ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

ہوشیار! فرضی خبر پھیلائی تو خیر نہیں ، مہاراشٹر میں صرف 5 دنوں میں اتنے لوگوں کے خلاف ہوا کیس درج

سائبر کرائم پولیس اسٹیشن کے ذرائع کے مطابق گذشتہ پانچ روز سے سوشل میڈیا پر فرقہ وارانہ بیانات کے معاملات میں اضافہ ہوا ہے ۔

  • Share this:
ہوشیار! فرضی خبر پھیلائی تو خیر نہیں ، مہاراشٹر میں صرف 5 دنوں میں اتنے لوگوں کے خلاف ہوا کیس درج
ہوشیار! فرضی خبر پھیلائی تو خیر نہیں ، مہاراشٹر میں صرف 5 دنوں میں اتنے لوگوں کے خلاف ہوا کیس درج

سوشل میڈیا پر جعلی خبروں کو پھیلانے اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کی فضا کو خراب کرنے کے خلاف مہاراشٹر پولیس نے سخت موقف اختیار کرلیا ہے ۔ ذرائع سے موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق ریاست مہاراشٹر کے مختلف علاقوں کے سائبرکرائم پولیس اسٹیشنوں میں 22 مارچ سے لاک ڈاؤن کے بعد افواہ اور جعلی خبروں کو سوشل میڈیا کے ذریعے پھیلانے کے جرم میں 20 سے زیادہ ایف آئی آر درج کی جاچکی ہیں ۔ جبکہ مہاراشٹر کے 33 اضلاع بشمول ممبئی میں 130 سے زیادہ فیک نیوز کے خلاف شکایات درج کی جاچکی ہیں۔


سائبر کرائم سیل سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق ریاست مہاراشٹر میں وہاٹس ایپ پر جعلی خبروں کو پھیلانے والے 79 افراد کے خلاف مقدمات درج کئے گئے ہیں ، جبکہ فیس بک پر 24 اور ٹوئٹر اور ٹیک ٹاک پر غلط اور جعلی خبروں کو پھیلانے والے تین تین افراد کے خلاف شکایات درج کی جاچکی ہیں ۔ یوٹیوب اور آڈیو کلپ کے ذریعہ فیک نیوز پھیلانے والے 23 افراد کے خلاف بھی پولیس نے شکایت درج کی ہے ۔


سائبر کرائم پولیس اسٹیشن کے ذرائع کے مطابق گذشتہ پانچ روز سے سوشل میڈیا پر فرقہ وارانہ بیانات کے معاملات میں اضافہ ہوا ہے ۔ پولیس نے سختی سے کام لیتے ہوئے گنہگاروں کے خلاف انڈین پینل کوڈ کی دفعہ 153 اے اور بی کے مطابق معاملات درج کئے ہیں ۔


واضح رہے کہ کورونا وائرس کا قہر چہار سو پھیلا ہوا ہے ۔ ملک میں کورونا وائرس کے معاملات میں بھی مسلسل اضافہ ہوتا جارہا ہے اوراس درمیان سوشل میڈیا پر ایک مخصوص کمیونٹی کو کورونا وائرس پھیلانے کا قصور وار بتاکر غلط خبریں پھیلائی جارہی ہیں ۔ مہاراشٹر حکومت نے بھی سوشل میڈیا پر غلط خبروں کوعام کرنے کے خلاف سخت رویے کا اظہار کیا ہے ۔ سماجی ماہرین کے مطابق فرقہ پرست طاقتیں موقع کی نزاکتوں کو نہ سمجھتے ہوئے سوشل میڈیا کے سہارے فیک نیوز کو پھیلانے کا گناہ کررہی ہیں ۔ ایسی صورت میں ان سماج دشمن عناصر پر کاروائی کرنا وقت کی اہم ترین ضرورت ہے۔
First published: Apr 10, 2020 05:07 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading