உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Maharashtra Political Crisis : سرکار سے 24 گھنٹے میں حمایت واپس اور فلور ٹیسٹ کا مطالبہ کرسکتا ہے شندے گروپ

    Maharashtra Political Crisis : سرکار سے 24 گھنٹے میں حمایت واپس اور فلور ٹیسٹ کا مطالبہ کرسکتا ہے شندے گروپ ۔ فائل فوٹو ۔

    Maharashtra Political Crisis : سرکار سے 24 گھنٹے میں حمایت واپس اور فلور ٹیسٹ کا مطالبہ کرسکتا ہے شندے گروپ ۔ فائل فوٹو ۔

    Maharashtra Political Crisis : ایکناتھ شندے کی قیادت والے گروپ نے پیر کو ایک اہم میٹنگ کی، جس میں انہوں نے اشارہ دیا کہ وہ اگلے 24 گھنٹوں کے اندر گورنر سے ملاقات کر سکتے ہیں اور مہاراشٹر سرکار سے حمایت واپس لینے کا خط پیش کر سکتے ہیں۔

    • Share this:
      ممبئی : شیوسینا کے باغی ممبران اسمبلی کو سپریم کورٹ کی عبوری راحت ملنے کے بعد ایکناتھ شندے کی قیادت والے گروپ نے پیر کو ایک اہم میٹنگ کی، جس میں انہوں نے اشارہ دیا کہ وہ اگلے 24 گھنٹوں کے اندر گورنر سے ملاقات کر سکتے ہیں اور مہاراشٹر سرکار سے حمایت واپس لینے کا خط پیش کر سکتے ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ باغی ایم ایل ایز گورنر سے ملاقات کر کے فلور ٹیسٹ کا مطالبہ بھی کر سکتے ہیں۔ شندے سمیت کچھ دوسرے لیڈروں کے ممبئی جانے کی بھی خبر آرہی ہے۔

       

      یہ بھی پڑھئے : مہاراشٹر: باغی وزرا کے خلاف CM ادھو ٹھاکرے کا بڑا ایکشن، باغیوں کا محکمہ چھین لیا


      قبل ازیں سپریم کورٹ نے مہاراشٹرا قانون ساز اسمبلی کے ڈپٹی اسپیکر کے ذریعہ جاری کردہ نااہلی نوٹس کے خلاف باغی شیوسینا ایم ایل ایز کو راحت دیتے ہوئے کہا کہ متعلقہ ایم ایل ایز کی نااہلی کا فیصلہ 11 جولائی تک نہیں کیا جانا چاہئے۔ اس کے ساتھ ہی عدالت نے نااہلی نوٹس کی قانونی حیثیت کو چیلنج کرنے والے باغی ایم ایل ایز کی درخواستوں پر جواب طلب کیا ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: مہاراشٹر سیاسی بحران: شندے گروپ نے ادھو ٹھاکرے حکومت نے سپریم کورٹ میں کیا بڑا دعویٰ


      حالانکہ سپریم کورٹ نے مہاراشٹر حکومت کی درخواست پر عبوری حکم دینے سے انکار کر دیا، جس میں اسمبلی میں فلور ٹیسٹ نہ کرائے جانے کی مانگ کی گئی تھی۔ عدالت نے کہا کہ وہ کسی بھی غیر قانونی اقدام کے خلاف اس سے رجوع کر سکتے ہیں۔ جسٹس سوریہ کانت اور جسٹس جے بی پاردی والا کی تعطیلاتی بنچ نے مہاراشٹر حکومت کو شیوسینا کے 39 باغی ایم ایل ایز اور ان کے اہل خانہ کی جان، آزادی اور املاک کی حفاظت کرنے کی بھی ہدایت دی ۔

      مہاراشٹر قانون ساز اسمبلی کے ڈپٹی اسپیکر کو نوٹس جاری کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے انہیں ہدایت کی کہ وہ باغی ایم ایل ایز کے ذریعہ دئے گئے عدم اعتماد کی تحریک کے نوٹس کو حلف نامہ ریکارڈ پر رکھیں۔ سپریم کورٹ نے مہاراشٹر حکومت کی طرف سے پیش ہونے والے وکیل کے بیان کو بھی ریکارڈ پر لیا کہ باغی ایم ایل ایز کے جان و مال کے تحفظ کے لئے خاطر خواہ اقدامات کئے گئے ہیں۔ کیس کی اگلی سماعت 11 جولائی کو ہوگی ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: