உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مہاراشٹر : چھ مہینے میں نابالغ کی 400 لوگوں نے کی آبروریزی ، ملزمین میں پولیس اہلکار بھی شامل ، حاملہ ہوئی متاثرہ

    مہاراشٹر : چھ مہینے میں نابالغ کی 400 لوگوں نے کی آبروریزی ، ملزمین میں پولیس اہلکار بھی شامل ، حاملہ ہوئی متاثرہ

    مہاراشٹر : چھ مہینے میں نابالغ کی 400 لوگوں نے کی آبروریزی ، ملزمین میں پولیس اہلکار بھی شامل ، حاملہ ہوئی متاثرہ

    Maharashtra Minor girl Rape News: ملک میں خواتین اور بیٹیوں کی آبروریزی اور ان کے جنسی استحصال کے واقعات کم ہونے کا نام نہیں لے رہے ہیں ، لیکن مہاراشٹر سے سامنے آیا ایک واقعہ کافی حیران اور پریشان کرنے والا ہے ۔

    • Share this:
      اورنگ آباد : ملک میں خواتین اور بیٹیوں کی آبروریزی اور ان کے جنسی استحصال کے واقعات کم ہونے کا نام نہیں لے رہے ہیں ، لیکن مہاراشٹر سے سامنے آیا ایک واقعہ کافی حیران اور پریشان کرنے والا ہے ۔ 14 نومبر کو نیوز18 لوکمت (مراٹھی) میں شائع ایک رپورٹ کے مطابق مہاراشٹر کے بیڑ ضلع میں ایک نابالغ لڑکی کے ساتھ مبینہ طور پر چھ مہینے کے دوران 400 الگ الگ لوگوں نے آبروریزی کی ۔ ان میں ایک پولیس اہلکار بھی شامل ہے ۔ نابالغ لڑکی اب حاملہ ہوگئی ہے ۔ نابالغ کی آبروریزی کا یہ واقعہ اس وقت سامنے آیا جب ڈومبیولی میں کچھ ہفتہ پہلے 33 لڑکوں نے نابالغ لڑکی کی اجتماعی آبروریزی کی واردات کو انجام دیا تھا ۔ تھانے ضلع میں اجتماعی آبروریزی کے واقعہ کے بعد لوگوں کا غصہ پھوٹ پڑا ہے ۔

      آبروریزی کے اس نئے معاملہ میں لوکمت میں شائع رپورٹ کے مطابق متاثرہ نابالغ کی ماں کی دو سال پہلے موت ہوگئی تھی ، جس کے بعد والد نے اس کی شادی کردی تھی ۔ سسرال میں تقریبا ایک سال رہنے کے بعد وہ گھر لوٹ آئی ۔ الزام ہے کہ سسر نے بھی اس کے ساتھ زیادتی کی تھی ۔ کچھ دنوں بعد وہ نوکری کی تلاش میں انبے جوگائی ٹاون گئی ۔

      رپورٹ کے مطابق انبے جوگائی میں نوکری دلانے کا وعدہ کرکے دو لوگوں نے نابالغ لڑکی کی آبروریزی کی ۔ اس کے بعد اس کے ساتھ 100 دیگر لوگوں نے بھی اس کی آبروریزی کی ، جس میں ایک پولیس اہلکار بھی شامل رہا ۔ چھ مہینے کے اندر تقریبا 400 لوگوں نے نابالغ لڑکی کی آبروریزی کی ۔

      متاثرہ نابالغ فی الحال دو مہینے کی حاملہ ہے ۔ فی الحال اس پورے معاملہ پر متاثرہ کے بیان پر پولیس نے معاملہ درج کرکے کیس کی چھان بین شروع کردی ہے ۔ اس معاملہ میں اب تک چار لوگوں کو گرفتار کیا جاچکا ہے ۔ متاثرہ اس بچے کو جنم نہ دے پائے ، اس کلئے اسقاط حمل کی کارروائی بھی شروع ہوچکی ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: