ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

ممبئی میں متعدد مساجد کے ذریعہ کی جارہی ہے آکسیجن کی سپلائی ، اس طرح کرسکتے ہیں حاصل

غیر سرکاری تنظیم ریڈ کریسنٹ نے ممبئی کی مساجد میں آکسیجن سلینڈر کا انتظام کیا ہے ۔ تاکہ ممبئی میں مقامی سطح پر اگر کسی کو آکسیجن کی ضرورت پڑے تو وہ مفت میں آکسیجن حاصل کر سکے ۔

  • Share this:
ممبئی میں متعدد مساجد کے ذریعہ کی جارہی ہے آکسیجن کی سپلائی ، اس طرح کرسکتے ہیں حاصل
ممبئی میں متعدد مساجد کے ذریعہ کی جارہی ہے آکسیجن کی سپلائی ، اس طرح کرسکتے ہیں حاصل

ممبئی : ممبئی سمیت پورے ملک میں کورونا کا قہر جاری ہے ۔ کورونا مریضوں کو وقت پر آکسیجن نہیں مل پا رہا ہے ۔ مریضوں کے رشتہ دار در در بھٹک رہے ہیں ، لیکن کہیں آکسیجن آسانی سے دستیاب نہیں یے ۔ نہ جانے کتنے لوگوں کی آکسیجن کی کمی کے سبب موت ہو رہی ہے ۔ انتظامیہ کی تمام کوششیں کورونا قہر کے سامنے چھوٹی پڑ رہی ہیں ۔ اس ضمن میں ڈاکٹر عظیم الدین نے بتایا کہ لوگوں کی پریشانیوں کو دیکھتے ہوئے ممبئی میں ریڈ کریسنٹ سوسائٹی کے سر براہ ارشد صدیقی نے آکسیجن کمپنیوں سے معاہدہ کیا اور اپنے ادارہ کی جانب سے آکسیجن کی فراہمی شروع کی ۔


غیر سرکاری تنظیم ریڈ کریسنٹ نے ممبئی کی مساجد میں آکسیجن سلینڈر کا انتظام کیا ہے ۔ تاکہ ممبئی میں مقامی سطح پر اگر کسی کو آکسیجن کی ضرورت  پڑے تو وہ مفت میں آکسیجن حاصل کر سکے ۔ ممبئی کی متعدد مساجد نے اس کارخیر میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا ہے اور اپنی سطح پر فلاحی کاموں کو انجام دے رہی ہیں ۔ جامع مسجدِ ممبئی ، کھوکا بازار مسجد ، اندھیری نور مسجدِ ، ان مساجد میں آپ کو آکسیجن سلینڈر 24 گھنٹے دستیاب ہیں ۔ ضرورت مند افراد مریض کی ڈیٹیل دکھا کر کسی بھی وقت آکسیجن سیلنڈر لے سکتے ہیں ۔


ڈاکٹر عظیم الدین کے مطابق مسجدوں میں آکسیجن محض ایک طبقہ  یا فرقہ کے لیے  محدود نہیں ہے، بلکہ یہ ہر اُس شخص کے لئے ہے ، جو بیمار اور ضرورت مند ہے ۔ بلا تفریق مذہب وملت کام کیا جارہاہے ۔ واضح رہے کہ کورونا کے زور کو ختم کرنے کیلئے لاک ڈاؤن نافذ ہے ۔ مفاد عامہ کے تحت مساجد سمیت دوسری عبادت گاہوں کو بند کر دیا گیا ہے ۔ ملک کے دوسرے شہروں میں مساجد کو کورنٹائن سینٹر میں تبدیل کر دیا گیا ہے ۔ تاکہ لوگ صحت یاب ہوکر اپنے گھروں کو جلد واپس لوٹیں ۔


ممبئی میں مساجد کی اس پہل کے بعد ان کی یہ کوشش ہے کہ ممبئی کی ہر مسجد میں بنیادی ضرورتوں کے ساتھ ساتھ آکسیجن بینک ہو ؤنا چاہئے ۔ تاکہ ضرورت مند افراد کو اسپتال کے چکر نہ کاٹنے پڑے اور وقت پر ان کو آکسیجن مل سکے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: May 03, 2021 10:54 PM IST