دہلی۔ مہاراشٹر حکومت میں وزیر برائے اقلیتی امورایکناتھ كھڑسے کا کہنا ہے کہ ان کی حکومت اقلیتوں کو آگے بڑھانے کے لئے کام کر رہی ہے۔

    نئی دہلی۔ مہاراشٹر حکومت میں وزیر برائے اقلیتی امورایکناتھ كھڑسے کا کہنا ہے کہ ان کی حکومت اقلیتوں کو آگے بڑھانے کے لئے کام کر رہی ہے۔

    نئی دہلی۔ مہاراشٹر حکومت میں وزیر برائے اقلیتی امورایکناتھ كھڑسے کا کہنا ہے کہ ان کی حکومت اقلیتوں کو آگے بڑھانے کے لئے کام کر رہی ہے۔

    • ETV
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی۔ مہاراشٹر حکومت میں وزیر برائے اقلیتی امورایکناتھ كھڑسے کا کہنا ہے کہ ان کی حکومت اقلیتوں کو آگے بڑھانے کے لئے کام کر رہی ہے۔  ای ٹی وی اردو سے خاص ملاقات میں انہوں نے کہا کہ ان کا سب سے زیادہ دھیان تعلیم کو لے کر ہے کیونکہ تعلیم کے دم پر ہی اقلیتوں کو آگے بڑھایا جا سکتا ہے۔ مہاراشٹر حکومت کا دعوی ہے کہ وہ اقلیتوں کو آگے بڑھانے کے لئے تمام کوششیں کر رہی ہے۔  خاص طور پر حکومت اقلیتوں میں تعلیم کا فیصد  بڑھانا چاہتی ہے۔عوام کا کہنا ہے کہ  وعدوں اور دعووں کا دور پہلے بھی چلتا رہا ہے اور ابھی چل رہا ہے۔ لیکن اب امید کی جانی چاہئے کہ کام ہوگا اور مہاراشٹر حکومت سنجیدگی کے ساتھ اقلیتوں کے لئے کام کرے گی ۔


      ای ٹی وی  کے ایڈیٹر خورشید ربانی کے  ساتھ خاص ملاقات کے دوران ایکناتھ كھڑسے نے کہا کہ انہوں نے خود وزیر اعلی سے کہہ کر یہ وزارت لی ہے تاکہ زیادہ سے زیادہ کام کر سکیں۔ كھڑسے نے مہاراشٹر کے مسلمانوں میں تعلیم کی کمی کو لے کر فکر ظاہر کی اور کہا کہ ان کی کوشش رہے گی کہ مدرسے ہوں یا پھراسکول، زیادہ سے زیادہ اقلیتوں میں تعلیم کو لے کر کام کریں  گے ۔اقلیتوں کے لئے بڑھے ہوئے بجٹ کا ذکر کرتے ہوئے كھڑسے نے کہا کہ شوسینا کی مخالفت کے باوجود  بھی ان کی حکومت مراٹھی اسکولوں میں اردو ٹیچرس دے رہی ہے۔ وہیں اقلیتی طالبات کو آگے بڑھانے کے لئے بھی وہ تقریبا 40 لڑکیوں کے لیے ہاسٹل کھولنے کی تیاری کر رہے ہیں۔


      كھڑسے نے اس بات کو بھی دوہرایا کہ بھارت ماتا کی جئے بولنے میں کسی کو بھی اعتراض نہیں ہونا چاہئے۔

      First published: